Chitral Times

18th November 2017

ﺗﻔﺼﻴﻼﺕ

  • وزیر اعلیٰ پرویز خٹک کا چترال کو دو ضلعوں میں تقسیم کرنے کا اعلان، نوٹفیکیشن جلد بھیج دونگا۔..۔پرویز خٹک

    November 8, 2017 at 5:53 pm

    چترال (نمائندہ چترال ٹائمز ) وزیر اعلیٰ خیبر پختونخوا پرویز خٹک نے کہا ہے کہ سائیکل لے کر سیاست میں آنے والے لینڈ کروزروں میں پھر رہے ہیں جوکہ اس ملک میں کرپٹ سیاسی نظام کا عکاس ہے جہاں چوروں اور لٹیروں کے ٹولے نے آزادی اور دیدہ دلیری سے ملک کو لوٹتے رہے ہیں اور یہ عمران خان نے جس نے ان چوروں اور لیٹروں کو پہلی مرتبہ للکارا ہے اور آنے والے الیکشن میں پختونخوا کے عوام نے عمران خان کا بھرپور ساتھ دینا ہے کیونکہ اس صوبے کے عوام نے تبدیلی کو خود محسوس کررہے ہیں جوکہ زندگی کے ہر شعبے میں نمایاں ہے ۔ بدھ کے روز چترال پولوگراؤنڈ میں بہت بڑے جلسے سے خطاب کرتے ہوئے انہوں نے تالیوں کی گونج میں ضلع چترال کو دو اضلاع میں تقسیم کرکے اپر چترال کو الگ ضلع کا درجہ دینے اور بونی کو اس کا ہیڈ کوارٹرز بنانے کا اعلان کیا اور کہاکہ 70سالوں سے عوام کا یہ دیرینہ مطالبہ پی ٹی آئی حکومت نے پورا کردیا ۔ وزیر اعلی نے نے کہا ۔ کہ پاکستان تحریک انصاف کی حکومت قائد عمران خان کی قیادت میں چترال کے مسائل پر بھر پور توجہ دی ہے ۔ چائنا میں سی پیک کا منصوبہ منظور ہو چکا ہے ۔ چترال میں 1400میگاواٹ کے بجلی کے منصوبے جاری ہیں جو ایف ڈبلیو او اور چائنیز انجینئرز کے ذریعے مکمل ہوں گے ۔ انہوں نے کہا ، کہ ہم نے ریسکیو 1122کی منظوری دی ، جوڈیشل کمپلیکس تعمیر کرایا ۔ یونیورسٹی کی منظوری دی اور چترال کی تزئن و آرائش کیلئے 55کروڑ روپے دیے ۔ زلزلے اور سیلاب میں بھاری فنڈ متاثرین میں تقسیم کئے ۔ اور نوجوانوں کیلئے دروش چترال میں پلے گراؤنڈ تعمیر کئے جارہے ہیں ۔ وزیر اعلی نے چترال میں ایک اور پلے گراؤنڈ اور پارک کی تعمیر کا اعلان کیا ۔ وزیر اعلی نے تحریک انصاف کے صدر عمران خان کو مخاطب کرتے ہوئے کہا ۔ کہ ملک اور چترال کے نوجوانوں کی آپ کے ساتھ جذباتی محبت چوروں اور ڈاکووں کے خلاف آپ کے جہاد کا نتیجہ ہے ۔ اللہ پاک نے آپ کو ہمت دی ہے ۔ آج ملک کو لوٹنے والے یہ سوال کر رہے ہیں ۔ کہ مجھے کیوں نکالا گیا ۔ انہوں نے کہا ۔ کہ کرپٹ لوگوں حکمرانوں نے تعلیم صحت ، پولیس اور تمام اداروں کو تباہ کیا ۔ وزیر اعلی نے کہا ۔ کہ اس ملک میں غریب عوام کے ساتھ جو ظلم اور جبر ہو چکا ہے ۔ وہ نقابل بیان ہے ۔ سکولوں ہسپتالوں میں عوام کو ئی سہولتیں دستیاب نہیں تھی ۔ ہم نے نہ صرف سہولتیں دیں ، اساتذہ کی ،عمارتوں کی کمی پوری کی ۔ بلکہ نصاب میں قرآن کو شامل کرکے بچوں کیلئے دین و قرآن سیکھنے کا راستہ ہموار کیا ۔ انہوں نے کہا ۔ کہ غریبوں کے بچے جب تعلیم میں امیروں کے بچوں کو پیچھے چھوڑ جائیں گے ۔ تو انقلاب آئے گا ۔ انہوں نے کہا ۔ ہم نے غریبوں کے علاج کیلئے 14لاکھ صحت کارڈ تقسیم کئے ہیں جبکہ مزید 10لاکھ کارڈ تقسیم کریں گے ۔ انہوں نے کہا ۔ کہ پولیس کو ہم نے سیاست سے آزاد کر دیا ہے اب یہ لوگ آپ کی خدمت کر رہے ہیں ۔ انہوں نے کہا ۔ کہ بلین ٹری سونامی منصوبہ ماحول کو درست کرنے کی طرف اہم قدم ہے ۔ اس پہلے ظالموں نے جنگلات بیچ کر کھایا ۔ جس کی وجہ سے گلیشئر اب تباہی کے دھانے پر ہیں ۔ ہم نے دوبارہ جنگلات سے صوبے کو آباد کرنے کی کوشش کی ہے ۔ اور ہمیں کامیابی ملی ہے ۔ پرویز خٹک نے کہا ۔ کہ دُنیا میں جتنی بھی تبدیلی آئی ۔ وہ نظام کی تبدیلی سے آئی ہے ۔ لیکن ہمارے ملک کے حکمرانوں نے اس ملک کے ساتھ بہت ظلم کیا ۔ جو سائیکل لے کر آئے وہ لینڈ کروزر لے کر چلے گئے ۔ انہوں نے عوام کو مخاطب کرتے ہوئے کہا ۔ اس ملک میں چور اور ڈاکو حکومت کریں گے ۔ تو آپ کھبی خوشحال نہیں ہوں گے ۔انہوں نے کہا ۔ کہ آیندہ الیکشن میں ڈاکو اور لٹیرے دوبارہ نجومی بن کر ووٹ کیلئے آپ کے پا س آئیں گے ۔ اس لئے آن کے خلاف متحد ہونے کی ضرورت ہے ۔ اس موقع پر پی ٹی آئی کے مقامی قائدیں ایم پی اے بی بی فوزیہ ، رحمت غازی اور عبداللطیف نے خطاب کرتے ہوئے پارٹی قائد کو یقین دلایا کہ اگلے سال منعقد ہونے والے الیکشن میں چترال کے عوام ان کے بھر پور ساتھ دیں گے اور انہوں نے موجودہ حکومت کی خدمات پر روشنی ڈالی۔

