Chitral Times

Jul 24, 2024

ﺗﻔﺼﻴﻼﺕ

خیبرپختونخوا حکومت نے سنٹرالاائزڈ پراپرٹی ٹیکس مینجمنٹ اینڈ انفارمیشن سسٹم کا اجراء کر دیا 

Posted on
شیئر کریں:

خیبرپختونخوا حکومت نے سنٹرالاائزڈ پراپرٹی ٹیکس مینجمنٹ اینڈ انفارمیشن سسٹم کا اجراء کر دیا

 

پشاور ( چترال ٹائمز رپورٹ ) خیبرپختونخوا حکومت نے محکمہ ایکسائز کے تحت ٹیکس وصولی میں اضافے، ٹیکس دہندگان کی سہولت اور ٹیکس وصولی کے مجموعی نظام میں شفافیت کو یقینی بنانے کیلئے سنٹرالاائزڈ پراپرٹی ٹیکس مینجمنٹ اینڈ انفارمیشن سسٹم کا اجراء کر دیا ہے۔اس سلسلے میںجمعہ کے روز وزیراعلیٰ ہاﺅس پشاور میں ایک تقریب کا انعقاد کیا گیا جس کے مہمان خصوصی نگران وزیراعلیٰ جسٹس (ریٹائرڈ) سید ارشد حسین شاہ تھے۔نگران صوبائی وزرائاحمد رسول بنگش اورانجینئر احمد جان کے علاوہ سیکرٹری ایکسائز سید فیاض علی شاہ، سیکرٹری لوکل گورنمنٹ داﺅد خان اور دیگر متعلقہ حکام نے تقریب میں شرکت کی۔ ابتدائی طور پر اس جدید سسٹم کا اجرائدو اضلاع ایبٹ آباداور نوشہرہ میں کیا گیا ہے جبکہ بہت جلد اس سسٹم کو صوبے کے دیگر اضلاع تک توسیع دی جائے گی۔ یہ منصوبہ 95.898 ملین روپے کی لاگت سے مکمل کیا گیا ہے۔سنٹرلاائزڈ ٹیکس مینجمنٹ اینڈ انفارمیشن سسٹم کے تحت ایبٹ آباد اورنوشہرہ میں 50938 نئے پراپرٹی یونٹس کی نشاندہی کی گئی ہے،

 

اس طرح ان اضلاع میں پراپرٹی یونٹس کی مجموعی تعداد 90938 ہو گئی ہے جس کی وجہ سے مذکورہ اضلاع کے ٹیکس ریونیو میں مجموعی طور پر 114ملین روپے کا اضافہ متوقع ہے۔ نگران وزیراعلیٰ نے تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہاکہ پراپرٹی ٹیکس وصولی کے اس جدید آن لائن سسٹم کا اجرائایک قابل ستائش اقدام ہے۔ اس سسٹم کے اجرائکیلئے محکمہ ایکسائز کی پوری ٹیم کا کردار قابل فخر اور لائق تحسین ہے۔ اُنہوںنے کہاکہ مذکورہ سسٹم کے اجرائسے نہ صرف محکمے کو غیر منقولہ پراپرٹی ٹیکس کی وصولی اور مینجمنٹ میں آسانی پیدا ہوگی بلکہ ٹیکس دہندگان کو بھی ٹیکس کی ادائیگی میں سہولت میسر ہو گی۔ اس سسٹم کا سب سے بڑا فائدہ یہ ہو گا کہ ٹیکس کی وصولی اور ادائیگی کے مجموعی عمل میں شفافیت یقینی ہو گی، ٹیکس دہندگان کا ادارے پر اعتماد بڑھے گا اور اس طرح ٹیکس نیٹ کا دائرہ بھی وسیع ہو گا۔وزیراعلیٰ کا کہنا تھا کہ ٹیکسوں کی ادائیگی کا مشکل اور پیچیدہ نظام ہمیشہ سے شہریوں کیلئے ایک مسئلہ رہا ہے جس کی وجہ سے شہری ٹیکسوں کی ادائیگیوں سے کتراتے ہیں اور اس طرح ریونیوٹارگٹ کا حصول مشکل ہو تا ہے۔

 

جدید سسٹم کے ذریعے شہری ٹیکس کی ادائیگی اپنے گھر بیٹھے آسانی سے کر سکتے ہیں جس کے نتیجے میں انہیں قطاروں میں کھڑے ہونے سے نجات ملے گی اور سفری اخراجات کے ساتھ ساتھ ٹیکس دہندگان کے وقت کی بھی بچت ہو گی۔ارشد حسین شاہ کا کہنا تھا کہ جدید ٹیکنالوجی خصوصاً انفارمیشن اینڈ کمیونیکیشن ٹیکنالوجی کے موثر استعمال کے ذریعے نہ صرف سرکاری محکموں کی استعداد کار کو بڑھایا جا سکتا ہے بلکہ روزمرہ اُمور کی انجام دہی کو بھی سہل بنایا جا سکتا ہے۔ اُمید ہے محکمہ ایکسائز میں جدت کا یہ سلسلہ آئندہ بھی جاری رہے گا اور ٹیکس وصولی کے نظام کو مزید بہتر بنایا جائے گا۔

chitraltimes caretaker cm irshad hussain inagurated tax centralized system 1


شیئر کریں:
Posted in تازہ ترین, جنرل خبریں
85344