Chitral Times

Jul 20, 2024

ﺗﻔﺼﻴﻼﺕ

سرکاری سطح پرآل پارٹیزسیمیناراورالیکشن ضابطہ اخلاق ۔ تحریر: انور خان خٹک

Posted on
شیئر کریں:

سرکاری سطح پرآل پارٹیزسیمیناراورالیکشن ضابطہ اخلاق ۔ تحریر: انور خان خٹک ڈپٹی ڈائریکٹر انفارمیشن

گزشتہ روز بنوں ڈویژن کے تینوں اضلاع بنوں، لکی مروت اور شمالی وزیرستان کے تمام سیاسی جماعتوں کے قائدین اور رہنماؤں کیلئے سرکاری سطح پر آل پارٹیز سیمینار کا انعقاد کیا گیا جس کی صدارت کمشنر بنوں ڈویژن پرویز ثبت خیل نے کی۔ اس خصوصی سیمینار میں جنرل انتخابات کے حوالے سے خیبرپختونخوا حکومت اور الیکشن کمیشن آف پاکستان کی ہدایات اور ضابطہ اخلاق کے بارے میں سیاسی جماعتوں کے قائدین اور سیاسی رہنماؤں کو آگاہی مقصد تھا۔ تینوں اضلاع بنوں، لکی مروت اور شمالی وزیرستان میں موجود سب سیاسی جماعتوں کے قائدین اور سیاسی رہنماؤں نے سیمینار میں شرکت کی جس میں بالخصوص جمیعت علمائے اسلام، پاکستان تحریک انصاف، پاکستان مسلم لیگ نواز، پاکستان پیپلز پارٹی، جماعت اسلامی، عوامی نیشنل پارٹی اور قومی وطن پارٹی سمیت متعدد پارٹیوں کے عہدیداران شریک تھے۔ سیاسی جماعتوں کے قائدین کے علاوہ سرکاری طور پر ریجنل پولیس آفیسر بنوں ڈویژن قاسم علی خان، ریجنل الیکشن کمشنر عبدالصمد خان، ڈپٹی کمشنر لکی مروت، ایڈیشنل ڈپٹی کمشنر شمالی وزیرستان، سیکرٹری ٹو کمشنر سمیت تینوں اضلاع کے پولیس افسران، تینوں اضلاع کے ڈسٹرکٹ الیکشن کمیشنر، ریجنل انفارمیشن آفیسر اور حساس اداروں کے افسران نے ڈسٹرکٹ کونسل ہال بنوں خصوصی طور پر شرکت کی۔

 

کمشنر بنوں ڈویژن پرویز ثبت خیل نے جنرل انتخابات کے ضابطہ اخلاق اور گائیڈ لائنز کے حوالے سے منعقدہ تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ آٹھ فروری 2024 کو الیکشن کا اعلان کیا گیا ہے اور اسکے ساتھ ہی تمام سیاسی جماعتوں کی طرف سے انتخابی مہم کا باقاعدہ آغاز ہونے والا ہے جس کیلئے خیبرپختونخوا حکومت اور الیکشن کمیشن آف پاکستان کی جانب سے تمام سیاسی جماعتوں کیلئے کچھ اہم قسم کی گائیڈ لائنز اور ضابطہ اخلاق جاری کئے گئے ہیں جس پر عملدرآمد یقینی بنانے سے پرامن جنرل انتخابات ممکن ہو سکتے ہیں۔ کمشنر بنوں ڈویژن پرویز ثبت خیل نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ الیکشن مہم ضابطہ اخلاق کے مطابق تمام سیاسی جماعتوں اور امیدوارں کو تمام کارنر میٹنگز اور جلسے جلوسوں کے انعقاد کیلئے ضلعی انتظامیہ سے این او سی لینا ضروری ہوگا، بغیر اجازت نامے کے کسی قسم کے جلسے جلوس کی اجازت نہیں ہوگی انہوں نے کہا کہ تینوں اضلاع بنوں، لکی مروت اور شمالی وزیرستان میں پولیس اور ضلعی انتظامیہ کے تعاون سے کارنر میٹنگز اور جلسوں کے انعقاد کیلئے مخصوص مقامات کا انتخاب کیا گیا ہے جس میں ضلع بنوں میں منڈان پارک، میراخیل کرکٹ سٹیڈیم، ٹاؤن شپ پارک، دامی پل گراؤنڈ، گورنمنٹ ڈگری کالج بکاخیل، گمبتی کھیل گراؤنڈ، روسا مدراسہ سمیت کچھ دیگر مقامات پر مشاورت کی جارہی ہے جبکہ ضلع لکی مروت میں راجستھان گراؤنڈ، چھاؤنی گراؤنڈ لنڈیوا، سکول گراؤنڈ ہسپتال روڈ نورنگ، کالونی گراؤنڈ تاجوڑی، پیزو ہائی سکول کے سامنے گرؤانڈ، غزنی خیل پروا گراؤنڈ، تحصیل مستی خیل گراؤنڈ، شادی خیل گراؤنڈ، سمیت کچھ دیگر مقامات کا تعین کیا جا رہا ہے اسی طرح شمالی وزیرستان میں رزمک گراؤنڈ، عزیز خیل گراؤنڈ بورا خیل، پریاٹ گراؤنڈ دوسلی، گردائی رغزئی دوسلی گراؤنڈ، فٹ بال گراؤنڈ میران شاہ، فٹبال گراؤنڈ درپاخیل، بویا کرکٹ گراؤنڈ، داتا خیل سپورٹس گراؤنڈ، سینڈیکیٹ گراؤنڈ میرعلی، بوبالی سپورٹس کمپلیکس، توری میرعلی گراؤنڈ نزد ڈی چوک، شیوا سرکاری گراؤنڈ سمیت متعدد گراؤنڈ شامل ہیں