    وزیر اعلیٰ خیبر پختونخوا پرویز خٹک نے چترال کے عوام کے دیرینہ مطالبہ اور عوام کی انتظامی ضروریات کو مد نظر رکھتے ہوئے چترال میں نئے ضلع اپر چترال کے قیام کا اعلان کیا ۔انہوں نے نئے ضلع کی تشکیل کے حوالے سے پروپیگنڈے کو مسترد کرتے ہوئے واضح کیا کہ وہ زبانی کلامی اعلانات نہیں کرتے بلکہ کنکریٹ فیصلہ کرکے اس کا اعلان کرتے ہیں اور پھر عمل کرکے دکھاتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ عوام خصوصاً نوجوانوں میں بڑھتا ہوا جوش و خروش عمران خان کی چوروں کے خلاف بھرپور جدوجہد کا نتیجہ ہے عوام کا جوش و خروش دکھاتا ہے کہ پی ٹی آئی آ نہیں رہی بلکہ آ چکی ہے۔گذشتہ کئی دہائیوں سے چوروں کا ٹولہ اس ملک پر مل جل کے حکمرانی کرتا رہا عمران خان کے علاوہ کسی کو جرات نہیں ہوئی کہ چوروں کو للکارسکے ۔ انہوں نے کہا کہ لوٹ مار کرپشن ، اقرباء پروری ملک میں برائیوں کی جڑ ہے اسکے ہوتے ہوئے ملک میں غریب کو انصاف دینا اداروں کو ٹھیک کرنا اور خوشحالی لانا خام خیالی ہے۔اس ملک میں غریب کے ساتھ جو ظلم ہوا وہ دنیا میں کسی کے ساتھ نہیں ہوا ہم نے بہت حکومتیں دیکھیں الیکشن سے پہلے جس منشور کا اعلان کرتیں الیکشن کے بعد منشور کو ڈھونڈنا شروع کر دیتے جو منشور ڈاکوؤں کے پیٹ میں چلا جاتا تھا ہم واحد جماعت ہیں جس نے اپنے منشور پر عمل کیا جن چور اور بدعنوان حکمرانوں نے قومی اداروں کو تباہ کیا وہ کل پھر عوام میں ہوں گے عوام ان سیاسی نجومیوں اور انکے رنگ برنگ ڈراموں سے بیدار رہیں انکی تاریخ ضرور دیکھیں جو سائیکل پے آتے ہیں اور لوٹ مار کرکے لینڈ کروزر میں نکل جاتے ہیں موجودہ صوبائی حکومت کے گذشتہ چار سالوں کا سابقہ حکومتوں سے موازنہ کریں تو فرق نظر آئے گا ہم نے عام آدمی کی فلاح کیلئے نظام کو ٹھیک کیا اور اداروں کو خدمات کی فراہمی پر لگایا یہی اصل تبدیلی ہے ہم نے پاکستان کو بھی اسی سٹینڈر پر لے کے جانا ہے۔
    اجتماع سے تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان اور دیگر رہنماؤں نے بھی خطاب کیا جبکہ تحریک انصاف کے مرکزی جنرل سیکرٹری جہانگیر ترین صوبائی وزیر محمود خان کے علاوہ اراکین قومی و صوبائی اسمبلی ، منتخب عوامی نمائندوں ، علاقے کی معروف سماجی اور سیاسی شخصیات اور ضلعی انتظامیہ کے اعلیٰ حکام نے شرکت کی۔ وزیر اعلیٰ نے کہا کہ عمران خان نے جس طرح بد عنوان اشرافیہ کا مقابلہ کیا اور غریب عوام کو ان سے نجات دلانے کیلئے دن رات کوشش کی یہ انکی مخلص قیادت کا عکاس ہے جس پر انہیں ضرور صلہ ملے گاہم عمران خان کی قیادت میں دکھائیں گے کہ نیا پاکستان کیسے بنتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ جس ملک کا وزیر اعظم چوری میں پکڑا جائے اور صد ر (زرداری) بھی چور گذرا ہو وہ عوام کیسے ترقی کر سکتے ہیں اگر ہم نے پاکستان کو حقیقی معنوں میں ترقی کی راہ پر گامزن کرنا ہے تو بد عنوان نظام کے خلاف اٹھ کھڑا ہونا ہو گاوزیر اعلیٰ نے حیرت کا اظہار کیا کہ سیاسی مجرم کون سی شکل لے کر دوبارہ عوام کے سامنے آئیں گے جنہوں نے اپنے مفادات کی خاطر عوامی خدمات کے اداروں کو تباہ کیا خیبر پختونخوا میں تبدیلی کے ایجنڈا کے تحت اصلاحات کا حوالہ دیتے ہوئے وزیر اعلیٰ نے کہا کہ جب وہ حکومت میں آئے تو سرکاری سکول تباہ حال تھے موجودہ حکومت نے سکولوں میں اساتذہ کی حاضری یقینی بنائی ، معیار بلند کیا 70سال سے ناپید سہولیات دیں اور سب سے بڑھ کر پرائمری کی