Chitral Times

Jul 17, 2024

ﺗﻔﺼﻴﻼﺕ

کابینہ ڈویڑن نے کفایت شعاری پالیسی کا اجرا کر دیا، فائیو اسٹار ہوٹل میں قیام پر پابندی عائد کر دی گئی

Posted on
شیئر کریں:

کابینہ ڈویڑن نے کفایت شعاری پالیسی کا اجرا کر دیا، فائیو اسٹار ہوٹل میں قیام پر پابندی عائد کر دی گئی

اسلام آباد(چتارال ٹائمزرپورٹ) کابینہ ڈویڑن نے وفاقی کابینہ کے فیصلوں کی روشنی میں کفایت شعاری پالیسی کا اجرا کر دیا جس کے تحت سرکاری افسران کو ناگزیر وجوہات کی بناء  پر بیرون ملک سفر کرنے کی ہدایت کی گئی ہے۔پالیسی کے تحت سرکاری افسران کے بیرون ملک دوروں کے دوران فائیو اسٹار ہوٹل میں قیام پر پابندی عائد کر دی گئی ہے۔ بیرون ملک دوروں پر ٹیلی کانفرنسنگ کو ترجیح دی جائے۔وفاقی وزراء، وزیر مملکت، مشیر، معاونین، سیکریٹریز، ایڈیشنل سیکریٹریز اور انچارج ڈویڑنز کے سرکاری دورے وزیر اعظم کی منظوری سے مشروط ہوں گے۔ 20 ویں یا اوپر کے گریڈ کے افسران اور تین ممبران کے وفد کی اجازت متعلقہ وزیر سے لی جائے گی۔بیرون ملک دوروں کی تمام تفصیلات وزارت خارجہ کو فراہم کرنا لازمی ہوں گی۔اس کے ساتھ، وزیر اور سیکریٹری کے ایک ہی وقت بیرون ملک دوروں پر بھی پابندی عائد کی گئی ہے، ناگزیر وجوہات کی بناء پر دونوں کو بیک وقت بیرون ملک دورے کی اجازت دی جا سکے گی جبکہ استثناء کے لیے متعلقہ وزیر یا ڈویڑن کو وزیراعظم سے اجازت لینا ہوگی۔بیرون ممالک کانفرسز میں حتی الامکان کوشش کی جائے کہ سفارتخانہ کے افسران شرکت کریں، البتہ وزارت خارجہ اور وزارت تجارت کو اس پابندی سے استثناء ہوگا۔صدر اور چیف جسٹس فرسٹ کلاس سفری سہولیات کے مجاز ہوں گے جبکہ وزیر اعظم، چیئرمین سینیٹ، اسپیکر قومی اسمبلی بزنس کلاس کے مجاز ہوں گے۔ وزیر خارجہ، وفاقی وزراء اور وزیر مملکت بھی بزنس کلاس میں سفر کریں گے۔قومی اسمبلی اور سینیٹ اجلاسوں کے دوران کابینہ ارکان بیرون اور اندرون ملک سفر کرنے سے گریز کریں۔بیرون ممالک دوروں کی تمام تفصیلات 15 روز میں وزارت خارجہ میں جمع کروانا لازمی ہوگا اور ایسے ممالک کے ساتھ رابطہ نہ کیا جائے جن سے پاکستان سفارتی تعلقات نہیں ہیں۔

 

اسلامی تعاون تنظیم کی کمیٹی برائے سائنسی اور تکنیکی تعاون کامسٹیک نے بین الاقوامی ایوارڈز 2023 کے فاتحین کا اعلان کر دیا

اسلام آباد(سی ایم لنکس)اسلامی تعاون تنظیم (او آئی سی) کی کمیٹی برائے سائنسی اور تکنیکی تعاون کامسٹیک نے بین الاقوامی ایوارڈز 2023 کے فاتحین کا اعلان کر دیا۔ یہ دو سالہ ایوارڈز او آئی سی کمیونٹی کے اندر سائنسی تحقیق اور اختراع میں نمایاں خدمات کا اعتراف کرتے ہیں۔ پیر کو کامسٹیک کی جانب سے جاری بیان کے مطابق ایوارڈز حاصل کرنے والوں کا انتخاب ایک سخت جائزہ کے عمل کے ذریعے کیا گیا ہے، 2023 کے ایوارڈ حاصل کرنے والے مختلف شعبوں میں سائنسی کامیابیوں کی نمائندگی کرتے ہیں۔کامسٹیک لائف ٹائم کنٹری بیوشن ایوارڈ برائے فزکس مشترکہ طور پر یاسمان فرزان (ایران) اور اصغری مقصود (پاکستان) کو دیا گیا ہے اور ریاضی میں اسی زمرے کا دوسرا ایوارڈ سعید اکبری فیض آبادی (ایران) کو دیا گیا۔ کامسٹیک ینگ ریسرچر کا ایوارڈ احمد ذیشان (پاکستان) نے جیتا، کامسٹیک بہترین سائنسی کتاب کا ایوارڈ محمد سپوان سالیت (ملائیشیا) نے جیتا، کامسٹیک بہترین پیٹنٹ ایوارڈ سومیہ کوہی (ایران) اور امری یوسف (مراکش) نے مشترکہ طور پر حاصل کیا ہے۔کامسٹیک بہترین ریسرچ پیپر کا ایوارڈ حیاتیات، کیمسٹری اور فزکس میں مشترکہ طور پر ایمان خونی (تیونس)، شجاع الملک خان (پاکستان)، نسیم اقبال (پاکستان) اور اسماعیل اوکسوئے (ترکی)، کشیری محمد صالح (ملائیشیا) اور عنبرین کلثوم (پاکستان) کو بالترتیب دیا گیا ہے جبکہ کے ایم عارف کبیر (بنگلہ دیش) نے ریاضی میں اسی زمرے کا ایوارڈ جیتا ہے۔ کامسٹیک نے تمام جیتنے والوں کو ان کی شاندار کامیابیوں پر مبارکباد پیش کی ہے۔ہر وصول کنندہ کو اعزازی شیلڈ، صدر پاکستان اور چیئرمین کامسٹیک کا دستخط شدہ سرٹیفکیٹ اور نقد انعام دیا جائے گا۔ انفرادی شناخت کے علاوہ کامسٹیک ایوارڈز تعاون کے جذبے کا ثبوت ہیں جو سائنسی ترقی کو آگے بڑھاتا ہے۔

 


شیئر کریں:
Posted in تازہ ترین, جنرل خبریں
86499