Chitral Times

18th November 2017

ﺗﻔﺼﻴﻼﺕ

  • چترالی طالبہ کی خیبر ٹیچنگ ہسپتال کے ہاسٹل کی چھت سے گرنے کے واقعے کی تحقیقات شروع

    October 27, 2017 at 8:15 pm

    چترال (نمائندہ چترال ٹائمز) اکتوبر کے اوائل میں خیبر ٹیچنگ ہسپتال کے ہاسٹل کی چھت سے گرکر نرسنگ پروگرام کی چترالی طالبہ کے جان بحق ہونے کے واقعے کی تحقیقات شروع کردی گئی تاکہ اصل حقائق سے پردہ اٹھایا جاسکے کہ طالبہ کا چھت سے گرنا حادثہ تھا یاحالات سے مجبور ہوکر خود کشی کا شاخسانہ۔ ذرائع کے مطابق لاسپور سے تعلق رکھنے والی طالبہ نصرت فیل ہونے پراُن کودوبارہ خیبر ٹیچنگ ہسپتال کے ہاسٹل اورکالج میں داخلہ نہ دینے کی وجہ سے انہوں نے خوکشی کرنے پرمجبورہوئے صوبائی اسمبلی کے حلقہ پی کے 90 مستوج سے رکن اسمبلی سید سردار حسین شاہ نے جمعہ کے روز پشاور سے ٹیلی فون پر چترال ٹائمز کو بتایاکہ انہوں نے صوبائی اسمبلی کے فلور پر چترالی طالبہ نصرت کی حادثاتی موت کے بارے میں تحقیقات کرنے کا مطالبہ کیا تو اسپیکر نے ان کا مطالبہ منظور کرتے ہوئے ایک تحقیقاتی کمیٹی تشکیل دی ہے جوکہ آج ہی رات کام شروع کرے گی جس کی سربراہی ان ہی کو سونپ دی گئی ہے۔ انہوں نے کہاکہ ان کی تحریک پر اسمبلی کے فلور پر اس واقعے پر سیر حاصل بحث ہوئی کیونکہ اس خدشے کا اظہار کیا جارہا ہے کہ طالبہ حادثاتی طورپر چھت سے نہیں گری تھی بلکہ انہیں ہاسٹل اورکالج میں داخلہ دینے سے انکارکرتے ہوئے ادارے کی طرف سے ہراسان کرنے پر مبینہ طور پر خودکشی کی تھی۔
    یادر ہے کہ چترال ٹائمز کے انہی سطور پر جب طالبہ کی مبینہ طور پر چھت سے گرنے کی خبر شائع کی گئی تھی تو ساتھ یہ بھی مطالبہ کیاگیا تھا کہ اس واقعے کا نوٹس لیا جائے اور آزاد ذرائع سے تحقیقات بھی کی جائے تاکہ اصل حقائق عوام کے سامنے آسکیں۔ جبکہ بعد میں مرحوم طالبہ کا بھائی چترال ٹائمز کے آفس اکر ان تمام افراد کا شکریہ ادا کیا تھا کہ جنھوں نے ان کے بہن کی ہسپتال میں عیادت کی ۔

  • error: Content is protected !!