سطح پر انگلش میڈیم شروع کیا تاکہ غریب کا بچہ بھی امیر سے مقابلے کیلئے تیار ہو سکے وزیر اعلیٰ نے کہا کہ یہاں ایم ایم اے نے بھی حکومت بنائی مگر عملی طور پر اسلام کیلئے کچھ نہ کیا ہماری حکومت نے سرکاری سکولوں میں ناظرہ قرآن اور ترجمہ قرآن کو نصاب کا لازمی حصہ بنا دیا وزیر اعلیٰ نے کہا کہ انکی حکومت نے عوام کو علاج معالجے کی بہتر سہولیات دینے کیلئے ہسپتالوں میں ڈاکٹرز سمیت جملہ سٹاف اور آلات کی فراہمی یقینی بنائی مہنگی بیماریوں کے علاج کے لئے صحت انصاف کارڈ کا اجراء کیا 14لاکھ کارڈ پہلے ہی تقسیم ہو چکے ہیں جبکہ مزید دس لاکھ کارڈ تقسیم کر رہے ہیں یکم دسمبر سے کارڈز کی تقسیم کا سلسلہ شروع ہو جائے گا صوبائی حکومت نے پولیس کو سیاستدانوں کی غلامی سے نجات دلا کر حقیقی معنوں میں ایک فورس بنا دیا جو عوام کی خدمت کرنے لگی ہے وزیر اعلیٰ نے ضلع چترال میں ترقیاتی اور اصلاحاتی اقدامات کا حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ عوام کے مطالبے پر دروش کو تحصیل کا درجہ دے دیا گیا ہے جس کا اعلامیہ بھی جاری ہو چکا ہے جبکہ نئے ضلع اپر چترال کا اعلامیہ بھی چند دنوں میں جاری ہو جائے گا گلگت تا چترال روٹ کے ذریعے چترال کو سی پیک کا حصہ بنا دیا گیا ہے صوبائی حکومت چترال میں 1400میگاواٹ کے حامل بجلی کے منصوبوں پر کام کر رہی ہے انہوں نے واضح کیا کہ چترال میں ٹرانسمیشن لائن بچھانے کا مسئلہ درپیش تھا صوبائی حکومت نے اس سلسلے میں ایف ڈبلیو او سے معاہدہ کر لیا ہے جو یہ ٹرانسمیشن لائن بچھائے گی علاوہ ازیں ایف ڈبلیو او 600میگا واٹ کے حامل بجلی کے تین منصوبوں پر بھی معاہدہ کر چکی ہے 1200میگاواٹ کے منصوبے چین کی کمپنیوں کے ذریعے تعمیر کئے جائیں گے جو چترال کے روشن مستقبل کی نوید ہے ۔وزیر اعلیٰ نے انکشاف کیا کہ چترال میں دو ماہ کے اندر رسکیو سروس 1122 کا عملی طور پر اجراء ہو جائے گا صوبائی حکومت نے سیلاب سے متاثرہ عوام کیلئے کروڑوں روپے فراہم کرنے کے علاوہ چترال اپ لفٹ کے لئے بھی 55کروڑ روپے دیئے ہیں ریشون ہائیڈل منصوبے پر کام تیزی سے جاری ہے ۔2750گھروں کو سولر سسٹم فراہم کیا گیا ہے ، 55میگاواٹ کے مائیکرو ہائیڈل پراجیکٹ پر کام جاری ہے سیلاب و زلزلہ کے متاثرین کیلئے تین ارب روپے دیئے جا چکے ہیں وزیر اعلیٰ نے چترال میں ایک نئے پلے گراؤنڈ اور پارک کے قیام کا اعلان کرتے ہوئے واضح کیا کہ دروش اور بونی میں دو تحصیل گراؤنڈ پہلے ہی تعمیر ہو چکے ہیں ۔
    قبل ازیں وزیر اعلیٰ اور چیئرمین تحریک انصاف کو ڈپٹی کمشنر چترال کے دفتر میں چترال میں جاری ترقیاتی سکیموں اور دیگر امور پر بریفنگ دی گئی وزیر اعلیٰ نے سوات کی طرح چترال میں بھی ٹورزم پولیس کو تودسیع دینے کی ہدایت کی ۔ اس موقع پر سیاحوں کو زمینی راستے کے ذریعے این او سی کے مسئلے کو بھی زیر بحث لایا گیا کیونکہ یہ سیاحت کے فروغ میں رکاوٹ ہے وزیر اعلیٰ نے بتایا کہ وہ اس سلسلے میں وفاق کو تحریری طور پر آگاہ کر چکے ہیں قبل ازیں پرویز خٹک اور عمران خان نے مضر صحت پولی تھین بیگز کے خلاف ضلعی انتظامیہ کی طرف سے مہم کا افتتاح کیا پولی تھین بیگز کے متبادل کے طور پر کپڑے کے بنائے گئے بیگز مفت تقسیم کئے جا رہے ہیں انہوں نے اس اقدام کو بہترین قرار دیتے ہوئے صوبہ بھر میں شروع کرنے کے عزم کا اظہار کیا۔بعد ازاں انہوں نے چترال چیمبر آف کامرس کا بھی افتتاح کیا۔

     

  • error: Content is protected !!