 

یہاں پر یہ امر قابل ذکر ہے کہ کارنر میٹنگز اور جلسوں کیلئے یہ مقامات حتمی نہیں ہیں بلکہ منتخب کئے گئے ہیں جن پر مشاورت جاری ہے۔ انتخابی مہم کے حوالے سے منعقدہ سیمینار میں کمشنر بنوں ڈویژن پرویز ثبت خیل نے وضاحت کرتے ہوئے کہا کہ صرف ان مخصوص مقامات پر جلسے جلوسوں اور کارنر اجلاسوں کی اجازت ہوگی۔ کمشنر بنوں ڈویژن پرویز ثبت خیل نے آئین کے آرٹیکل 16 کا حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ کوئی بھی شہری پر امن اور بغیر اسلحہ کے لوگوں کو جمع کر سکتا ہے لیکن لاء اینڈ آرڈر حالات کی وجہ سے الیکشن مہم میں جاری کردہ ایس او پیز پر عملدرآمد ممکن بنانا ضروری ہے۔ انہوں نے کہا کہ تمام سیاسی جماعتیں اور امیدوار مہینے کے پہلی اور پندرہویں تاریخ کو ضلعی انتظامیہ کے ساتھ اپنے جلسوں اور کارنر میٹنگز کا شیڈول شئیر کریں گی تاکہ اسکے مطابق سیکورٹی اور دیگر انتظامات کیے جائیں۔ انہوں نے کہا کہ اگر کسی وجہ سے ضلعی انتظامیہ کسی بھی پارٹی یا امیدوار کو این او سی جاری نہیں کرتی تو متعلقہ سیاسی جماعت یا امیدوار تین دنوں کے اندر کمشنر آفس کو اپیل کر سکتی ہے۔

 

الیکشن ضابطہ اخلاق کے حوالے سے تفصیلی گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ تمام جلسے دن کی روشنی میں ہونگے اور وقت کی پابندی لازمی ہوگی جس کی ذمہ داری انتخابی امیدوار اور سیاسی جماعت کی ہوگی۔ انہوں نے کہا کہ صرف بڑے اور مخصوص جلسوں میں لاؤڈ اسپیکر استعمال کی اجازت ہوگی جبکہ انتخابی بینرز اور پینا فلیکس کا استعمال بھی مخصوص جگہوں پر کیا جائیگا۔ پرویز ثبت خیل نے کہا کہ انتخابی امیدوار اور سیاسی جماعت کی ذمہ داری ہوگی کہ وہ ہر جلسے اور کارنر میٹنگز کی مکمل ویڈیو ریکارڈنگ کرے اور جلسے کے اگلے دن متعلقہ پولیس اسٹیشن میں جمع کرے۔ الیکشن ضابطہ اخلاق کے حوالے سے کمشنر پرویز ثبت خیل نے کہا کہ کارنر میٹنگز اور جلسے جلوسوں میں کسی شخص، سیاسی جماعت اور ادارے کے خلاف نفرت انگیز تقاریر اور غلط الفاظ کے استعمال کی سخت ممانعت کی گئی ہے۔ ریجنل پولیس آفیسر قاسم علی خان نے کہا کہ انتخابی مہم کے دوران امیدواران اپنے تخفظ کیلئے گارڈز اسی شرط پر رکھ سکتے ہیں اگر انکے گارڈز کے پاس اسلحہ والے لائسنس موجود ہوں اور متعلقہ تھانے میں رجسٹرڈ بھی ہوں۔ انہوں نے کہا کہ انتخابات کے موقع پر امن و امان کی فضاء برقرار رکھنے کیلئے سیکورٹی گائیڈ لائنز پر سختی سے عملدرآمد ممکن بنایا جائے گا۔ اس خصوصی سیمینار میں سیاسی جماعتوں کے قائدین اور رہنماؤں کیلئے سؤالات اور جوابات کے سیشن کا بھی انعقاد کیا گیا تھا اور انہوں نے اس موقع پر انتظامیہ اور پولیس کو اپنے تجاویز دیں اور کچھ خدشات کا اظہار بھی کیا جس کے انتظامیہ اور ریجنل پولیس کی جانب سے جوابات دئیے گئے زیادہ تر سیاسی جماعتوں کے قائدین نے نشست کو کافی سراہا اور اسے آنے والے انتخابات کیلئے خوش آئند قرار دیا۔

chitraltimes political parties training on election pesh 2


شیئر کریں:
Posted in تازہ ترین, جنرل خبریں, مضامینTagged
82172