Chitral Times

Jul 18, 2024

ﺗﻔﺼﻴﻼﺕ

داد بیداد ۔ حملہ آور کون ہے؟۔ ڈاکٹر عنایت اللہ فیضی

Posted on
شیئر کریں:

داد بیداد ۔ حملہ آور کون ہے؟۔ ڈاکٹر عنایت اللہ فیضی

6ستمبر 2023کے صبح سویرے خیبر اور چترال کے دو اضلا ع میں 3سر حدی چو کیوں پر بیک وقت حملہ کرنے والے کون تھے چونکہ حملوں کا سلسلہ وقفے وقفے سے جا ری ہے اس لئے سوال یہ بھی بنتا ہے کہ حملہ آور کون ہے؟ سرحد پار جہاں سے فائرنگ آرہی ہے افغا نستان کی سرزمین ہے مگر افغان حکومت کہتی ہے کہ ہماری سرزمین استعمال نہیں ہورہی، حملہ آوروں نے پشتو میں خوب صورت کمپوز کر کے ایک صفحے کا بیان جا ری کیا ہے کہ ہم نے افغانستان کی سر زمین استعمال نہیں کی پا کستان کا مدلل موقف یہ ہے کہ حملہ آوروں کو دوماہ پہلے افغانستان کی ولا یت کنڑ میں جمع کیا گیا تھا

 

دو ہفتے پہلے حملہ آوروں کو الگ الگ قافلوں کی شکل میں کنڑ سے نورستان اور جلا ل اباد منتقل کیا گیا اب بھی چار ہزار دہشت گرد کنڑ کیمپ میں تر بیتی مشق کر رہے ہیں ڈیڑھ ہزار کو نورستان بھیجا گیا ہے ایک ہزار کی تعداد کو جلا ل اباد منتقل کیا گیا ہے ان کے سب ٹھکا نے ہمیں معلوم ہیں ان کی نقل و حر کت سے ہم با خبر ہیں ہم نے افغانستان کی امارت اسلا میہ کے اس وعدے پر اب تک اعتبار کیا تھا کہ افغان سر زمین کو پا کستان پر حملوں کے لئے استعمال کرنے کی اجا زت نہیں دی جائیگی مگر اب یہ بات پا یہ ثبوت کو پہنچ گئی ہے کہ وعدہ ایفا نہیں ہوا حا لانکہ یہ بات عجیب لگے گی کہ امارت اسلا می نے اپنے مسلمان بھا ئی کے ساتھ وعدہ ایفا نہیں کیا جبکہ ہمارے نبی اکرمﷺ نے دشمن کے ساتھ بھی کبھی دعدہ خلا فی نہیں کی اور امارت اسلا می افغان نستان کونفاذ شریعت اسلا می کا دعویٰ ہے نبی کریم ﷺ کی ہر سنت کو اسلا می شعائر کے ساتھ زندہ رکھنے کا دعویٰ ہے یہ کیسے ہوسکتا ہے کہ ایسی پا کیزہ حکومت اپنے مسلمان پڑوسی کے ساتھ معمولی وعدے کی پا سداری نہ کرے یقینا پا سداری کریگی

 

یہاں سادہ سا ایک معمولی سوال پیدا ہوتا ہے طورخم اُرسون اور استوئی کی سرحدات ایسی جگہ واقع ہیں جہاں سر حد کے اُس پار افغا نستان کی سر زمین ہیں امارت اسلا می کی عسکری چو کیاں ہیں، اردوئے ملی کھڑی ہے وہاں سے بھاری اسلحہ کے ذریعے فائرنگ آرہی ہے، دہشت گرد آرہے ہیں گاڑیوں سے اسلحہ اتار رہے ہیں ہماری دور بین ہی نہیں دکھا تی، ہمارا سٹیلائیٹ نقشہ اور ڈرون ہی نہیں دکھا تا ہم یہ سب کچھ اپنی کھلی آنکھوں سے دیکھ رہے ہیں پھر بھی آپ بضد ہیں کہ یہ افغانستان کی سرزمین نہیں تو پھر سیدھی سی بات ہے اپنی چو کیاں اٹھوا دیں اپنا عسکر اور اردوئے ملی واپس لے جائیں علاقہ پا کستان کے حوالے کریں دشمن پا کستان پر باہر سے تمہاری طرف سے حملہ کرتا ہے اگر یہ تمہارے پا س نہیں تو کس کے پاس ہے؟ کا بل کی گلیوں میں پشتو کا ایک لطیفہ مشہور ہے ایک تا جر نے نو کر کو ایک سیر گوشت پکا نے کے لئے دیا، دستر خوان پر خا لی دال آیا تو گوشت کا پوچھا نو کرنے کہا گوشت کو بلی کھا گئی، تا جر نے بلی کو تولا تو بمشکل ایک سیر نکلا، تا جر نے نو کر سے پوچھا اب بتاؤ اگر یہ بلی کا وزن ہے تو گوشت کدھر گیا اگر یہ گوشت کا وزن ہے تو بلی کدھر گئی؟ امارت اسلا می افغا نستان کو یہ بتا نا ہو گا کہ پا کستان کی سر حدی چو کیوں پر اگر افغان سرزمین سے حملہ نہیں ہو رہا تو کہاں سے حملہ ہو رہا ہے اور حملہ آور کون ہے؟


شیئر کریں:
Posted in تازہ ترین, مضامینTagged
78979