Chitral Times

20th November 2017

ﺗﻔﺼﻴﻼﺕ

  • قاری فیض اللہ چترالی کی طرف سے میٹرک کے پوزیشن ہولڈر ز میں نقد انعامات اور شیلڈ تقسیم،

    October 26, 2017 at 10:00 pm

    قاری فیض اللہ چترالی کی طرف سے میٹرک کے پوزیشن ہولڈر ز میں نقد انعامات اور شیلڈ تقسیم، ڈپٹی کمشنر ارشاد سدھیر مہمان خصوصی
    چترال (نمائندہ چترال ٹائمز )مدرسہ امام محمد کراچی کے مہتمم اور چترال کی معروف دینی اور سماجی شخصیت قاری فیض اللہ  چترالی کی طرف سے ضلع چترال میں میٹرک کے امتحان میں نمایان پوزیشن حاصل کرنے والے طلباء و طالبات کو نقد انعام اور شیلڈ دینے کی تقریب میں ڈپٹی کمشنر چترال ارشاد سودھر مہمان خصوصی تھے. جس میں ضلع بھر سے ماہرین تعلیم ، سیاسی وسماجی شخصیات اوراساتذہ کی کثیر تعداد شریک ہوئے۔یہ پروگرام ضلع کی سطح پر پوزیشن حاصل کرنے والے طلباء و طالبات کی حوصلہ افزائی کے لئے 2003ء سے تسلسل کے ساتھ منعقد ہوتا آرہا ہے۔

     

    اس موقع پر خطاب کرتے ہوئے ارشاد سودھر نے معیاری تعلیم کی اہمیت بیان کرتے ہوئے کہاکہ قوموں کی ترقی کے لئے یہ نقطہ آغاز ہے اور معیاری تعلیم کے منزل کے حصول کے لئے حکومت اور تعلیمی اداروں کے ساتھ سول سوسائٹی کا بھی ایک کردار متعین ہے جسے ادا کرنے کی کئی صورتیں ہیں اور طلباء وطالبات کی حوصلہ افزائی کے ایسے سلسلے ان کا حصہ ہیں جوکہ چترال میں قاری فیض اللہ نبھارہے ہیں ۔

     

    انہوں نے کہاکہ تعلیمی معیار پر کوئی سمجھوتہ نہیں کیا جاسکتا اور کوئی کوتاہی اور لغزش برداشت نہیں کی جائے گی۔ انہوں نے سابق ڈی۔ سی چترال اسامہ وڑائچ کی طرف سے چترال میں کیرئر پلاننگ اور کوچنگ کے لئے قائم کردہ ٹریننگ اکیڈیمی کو مزید فعال بنانے اور سینٹنل ماڈل سکول کے اڈیٹوریم کو جدید ڈیزائن کے مطابق تعمیر کرنے کا بھی اعلان کیا۔ انہوں نے کہاکہ چیف سیکرٹری کا چترال کے ساتھ دلی لگاؤ ہے اور انہیں چترال میں تعینات کرتے ہوئے خصوصی ہدایت دی ہے کہ ترقی کے کسی بھی سیکٹر میں ترقی کے لئے انقلابی اقدامات اٹھائے جائیں جبکہ تعلیم اور صحت کو اس مرکزی مقام حاصل ہے۔

     

    ڈپٹی ڈی۔ ای۔او (مردانہ) چترال ممتاز احمد ،اسسٹنٹ کمشنر چترال عبدالاکرم خان ، قاری فیض اللہ کی طرف سے انعامی سلسلے کا کنوینر اور شاہی مسجد کے خطیب مولانا خلیق الزمان کے علاوہ , تقریب سے معروف سکالراور صدارتی ایوارڈ یافتہ ڈاکٹر عنایت اللہ فیضی , مذہبی وسماجی شخصیت قاری جمال عبدالناصر نے بھی خطاب کیا۔

     

    پبلک سیکٹر کے سکولوں میں پہلے دو انعامات گورنمنٹ سینٹینل ماڈل سکول چترال کے طلباء نے حاصل کیں جس کا طا لب علم محمد حنیف نے پہلی اورسہیل عباس اور اشفاق الرحمن نے مساوی نمبر لے کر د وسری پوزیشن حاصل کی تھی جبکہ گورنمنٹ گرلز ہائی سکول ایون کی طالبہ مدیحہ سباکو تیسری پوزیشن کی انعام مل گئی۔

     

    پرائیویٹ سیکٹر سکولوں میں چتر ال ماڈل سکول اینڈ کالج کی طالبہ تنزیلہ غلام نے پہلی اور جی ۔ڈی لینگ لینڈ سکول کی دو طالبات آمنہ شجاع اور عنبرین مقصود نے بالترتیب دوسری اور تیسری پوزیشن حاصل کی اور کالاش کمیونٹی کے طلباء وطالبات میں پہلی پوزیشن بھی اسی سکول کی طالبہ رخسانہ اعظم کو مل گئی۔ پہلی پوزیشن ہولڈروں کو 40ہزار روپے، دوسری پوزیشن ہولڈروں کو 30ہزار اور تیسری پوزیشن ہولڈروں کو 20ہزار روپے جبکہ کالاش کمیونٹی سے تعلق رکھنے والی طالبہ کو 10ہزار روپے کے انعام دے دئیے گئے۔

     

    اس دفعہ خصوصی انعام اور شیلڈ عدنان شریف ولد محمد شریف شکیب ساکنہ لون حال پشاور کو دیا گیا جو میٹرک کے حالیہ امتحان میں 1023نمبر لیکر بورڈ میں نمایاں پوزیشن حاصل کی تھی۔

     

  • error: Content is protected !!