Chitral Times

Oct 23, 2020

ﺗﻔﺼﻴﻼﺕ

یوتھ پالیسی سمیت جواں مرکز، انٹرپرینیورشپ اور دیگر پروگرامزکو صوبہ کی تمام ڈسٹرکٹ تک پہنچایا جائیگا، وزیر اعلیٰ

شیئر کریں:

پشاور(چترال ٹائمز رپورٹ ) وزیراعلیٰ خیبرپختونخوا پرویز خٹک نے کہاہے کہ ایک جامعہ منصوبہ بندی اور سسٹم لانے سے 70سالہ پرانے گلے سڑے نظام کو تبدیل کرکے صوبہ کی ترقی ممکن بنانے کیلئے حکمت عملی واضع کردی گئی ہے ، انہوں نے کہاکہ صوبہ میں سی پیک کے ثمرات 10سال کے بعد آنا شروع ہوجائینگے کیونکہ خیبرپختونخوا سی پیک میں ایک بہت واضح مقام رکھتا ہے اور اس کے بننے سے انڈسٹری کا ایک جال صوبہ میں بچھ جائے گاکیونکہ خیبرپختونخوا گوادر سے نزدیک ترین ہونے کی وجہ سے اس کی حیثیت نمایاں ہو گئی ہے ، انہوں نے نوجوانوں پر زور دیا کہ آنے والے ممکنہ چیلنج کیلئے اپنے آپ کو تیار کریں کیونکہ سی پیک کے بننے سے روزگار کے بے شمار مواقع میسر آئینگے، خیبرپختونخواخوش قسمت صوبہ ہے جس کے نوجوان ذہانت اور جسمانی طور پر توانہ ہیں، صوبائی حکومت نے تعلیم ، صحت اور دیگر شعبوں میں ریفامزکرکے تبدیلی لائے ہیں، پاکستان خوش قسمت ملک ہے جس کی آبادی 60فیصد نوجوانوں پر مشتمل ہے ، ملک بھر سے یوتھ کارنیوال میں نوجوانوں کی شرکت اور بہترین کارنیوال کے انعقاد پر خراج تحسین پیش کرتا ہوں ، ان خیالات کا اظہار انہوں نے گزشتہ روز نیشنل یوتھ کارنیوال 2017کی اختتامی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کیا، ا س موقع پر ان کے ہمراہ صوبائی وزیر کھیل و امورنوجوانان محمود خان، وزیراعلیٰ کے خصوصی مشیر اورپارلیمانی امور عارف یوسف، سیکرٹری محکمہ کھیل ، ثقافت و امورنوجوانان محمد طارق، ڈپٹی سیکرٹری بابر خان، ڈائریکٹر یوتھ اسفندیار خٹک،ڈائریکٹر جنرل سپورٹس جنید خان، منیجنگ ڈائریکٹر ٹورازم کارپوریشن مشتاق احمد خان،ڈائریکٹر آرکیالوجی ڈاکٹر عبدالصمد ،لیزان کے سی ای او محمد عثمان اور دیگر اہم شخصیات موجود تھیں، وزیراعلیٰ خیبرپختونخوا پرویز خٹک نے تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہاکہ پاکستان میں اس سے قبل کسی نے یوتھ پالیسی نہیں بنائی تھی خیبرپختونخوا حکومت نے ملک میں سب سے قبل یوتھ پالیسی بنائی اور صوبہ کے نوجوانوں کیلئے یوتھ ڈویلپمنٹ کمیشن بھی بنایا گیا،صوبہ میں ہمیں سکولوں، ہسپتالوں ، پولیس کا ٹوٹہ ہوا نظام اوررشوت سے بھرا صوبہ ملا مگر مشکل سے ریفارمز لیکر آئے ہیں ، لوگ سمجھتے ہیں کہ ایک اشارے پر کام ہوجاتا ہے مگر ارادے اچھے ہوں تو اللہ مدد کرتا ہے ، سی پیک سے صوبہ اگلے دس سالوں میں انڈسٹریل سٹیٹ میں تبدیل ہوجائیگا، گوادر سے خیبرپختونخوا سب سے زیادہ قریب ہے جس کا زیادہ فائدہ صوبہ کو ہوگا، صوبہ پر کبھی بھی سمجھوتہ نہیں کرینگے، پاکستان تحریک انصاف کی صوبائی حکومت نے صوبہ کے نوجوانوں کیلئے یوتھ پالیسی سمیت جواں مرکز، انٹرپرینیور شپ اور دیگر پروگرامز تشکیل دیئے ہیں ان تمام پروگرامزکو صوبہ کی تمام ڈسٹرکٹ تک یقینی بنایا جائیگاجبکہ یوتھ ڈیپارٹمنٹ کیلئے نوجوانوں کیلئے 1ارب روپے گزشتہ سال دیئے اور اگلے سال بھی 1ارب روپے جاری کئے جائینگے، اس موقع پر انہوں نے یوتھ ڈویلپمنٹ پروگرام کیلئے ڈھائی کروڑ روپے سے بڑھا کر پانچ کروڑ روپے کرنا کا بھی اعلان کیا،اختتامی تقریب سے قبل وزیراعلیٰ خیبرپختونخوا نے پشاور سپورٹس کمپلیکس میں جواں مرکز کے دفتر کا افتتاح بھی کیا ، جواں مرکز میں نوجوانوں کیلئے یوتھ ایجوکیشن، انٹرٹینمنٹ، کیریئر بلڈنگ اور دیگر پروگرام یوتھ ہونگے جبکہ جواں مرکز نوجوانوں کیلئے مختلف سرگرمیوں کا انعقاد بھی کرے گا،نیشنل یوتھ کارنیوال میں پنجاب یونیورسٹی لاہور نے 11 گولڈ اور چار سلور میڈلز کے ساتھ ٹرافی جیت لی، قائداعظم یونیورسٹی اسلام آباد نے ایک گولڈ اور چار سلو میڈلز کے ساتھ دوسری پوزیشن حاصل کی جبکہ خوشحال خان خٹک یونیورسٹی کرک کو خصوصی ایوارڈ سے نوازا گیا۔


شیئر کریں: