Chitral Times

35 روپے فی یونٹ بجلی کی قیمت میں ٹیکسز شامل نہیں، اویس لغاری

Posted on

35 روپے فی یونٹ بجلی کی قیمت میں ٹیکسز شامل نہیں، اویس لغاری

اسلام آباد(چترال ٹائمزرپورٹ)وفاقی وزیر توانائی اویس لغاری نے کہا ہے کہ35 روپے فی یونٹ بجلی کی قیمت ہے جس میں ٹیکسز شامل نہیں ہیں، جنوری میں بجلی کی قیمت میں 3 سے 5 فیصد کمی آنا شروع ہو جائے گی۔نجی ٹی وی کے پروگرام میں گفتگو کرتے ہوئے اویس لغاری نے کہا کہ بجلی کی پیداواری قیمت 8 سے 10 روپے فی یونٹ ہے، بجلی کے ترسیلی نظام کے چارجز فی یونٹ ڈیڑھ سے 2 روپے ہیں جبکہ ڈسکوز کے اخراجات فی یونٹ 5 روپے پڑتے ہیں۔اویس لغاری نے کہا کہ سب سے بڑا خرچہ 18 روپے فی یونٹ کیپسٹی چارجز کا ہے، کیپسٹی چارجز وہ خرچہ ہوتے ہیں جو حکومت قرضہ لے کر پلانٹس لگاتی ہے یا نجی سیکٹر بجلی گھر بناتے ہیں، بجلی کے ریٹ بڑھنے سے بجلی کے استعمال میں کمی آئی ہے۔انہوں نے کہا کہ ساہیوال کول پلانٹ کے 2015ء میں کیپسٹی چارجز 3 روپے فی یونٹ تھے، ڈالر کی قیمت بڑھنے اور شرح سود 22 فیصد تک آنے کی وجہ سے کیپسٹی چارجز بڑھ گئے۔اویس لغاری نے کہا کہ ڈالر کی قیمت اور شرح سود بڑھنے سے ساہیوال کول پلانٹ کے کیپسٹی چارجز 11.45 روپے فی یونٹ ہوگئے،

 

اس وقت توانائی سیکٹر کے قرضوں کا بوجھ بجلی صارفین سے لیا جارہا ہے۔ان کا کہنا تھا کہ اگر ان پلانٹس کو چلائیں گے تو وہ آپ کو تیل کا خرچہ لگا کر آپ سے پیسے لیں گے، اگر پلانٹس کو نہیں چلائیں گے تو بھی وہ ان پلانٹس کی مد میں اپنا سرمایہ لگانے اور منافع کے پیسے آپ سے لیں گے۔وفاقی وزیر نے کہا کہ پلانٹس پر درآمد شدہ کوئلہ کے استعمال کے بجائے مقامی کوئلے کو استعمال کیا جائے تو فی یونٹ دو ڈھائی روپے کمی آئے گی۔انہوں نے کہا کہ بند پلانٹس پر ساڑھے سات ارب روپے کی تنخواہیں دی جارہی ہیں، ڈسٹریبویشن کمپنیوں کا 550 سے 600 ارب روپے سالانہ خسارہ ہے۔اویس لغاری نے کہا کہ اگلے دو سے تین سال میں ٹرائبل ایریا اور بلوچستان کے علاوہ دیگر تمام ڈسکوز کو نجی سیکٹر کو دیں گے، ہر سال مہنگائی اور شرح سود کی وجہ سے بجلی کے ریٹ میں ردوبدل ہوتا ہے۔وفاقی وزیر نے کہا کہ پچھلے ہفتے بجلی کی قیمت میں 7 روپے فی یونٹ اضافہ ہوا، 2019ء کے بعد حکومت نے بجلی کی قیمت مصنوعی طور پر بڑھنے نہیں دی، ماضی کی حکومت نے اپنے سیاسی نقصان سے بچنے کے لیے بجلی کی قیمت نہیں بڑھائی۔اویس لغاری نے یہ بھی کہا کہ بجلی کی قیمت میں حالیہ اضافہ تین سے چار سال بعد ہوا ہے، بجلی کی فی یونٹ قیمت ہر سال آہستہ آہستہ بڑھنی چاہیے تھی۔انہوں نے کہا کہ مہنگے پلانٹس سستے پلانٹس سے پہلے چلتے ہیں، آج بھی ہرماہ اربوں روپے کی مہنگی بجلی سسٹم میں شامل کرتے ہیں اور سستے پلانٹس استعمال نہیں کرسکتے۔وفاقی وزیر نے کہا کہ سستے پلانٹس استعمال نہ کرنے کی وجہ نارتھ ساؤتھ ٹرانسمیشن لائن میں مخصوص حد سے آگے جانے کی کیپسٹی نہیں ہے۔

 

مذکرات کامیاب، ٹی ایل پی نے فیض آباد دھرنا ختم کردیا

راولپنڈی(سی ایم لنکس)فیض آباد پر تحریک لبیک پاکستان (ٹی ایل پی) کا دھرنا ختم کرنے کیلیے حکومتی ٹیم اور دھرنا انتطامیہ کے درمیان مذاکرات کامیاب ہوگئے۔وزیراعظم کے مشیر رانا ثناء اللّٰہ اور وفاقی وزیر اطلاعات عطاء اللّٰہ تارڑ نے ٹی ایل پی رہنماؤں کے ساتھ مشترکہ پریس کانفرنس کی۔رانا ثناء اللّٰہ نے کہا کہ حکومت فلسطینیوں کی مدد کیلئے کوششوں میں اضافہ کرے گی، ٹی ایل پی کے دوست بھی حکومتی کوششوں میں معاونت کریں گے۔مشیر وزیراعظم نے کہا کہ حکومت ایسی مصنوعات کو روکے گی جو اسرائیلی مظالم کی مدد گار ہیں، اسرائیلی مظالم میں شامل دنیا کی ہر طاقت کی مذمت کرتے ہیں، ٹی ایل پی کے شکر گزار ہیں انہوں نے اس اہم مسئلے سے آگاہ کیا۔تحریک لبیک اور حکومتی وفد کے درمیان مذاکرات کرنے والوں میں وفاقی وزیر اطلاعات عطا تارڑ، مشیر سیاسی امور رانا ثنا اللہ، آئی جی اسلام آباد اور اسلام آباد کی انتظامیہ شامل تھی۔اس مذاکرات کے حوالے سے جاری ہونے والے اعلامیہ کے مطابق تحریک لبیک کی مذاکراتی ٹیم نے حکومتی وفد کے ساتھ مذاکرات کو خوش آئند قرار دیا، مذاکرات کا یہ پہلا دور گزشتہ روز جمعرات کو ہوا تھا۔

 

 

 

Posted in تازہ ترین, جنرل خبریںTagged
91087

الیکشن کمیشن کا سپریم کورٹ کے مخصوص نشستوں کے فیصلے پر عملدرآمد کا فیصلہ

Posted on

الیکشن کمیشن کا سپریم کورٹ کے مخصوص نشستوں کے فیصلے پر عملدرآمد کا فیصلہ

اسلام آباد(چترال ٹائمزرپورٹ)الیکشن کمیشن نے خصوصی نشستوں کے حوالے سے سپریم کورٹ کے فیصلے پر عملدرآمد کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔الیکشن کمیشن کی جانب سے جاری بیان کے مطابق الیکشن کمیشن کا کل اور آج سپریم کورٹ کے حکم پر عملد رآمد کے سلسلے میں اجلاس ہوا۔ اجلاس میں الیکشن کمیشن نے سپریم کورٹ کے فیصلے پر عملدرآمد کا فیصلہ کیا ہے۔ الیکشن کمیشن کی قانونی ٹیم کو ہدایات جاری کی گئی ہیں کہ عملدرآمد کے حوالے کسی قسم کی مشکل ہو تو مزید رہنمائی کے لیے فوری طورپر سپریم کورٹ سے رجوع کیا جائے۔الیکشن کمیشن نے ایک سیاسی پارٹی کی جانب سے چیف الیکشن کمشنر اور الیکشن کمیشن کے ارکان کو مسلسل بے جا تنقید کا نشانہ بنانے کی مذمت کرتے ہوئے تنقید کو مسترد کردیا۔ الیکشن کمیشن کا کہنا تھا کہ کمیشن سیاستعفیٰ دینے کا مطالبہ مضحکہ خیز ہے۔کمیشن کسی قسم کے دباؤ کو خاطر میں نہ لاتے ہوئے آئین اور قانون کے مطابق کام کرتا رہے گا۔بیان میں مزید کہا گیا ہے کہ الیکشن کمیشن نے کسی فیصلے کی غلط تشریح نہیں کی۔ الیکشن کمیشن نے پی ٹی آئی کے انٹراپارٹی الیکشن کو درست قرارنہیں دیا۔ جس کے خلاف پی ٹی آئی مختلف فورمز پر گئی لیکن فیصلے کو برقرار رکھا گیا۔

 

پی ٹی آئی کے انٹرا پارٹی الیکشن درست نہیں تھے جس کے نتیجے میں الیکشنز ایکٹ کی دفعہ 215 کے تحت بیٹ کا نشان واپس لیا گیا لہذا الیکشن کمیشن پر الزام تراشی انتہائی نامناسب ہے۔الیکشن کمیشن کے مطابق جن 39 ارکان اسمبلی کو پی ٹی آئی کے ارکان قرار دیا گیا ہے انہوں نے اپنے کاغذات نامزدگی میں پی ٹی آئی سے اپنی وابستگی ظاہر کی تھی جبکہ کسی بھی پارٹی کا امیدوار ہونے کے لیے پارٹی ٹکٹ اور ڈکلئیریشن ریٹرننگ افسر کے پاس جمع کروانا ضروری ہے جوکہ ان امیدواروں نے جمع نہیں کروایا تھا۔ اس لیے ریٹرننگ افسروں کے لیے ممکن نہیں تھا کہ وہ ان کو پی ٹی آئی کا امیدوار تسلیم کرتے۔بیان کے مطابق جن 41 امیدواروں کو آزاد ڈکلئیر کیا گیا ہے انہوں نے اپنے کاغذات نامزدگی میں پی ٹی آئی کا ذکر کیا اور نہ ہی پارٹی سے وابستگی ظاہر کی اور نہ ہی کسی پارٹی کا ٹکٹ جمع کروایا لہذا ریٹرننگ افسروں نے ان کو آزاد حیثیت میں الیکشن میں حصہ لینے کی اجازت دی۔۔ الیکشن جیتنے کے بعد قانون کے تحت ان ارکان اسمبلی نے رضاکارانہ طور پر سنی اتحاد کونسل میں شمولیت اختیار کی۔سپریم کورٹ میں سنی اتحاد کونسل الیکشن کمیشن اور پشاور ہائیکورٹ کے فیصلے کے خلاف اپیل میں آئی۔ سنی اتحاد کونسل کی یہ اپیل مسترد کردی گئی۔ پی ٹی آئی اس کیس میں نہ تو الیکشن کمیشن میں پارٹی تھی اور نہ ہی پشاور ہائی کورٹ کے سامنے پارٹی تھی اور نہ ہی سپریم کورٹ میں پارٹی تھی۔

 

 

تحریک انصاف نے 38 آزاد اراکینِ قومی اسمبلی کی فہرست الیکشن کمیشن میں جمع کرا دی

اسلام آباد(سی ایم لنکس)مخصوص نشستوں کے حوالے سے سپریم کورٹ کے فیصلے کے بعد تحریک انصاف نے 38 آزاد اراکینِ قومی اسمبلی کی فہرست الیکشن کمیشن میں جمع کرا دی۔تحریک انصاف کے نمائندہ نے الیکشن کمیشن میں اراکینِ اسملی کی فہرست جمع کرائی جس کے ساتھ اضافی دستاویز بھی منسلک کیے گئے ہیں۔ذرائع کے مطابق 3 آزاد ارکان کے بیان حلفی تاحال جمع نہیں کرائے گئے ہیں۔ صاحبزادہ محبوب سلطان، مبین عارف اور ریاض فتیانہ بیرونِ ملک ہیں۔ذرائع کا کہنا ہے کہ ان 3 ارکان کے پارٹی وابستگی فارم آج جمع کرا دیں گے۔

Posted in تازہ ترین, جنرل خبریںTagged
91085

بیوروکریسی میں بڑے پیمانے پر تبادلے، ڈپٹی کمشنرزاپراور لوئیر چترال تبدیل، عبد الاکرم ڈپٹی کمشنرکوہاٹ تعینات

بیوروکریسی میں بڑے پیمانے پر تبادلے، ڈپٹی کمشنرزاپراور لوئیر چترال تبدیل، عبد الاکرم ڈپٹی کمشنرکوہاٹ تعینات

چترال ( نمائندہ چترال ٹائمز ) صوبائی حکومت نے بڑے پیمانے پر بیوروکریسی کے تبادلوں اور تعیناتیوں کے احکامات جاری کی ہے، چترال کے دونوں اضلاع کے ڈپٹی کمشنرز کو بھی تبدیل کردیا گیاہے، ایڈیشنل سیکریٹری ایلمینٹری ایجوکیشن عبدالاکرام ڈپٹی کمشنرضلع کوہاٹ تعینات ہوئے ہیں۔  حسیب الرحمن خان خلیل ڈپٹی کمشنر اپر چترال جبکہ محسن اقبال ڈی سی لوئیر چترال تعینات ہوئے ہیں،اسی طرح ایڈیشنل ڈپٹی کمشنر ڈی آئی خان  طارق محمود ڈپٹی کمشنر لوئیر کوہستان تعیات ہوئے ہیں، باقی کی تفصیل ذیل ہے۔

 

 

chitraltimes transfer posting orders kp 2 chitraltimes transfer posting orders kp 3 chitraltimes transfer posting orders kp 4 chitraltimes transfer posting orders kp 1

chitraltimes transfer posting orders kp 6 chitraltimes transfer posting orders kp 5

 

 

 

Posted in تازہ ترین, جنرل خبریں, چترال خبریںTagged ,
91040

ساتویں خانہ و مردم شماری 2023، کے نتائج کا اعلان،پاکستان کی کل آبادی 241.49 ملین

Posted on

ساتویں خانہ و مردم شماری 2023، کے نتائج کا اعلان،پاکستان کی کل آبادی 241.49 ملین

اسلام آباد(چترال ٹائمزرپورٹ)ادارہ برائے شماریات پاکستان (پی بی ایس) نے 7ویں خانہ و مردم شماری 2023، “پہلی ڈیجیٹل مردم شماری”کے تفصیلی نتائج کے اعلان کر دیا ہے،پاکستان کی کل آبادی 241.49 ملین ہے۔ پی بی ایس کے ترجمان محمد سرور گوندل نے اپنے بیان میں کہا کہ تفصیلی نتائج میں جنس، عمر، قومیت، زبان، ازدواجی حیثیت، تعلیم، معذوری، شہری اور دیہی آبادی کا تناسب، ہاؤسنگ، پانی اور حفظان صحت کے متعلق قومی، صوبائی، ضلعی اور تحصیل کی سطح کی معلومات شامل ہیں۔انہوں نے کہا کہ آبادی میں اضافے کی موجودہ شرح 2.55 فیصدہے جو خطے کی بلند ترین سطح ہے۔اگر یہ شرح نمو برقرار رہی تو 2050 تک پاکستان کی آبادی دوگنی ہو جائے گی۔بڑھتی ہوئی آبادی ملکی وسائل پر دباؤ کا موجب ہے۔آبادی میں اضافہ شہریوں کی فی کس آمدنی اور معیار زندگی کو بری طرح متاثر کر رہا ہے۔ وسائل کی بہتر تقسیم اور معاشی خوشحالی کے لئے آبادی پر کنٹرول کے لئے ایک مؤ ثر حکمت عملی تیار کرنے کی ضرورت۔ وفاقی وزیر کی جانب سے ساتویں خانہ ومردم شماری کے شفاف انعقاد اور کا میاب تکمیل پر پاکستان ادارء شماریات کو مبارکباد دی ہے۔

 

مختلف سماجی و اقتصادی اعشاریوں پر تفصیلی نتائج کو تحقیق، پالیسی اور منصوبہ بندی میں وسیع پیمانے پر استعمال کیا جائیگا۔ پاکستان کی کل آبادی 241.49 ملین ہے۔جس میں 51.48 فیصد مرد اور 48.51 فیصد خواتین ہیں جن کا صنفی تناسب 106.12 ہے۔پاکستان میں گھرانے کے افراد کی اوسط تعداد 6.30 ہے۔غالب مذہب اسلام ہے، جو 96 فیصد آبادی کی نمائندگی کرتا ہے۔36.47ملین آبادی پانچ سال سے کم عمر ہے، 97.53 ملین آبادی 15 سال سے کم عمر ہے۔ 62.58 ملین آبادی 15 سے 29 سال کے درمیان ہے۔190.27 ملین آبادی 40 سال سے کم عمر ہے۔پاکستان میں دس سال اور اس سے زیادہ عمر کی 61 فیصد آبادی خواندہ ہے۔ 5 سے 16 سال کی عمر کے تقریبا ایک تہائی بچے اس وقت سکول سے باہر ہیں۔مردم شماری 2023 کے نتائج کے مطابق، معذوری کی رپورٹ کردہ تعداد 3.1فیصد ہے۔کھانا پکانے کے بنیادی ذرائع میں لکڑی اور گیس کا استعمال بالترتیب 53فیصد اور، 42فیصد ہے۔روشنی کے لئے ملکی آبادی کا انحصار بالترتیب 84فیصد بجلی پر اور 8 فیصد شمسی توانائی پر ہے۔ترجمان پاکستان ادارء شماریات نے بتایا کہ مردم شماری میں تقریبا 38 ملین عمارتوں کو جیو ٹیگ کیا گیا۔ مردم شماری کے مطابق کل 38,318,107 عمارتیں ہیں،جن میں 114,159 بلند عمارتیں ہیں جن میں سے، 73,501 رہائشی اور 7,593 معاشی عمارتیں جبکہ 33,065 دونوں مقاصد کے لیے استعمال کی جارہی ہیں۔پاکستان ادارء شماریات کی ویب سائٹ تمام نتائج کے لئے قابل رسائی ہو گی۔ انہوں نے کہا کہ وفاقی وزیر احسن اقبال نے پاکستان ادارء شماریات کے افسران کو اپنی محنت اور لگن سے پاکستان کی ساتویں خانہ و مردم شماری کو مکمل کرنے پر شیلڈز سے نوازا۔

 

 

Posted in تازہ ترین, جنرل خبریںTagged
91037

گوہر اعجاز نے آئی پی پیز کو کی گئی ادائیگیوں کاریکارڈ مانگ لیا

Posted on

گوہر اعجاز نے آئی پی پیز کو کی گئی ادائیگیوں کاریکارڈ مانگ لیا

اسلام آباد(چترال ٹائمزرپورٹ) سابق نگران وفاقی وزیر تجارت گوہراعجاز نے وفاقی وزیر توانائی اویس لغاری سے آئی پی پیز کو کی گئی ادائیگیوں کا ریکارڈ مانگ لیا۔سابق نگران وفاقی وزیر تجارت گوہر اعجاز نے کہا کہ تمام 106 آئی پی پیز کا ڈیٹا پبلک کیا جائے، قوم کو بتایا جائے کس بجلی گھر نے اپنی صلاحیت کے مطابق کتنی بجلی پیدا کی، آئی پی پیز کو ادا کی کیپسٹی پیمنٹس کا ریکارڈ بھی پبلک کیاجائے، آئی پی پیز کی پیداواری لاگت کا ڈیٹا عوام کے سامنے رکھا جائے۔سابق نگران وفاقی وزیر تجارت نے کہا کہ آئی پی پیز میں سے 52 فیصد پلانٹس سرکاری ملکیت میں ہیں، سرکاری آئی پی پیز 50 فیصد سے کم بجلی پیدا کر رہی ہیں، اس بدانتظامی کے سو فیصد قیمت صارفین سے بلوں میں ادا کرتے ہیں، باقی 48 فیصد آئی پی پیز 40 خاندانوں کی ملکیت ہیں۔سابق وفاقی وزیر نے مزید کہا کہ باقی آئی پی پیز 50 فیصد کی صلاحیت سے چل رہے ہیں، آئی پی پیز 21 سو ارب سے زائد کی کیپسٹی پیمنٹس وصول کر رہیں، صارفین سے فی یونٹ 24 روپے کیپسٹی پیمنٹس کی مد میں چارج کئے جارہی ہیں۔ان کا مزید کہنا تھا کہ وزیر توانائی براہ کرم 106 آئی پی پیز کا ڈیٹا شئیر کردیں، ان آئی پی پیز نے کتنی بجلی پیدا کی کتنے روپے فی یونٹ اور کتنی فیول کاسٹ ایڈجسمنٹ آئی ہے، بطور صارف ہمیں اس بات کا علم ہونا چاہئے کہ ہم سے کتنے پیسے لئے جاتے ہیں۔گوہر اعجاز کا کہنا تھا کہ ہمیں اس بات سے آگاہ ہیں آئی پی پیز پاکستان کو بچانا ہے جو م ترقی کی راہ میں رکاوٹ ہیں، بجلی کی اصل قیمت 30 روپے فی یونٹ سے کم ہونی چاہئے، ہم سب اس بات سے بے خبر ہیں کہ بدانتظامی اور بدعنوانی کے نام پر سرمایہ کاروں کے اعتماد کو کچلنے کی وجہ سے ہمیں کس طرح لوٹا جا رہا ہے۔

 

تحریک لبیک کا فیض آباد پر دھرنا، شہریوں کی مشکلات اورعوام کی رائے

راولپنڈی(سی ایم لنکس)13 جولائی کو لیاقت باغ سے فیض آباد کے مقام پر تحریک لبیک کی جانب سے دھرنے کا آغاز کیا گیا۔تحریک لبیک کی جانب سیتین شرائط کو بنیادبنا کردھرنا دیا جارہا ہے،شرائط میں فلسطین کوامدادمہیا کرنے کیساتھ ساتھ اسرائیلی مصنوعات پرپابندی سرفہرست ہے۔دھرنے سے قبل ہی این ڈی ایم اے کی جانب سے اب تک آٹھ امدادی کھیپ فلسطین کو بھجوائی جا چکی ہے جبکہ متعدد اسرائیلی مصنوعات پر پابندی بھی عائد کی جا چکی ہے،ٹی ایل پی کی شرائط پر قبل از وقت ہی عمل درآمد ہو چکا ہے۔روڈ بلاک ہونے اورگھنٹوں تک ٹریفک جام ہونے کے باعث شہریوں کو شدید مشکلات کا سامنا کرنا پڑ رہ ہیاس حوالے سے عوام نے اپنے غم و غصیکا اظہارکرتے ہوئیکہا کہ دھرنے کا مقصد محض عوام کے لیے مشکلات پیدا کرنے کے سوا کچھ نہیں،یہ کس مقصد کے لیے بیٹھے ہیں کیونکہ دھرنے کی شرائط تو پہلے سے ہی پوری کی جا چکی ہیں۔دھرنے کی وجہ سے مریض وقت پر ہسپتال نہیں پہنچ پا رہے اور متعدد لوگوں کو دفتر جانے کے لییبھی مشکلات کا سامنا کرنا پڑتا ہے،کل ایمبولنس وقت پر ہسپتال نہیں پہنچ پائی کیونکہ تمام راستے بند تھے۔اس دھرنیکی وجہ سے اسلام آباد سے راولپنڈی جانے والے تمام راستے بند ہیں اور عوام کو بہت مشکلات کا درپیش آ رہی ہیں۔فلسطینیوں کو امدادی کھیپ توپہلیہی بھجوائی جا رہی ہیتواس دھرنیکا مقصد سمجھ نہیں آتا،حکومت فلسطین کے ساتھ دے رہی ہے اور دیتی رہے گی۔

 

 

Posted in تازہ ترین, جنرل خبریںTagged
91034

وزیراعلیٰ خیبرپختونخواسردار علی امین خان گنڈا پورکی زیر صدارت محکمہ آبپاشی کا اجلاس

Posted on

وزیراعلیٰ خیبرپختونخواسردار علی امین خان گنڈا پورکی زیر صدارت محکمہ آبپاشی کا اجلاس

پشاور ( چترال ٹائمزرپورٹ ) وزیراعلیٰ خیبرپختونخواسردار علی امین خان گنڈا پورکی زیر صدارت محکمہ آبپاشی کا ایک اجلاس جمعرات کے روز وزیراعلیٰ ہاﺅس پشاور میں منعقد ہوا جس میں چشمہ رائٹ بینک کینال (سی آربی سی)کو واپڈا سے صوبائی حکومت کو حوالے کرنے سے متعلق معاملات کا جائزہ لیا گیا۔ وزیراعلیٰ نے متعلقہ حکام کو سی آر بی سی(مین کینال) کو صوبائی حکومت کے حوالے کرنے کے سلسلے میں قابل عمل تجاویز تیار کرنے کی ہدایت کی ہے۔علی امین گنڈا پور نے سی آر بی سی کو سیلابوں سے محفوظ بنانے کیلئے پروٹیکشن ورک کا ٹینڈر جلد ازجلد جاری کرنے کی بھی ہدایت کی ہے اور کہا ہے کہ سی آر بی سی کا پروٹیکشن ورک انتہائی ضروری ہے، بلا تاخیر اس پر کام شروع کیاجائے،صوبائی حکومت پروٹیکشن ورک کیلئے 62 ملین روپے کی منظوری دے چکی ہے۔ وزیراعلیٰ نے سی آر بی سی مین کینال کی بحالی اور بھل صفائی کیلئے بھی اقدامات کرنے کی ہدایت کی ہے اور کہا ہے کہ صوبائی حکومت اس مقصد کیلئے درکار تمام فنڈز ترجیحی بنیادوں پر فراہم کرے گی۔ اجلاس کو تکمیل کے قریب سمال ڈیمز کے حوالے سے بھی بریفینگ دی گئی اور بتایا گیا کہ ضلع کرک کے لتمبر ڈیم پر سو فیصد جبکہ جڑوبہ ڈیم نوشہرہ پر 96 فیصد کام مکمل کرلیا گیا ہے،یہ دونوں ڈیم افتتاح کیلئے تیار ہیں۔ اس کے علاوہ پیزو ڈیم لکی مروت پر 91 فیصد، کوہاٹ کے خٹک بانڈہ ڈیم پر 90 فیصد، ضمیر گل ڈیم پر 91 فیصدکام مکمل ہے جبکہ مخ بانڈہ ڈیم کرک پر 88 فیصد کام مکمل کر لیا گیا ہے۔وزیراعلیٰ نے تکمیل کے قریب ڈیموں کے منصوبوں کیلئے تمام درکار فنڈز فوری طور پر فراہم کرنے کی ہدایت کی ہے اور کہا ہے کہ جو منصوبے تکمیل کے قریب ہیں انہیں فوری طور پر مکمل کیا جائے، حکومت اس مقصد کیلئے درکار تمام وسائل ہنگامی بنیادوں پر فراہم کرے گی۔ صوبائی وزیر برائے آبپاشی عاقب اللہ، وزیر اعلیٰ کے پرنسپل سیکرٹری امجد علی خان، سیکرٹری آبپاشی طاہر اورکزئی کے علاوئہ محکمہ آبپاشی اور واپڈا کے متعلقہ حکام نے بھی اجلاس میں شرکت کی۔ کمشنر ڈیرہ اسماعیل خان بذریعہ ویڈیولنک اجلاس میں شریک ہوئے۔

وزیر اعلیٰ خیبرپختونخوا سردار علی امین خان گنڈاپور کا صوبے میں محرم الحرام کے دوران امن وامان قائم رکھنے اور جلوسوں اور مجالس کا پر امن انعقاد یقینی بنانے پر متعلقہ اداروں، پولیس، سول انتظامیہ، فوج، عوام، تاجربرادری اور امن کمیٹیوں سمیت سب کو خراج تحسین پیش کیا

پشاور ( چترال ٹائمزرپورٹ ) وزیر اعلیٰ خیبرپختونخوا سردار علی امین خان گنڈاپور نے صوبے میں محرم الحرام کے دوران امن وامان قائم رکھنے اور جلوسوں اور مجالس کا پر امن انعقاد یقینی بنانے پر متعلقہ اداروں، پولیس، سول انتظامیہ، فوج، عوام، تاجربرادری اور امن کمیٹیوں سمیت سب کو خراج تحسین پیش کیا ہے۔ اس سلسلے میں جمعرات کے روز یہاں سے جاری خصوصی بیان میں وزیر اعلیٰ نے کہا کہ خیبر پختونخوا میں عشرہ محرم الحرام کے دوران صوبے کے 14 اضلاع میں 846 جلوس اور 8857 مجالس منعقد کئے گئے جو پرامن طریقے سے اختتام پذیر ہوئے ہیں اور تمام متعلقہ اداروں کی انتھک محنت کی وجہ سے صوبے کی کسی بھی جگہ سے کوئی نا خوشگوار واقعہ سامنے نہیں آیا۔ علی امین گنڈاپور نے کہا کہ محرم الحرام کے دوران فول پروف سکیورٹی سمیت دیگر انتظامات پر سول انتظامیہ، پولیس، سکیورٹی فورسز، ریسکیو، پیسکو اور تحصیل میونسپل انتظامیہ سمیت تمام متعلقہ ادارے خراج تحسین کے مستحق ہیں۔
انہوں نے محرم الحرام کے دوراں بھر پور تعاون کرنے پر صوبے کے عوام کو خصوصی طور پر خراج تحسین پیش کیا اور کہا کہ امن کے فروغ و استحکام میں عوام کا تعاون بڑی اہمیت کا حامل ہے۔ وزیر اعلیٰ کا مزید کہنا تھا کہ محرم الحرام کے دوران فرقہ ورانہ ہم آہنگی کو برقرار رکھنے میں امن کمیٹیوں نے بھی اہم کردار ادا کیا ہے، جس پر امن کمیٹیوں میں شامل تمام مکاتب فکر کے علمائکا مشکور ہوں۔ اسی طرح بجلی کی بلاتعطل فراہمی، صفائی ستھرائی، ٹریفک مینجمنٹ، سبیلیوں کا بندوبست کرنے سمیت دیگر تمام معاملات میں متعلقہ اداروں نے بہترین انتظامات کئے جن پر وہ خراج تحسین کے مستحق ہیں۔
Posted in تازہ ترین, جنرل خبریںTagged
91031

پشاور؛ غیرقانونی ہاؤسنگ سوسائٹیز کے خلاف ایکشن لینے کا فیصلہ

Posted on

پشاور؛ غیرقانونی ہاؤسنگ سوسائٹیز کے خلاف ایکشن لینے کا فیصلہ

پشاور (چترال ٹائمزرپورٹ) خیبر پختونخوا کے وزیر بلدیادت ارشد ایوب خان نے کہا ہے کہ غیر قانونی ہاؤسنگ سوسائٹیز پر بھاری جرمانے لگائے جائیں گے اور انہیں نوٹسز جاری کیے جائیں گے۔ اس کے باوجود اگر انہوں نے ان کو رجسٹر نہیں کروایا تو ان سوسائٹیز کو سیل کر دیا جائے گا۔ ان خیالات کا اظہار صوبائی وزیر بلدیات ارشد ایوب خان نے اجلاس کی صدارت کرتے ہوئے کیا، اجلاس میں سیکرٹری بلدیات داؤد خان بھی موجود تھے۔ صوبائی وزیر نے کہا کہ غیر قانونی ہاؤسنگ سوسائٹیزکیلئے جامع پالیسی مرتب کی جائے، این او سی و دیگر قانونی تقاضے پورے کئے جائیں، نہیں تو انکو سیل کردیا جائے۔صوبائی وزیر نے کہا کہ اگلے اجلاس میں خیبرپختونخوا کی تمام غیر قانونی سوسائٹیز کا مکمل ریکارڈ پیش کیا جائے۔ لسٹیں بنائی جائیں کہ کون سی غیر قانونی سوسائٹی کتنے عرصے سے کام کر رہی ہے۔ غیر قانونی سوسائٹی سے نہ صرف حکومت کے خزانے کو بلکہ عوام کو بھی مشکلات کا سامنا کرنا پڑتا ہے ایسی سوسائٹیز میں گیس اور بجلی کے این او سی نہ ہونے کی وجہ سے بھی عوام کو مشکلات درپیش ہوتی ہیں۔

 

 

Posted in تازہ ترین, جنرل خبریں
91009

صوبائی وزیر برائے اعلیٰ تعلیم نے چترال آرکائیول ریکارڈ کو ضلعی لائبریری چترال میں قائم کرنے کا باقاعدہ افتتاح کردیا

Posted on

صوبائی وزیر برائے اعلیٰ تعلیم نے چترال آرکائیول ریکارڈ کو ضلعی لائبریری چترال میں قائم کرنے کا باقاعدہ افتتاح کردیا

پشاور (نمائندہ چترال ٹائمز) خیبر پختونخوا کے وزیر برائے اعلیٰ تعلیم، آرکائیوز اور لائبریریز میناخان آفریدی نے صوبے کی سرکاری لائبریریوں میں اینٹیگریٹیڈ لائبریری مینجمنٹ سسٹم اور چترال آرکائیول ریکارڈ کو ضلعی لائبریری چترال میں قائم کرنے کا باقاعدہ افتتاح ڈائریکٹوریٹ آف آرکائیوز اینڈ لائبریریز پشاور میں کیا چترال کی تاریخ پر مبنی آرکائیول ریکارڈ کو چترال منتقل کرکے پہلی ضلعی آرکائیول لائبریری کا قیام عمل میں لایا گیا اب چترال کے کتب بین کو چترال کے ریکارڈ کے بارے میں ڈائریکٹوریٹ پشاور نہیں آنا پڑیگا بلکہ چترال کی تاریخ سے متعلق تمام ڈیٹا چترال لائبریری میں دستیاب ہوگا

 

افتتاحی تقریب کے موقع پر ڈائریکٹر، ڈپٹی ڈائریکٹر، چیف لائبریرین، ریسرچ آفیسر اور ڈائریکٹوریٹ کے دیگر افسران بھی موجود تھے افتتاح کے بعد صوبائی وزیر کو آئی ایل ایم سسٹم پر تفصیلی بریفنگ دی گئی صوبائی وزیر کو بریفنگ میں بتایا گیا کہ صوبے کی 16اضلاع کی 18 سرکاری لائبریریوں میں آئی ایل ایم سسٹم متعارف ہوچکا ہے جوکہ ملک کی پہلامنفرد لائبریری نظام ہے جس کے ذریعے لائبریری کے ممبر اور عام کتب بین آئن لائن کتابوں کے بارے معلومات حاصل کرسکتے ہیں اس وقت 4لاکھ 35 ہزار کتابوں کا آئی ایم ایل سسٹم کے ذریعے اندراج ہوگیا ہے جنہیں باقاعدہ نام، اور مصنف کے نام سے سرچ کیا جاسکتا ہے آئی ایل ایم سسٹم کی دیگر خصوصیات کے ساتھ ساتھ ایک خوبی یہ بھی ہے کہ کتابوں کو کیٹیگرائز کیا گیا ہے جنہیں بہت آسانی کے ساتھ سرچ کیا جاسکتا ہے صوبائی وزیر کو مزید بتایا گیا کہ ڈائریکٹوریٹ کے عملے نے بڑی محنت کے ساتھ آئی ایل ایم سسٹم کو تیار کیا ہے اور ایک روپیہ سرکاری خرچہ نہیں آیا اور نہ ہی اس نظام کو چلانے کیلیے کوئی بھرتی کیا ہے بلکہ آئی ٹی سٹاف کو باقاعدگی کے ساتھ فعال بنایا ہے اور نظام کو اچھی طرح چلاتے ہیں.

 

اس موقع پر صوبائی وزیر کا کہنا تھا کہ لائبریریوں میں بہتر اصلاحات لانے کیلیے تمام تر وسائل بروئے کار لارہے ہیں انہوں نے کہا کہ لائبریریوں کو ڈیجیٹائزڈ کرنے کیلیے اقدامات اٹھائینگے انہوں نے آئی ایل ایم سسٹم کو سراہتے ہوئے لائبریری عملے کو ہدایت کی کہ آئی ایل ایم سسٹم میں مزید بہتری لانے کے ساتھ ساتھ اسیاپ ڈیٹ بھی رکھیں صوبائی وزیر نے آئی ایل ایم سسٹم کو چلانے والے عملے میں تعریفی اسناد بھی تقسیم کیں اس موقع پر لائبریری ڈائریکٹر نے صوبائی وزیر کو ڈائریکٹوریٹ آمد پر پھولوں کا گلدستہ پیش کیا صوبائی وزیر نے لائبریری کے احاطے میں پودا بھی لگایا۔

 

chitraltimes minister higher education meena khan inagurated library2

 

 

 

غیرقانونی ہاؤسنگ سوسائٹیز کے خلاف ایکشن لینے کا فیصلہ
پشاور (چترال ٹائمزرپورٹ) خیبر پختونخوا کے وزیر بلدیادت ارشد ایوب خان نے کہا ہے کہ غیر قانونی ہاؤسنگ سوسائٹیز پر بھاری جرمانے لگائے جائیں گے اور انہیں نوٹسز جاری کیے جائیں گے۔ اس کے باوجود اگر انہوں نے ان کو رجسٹر نہیں کروایا تو ان سوسائٹیز کو سیل کر دیا جائے گا۔ ان خیالات کا اظہار صوبائی وزیر بلدیات ارشد ایوب خان نے اجلاس کی صدارت کرتے ہوئے کیا، اجلاس میں سیکرٹری بلدیات داؤد خان بھی موجود تھے۔ صوبائی وزیر نے کہا کہ غیر قانونی ہاؤسنگ سوسائٹیزکیلئے جامع پالیسی مرتب کی جائے، این او سی و دیگر قانونی تقاضے پورے کئے جائیں، نہیں تو انکو سیل کردیا جائے۔صوبائی وزیر نے کہا کہ اگلے اجلاس میں خیبرپختونخوا کی تمام غیر قانونی سوسائٹیز کا مکمل ریکارڈ پیش کیا جائے۔ لسٹیں بنائی جائیں کہ کون سی غیر قانونی سوسائٹی کتنے عرصے سے کام کر رہی ہے۔ غیر قانونی سوسائٹی سے نہ صرف حکومت کے خزانے کو بلکہ عوام کو بھی مشکلات کا سامنا کرنا پڑتا ہے ایسی سوسائٹیز میں گیس اور بجلی کے این او سی نہ ہونے کی وجہ سے بھی عوام کو مشکلات درپیش ہوتی ہیں۔

Posted in تازہ ترین, جنرل خبریں, چترال خبریںTagged
91005

 این ڈی ایم اے  کےنیشنل ایمرجنسی آپریشن سینٹر نے بڑھتے ہوئے درجہ حرارت اور ممکنہ آندھی، طوفان اور بارشوں کے پیش نظر گلاف الرٹ جاری کر دیا

Posted on

 این ڈی ایم اے  کےنیشنل ایمرجنسی آپریشن سینٹر نے بڑھتے ہوئے درجہ حرارت اور ممکنہ آندھی، طوفان اور بارشوں کے پیش نظر گلاف الرٹ جاری کر دیا

اسلام آباد (چترال ٹائمزرپورٹ ) نیشنل ڈیزاسٹر مینجمنٹ اتھارٹی (این ڈی ایم اے) کےنیشنل ایمرجنسی آپریشن سینٹر (این ای او سی) نے بڑھتے ہوئے درجہ حرارت اور ممکنہ آندھی، طوفان اور بارشوں کے پیش نظر گلاف الرٹ جاری کر دیا۔ خیبر پختون خواہ اور گلگت بلتستان کے پہاڑی علاقوں میں بڑھتے ہوئے درجہ حرارت کے باعث گلیشئرز کے پگھلنے کا عمل تیزہونے اور ممکنہ بارش کے سلسلے کے باعث 17تا23جولائ2024 کے دوران مقامی ندی نالوں میں پانی کے بہاو میں اضافہ اور جھیلوں کے سیلاب کے علاوہ لینڈ سلائیڈنگ بھی متوقع ہے۔

این ڈی ایم اے نے صوبائی ڈیزاسٹر مینجمنٹ اتھارٹی کے پی کے اور گلگت ڈیزاسٹر مینجمنٹ اتھارٹی کو ہدایت کی گئی ہے کہ وہ متعلقہ محکموں کے ساتھ مکمل رابطے میں رہیں تاکہ کسی بھی رکاوٹ، سڑک کی بندش اور نقصان کی صورت میں ضروری انوینٹری/آلات کے انتظامات اور پہلے سے تعیناتی کے ساتھ ساتھ غیر محفوظ مقامات پر ایمرجنسی اہلکاروں کی دستیابی کو یقینی بنایا جا سکے۔ محکموں کو مزید ہدایت کی گئی ہے کہ وہ مقامی کمیونٹی، سیاحوں اور خطرے سے دوچار علاقوں میں مسافروں کو الرٹ رہنے اور غیر ضروری سفر/ نقل و حرکت سے گریزکرنے کے لیے پہلے سے خبردار کریں۔متعلقہ محکمے خطرے دو چار علاقوں میں لوگوں کے بر وقت انخلاء کو یقینی بنانے کے لیے فرضی مشقیں بھی تشکیل دیں تا کہ بوقت ضرورت عوام کی جان و مال کو محفوظ بنایا جا سکے۔

این ڈی ایم اے نے Pak NDMA Disaster Alert ایپلیکیشن متعارف کرادی ہے جو گوگل پلے سٹور اورiOS ایپ سٹور پر موجود ہے تاکہ عوام کوبر وقت الرٹس، ایڈوائزریز اور خطرے سے متعلق مخصوص گائیڈ لائنز، عوامی آگاہی کے پیغامات اوردیگر ضروری معلومات کی فراہمی ممکن بنائی جا سکے۔

دریں اثنا این ڈی ایم اے کے نیشنل ایمرجنسیز آپریشن سینٹر کے مطابق 17 سے 21 جولائی تک کشمیر، اسلام آباد، کے پی،پنجاب کے وسطی اور شمال مشرقی علاقوں میں وقفے کے ساتھ گرج چمک کیساتھ بارشوں امکان ہے ۔ بارشوں کے باعث سوات، مینگورہ، بٹگرام، مردان، صوابی، ہری پور، ایبٹ آباد، کشمیر، اسلام آباد، راولپنڈی، چکوال، جہلم، گوجرانوالہ اور سیالکوٹ میں 50 ملی میٹر سے زیادہ بارش ہونے کا امکان ہے جو مقامی ندیوں اور نالوں میں درمیانے درجے کی فلیش فلڈنگ سبب بن سکتی ہے۔

اسکے علاؤہ فلیش فلڈنگ ذریعہ آمدو رفت میں خلل، عمارتوں/ بنیادی ڈھانچے اور فصلوں و مویشوں کو نقصان پہنچا سکتی ہے۔
این ڈی ایم اے نے صوبائی ڈیزاسٹر مینجمنٹ اتھارٹیز اور مقامی انتظامیہ کو چوکس رہنے اور خطرے سے دو چار آبادی کی حفاظت کے لیے مناسب اقدامات کرنے کی ہدایت کر دی ہے۔

عوام گھروں میں نکاسی آب یقینی بنائیں اور اربن فلڈنگ سے نمٹنے کیلئے پیشگی اقدامات کریں۔ کسی بھی بلاک شدہ نالوں یا ممکنہ خطرات کا موجب بننے والے عمل کی اطلاع مقامی حکام کو فوری طور پر دیں۔ مسافر و سیاح لینڈ سلائیڈنگ کے خطرے سے دو چار علاقوں میں سفر کرتے ہوئے احتیاط برتیں۔ عوام بروقت ڈیزاسٹر الرٹس، گائیڈ لائنز اور احتیاطی تدابیر کے لیے کی  Pak NDMA Disaster Alert   موبائل ایپ ڈاؤن لوڈ کریں۔

 

Posted in تازہ ترین, جنرل خبریں, چترال خبریں, گلگت بلتستانTagged
91003

ایم پی اے فاتح الملک علی ناصر لوٗیر چترال کے لئے ڈی ڈی اے سی چیئرمین مقرر

Posted on

ایم پی اے فاتح الملک علی ناصر لوٗیر چترال کے لئے ڈی ڈی اے سی چیئرمین مقرر

چترال (نمائندہ چترال ٹائمز) مہتر چترال اور لویر چترال سے صوبائی اسمبلی کے رکن فاتح الملک علی ناصرکو صوبائی حکومت نے لویر چترال کی ڈسٹرکٹ ڈیویلپمنٹ ایڈوائزری کمیٹی (ڈیڈاک) کا چیرمین مقرر کردیا ہے۔ اس بات کانوٹیفکیشن آج پشاور میں چیف منسٹر سیکرٹریٹ سے جاری کردیا گیا ہے جس میں صوبائی اسمبلی کے حلقہ پی کے ٹو لویر چترال سے فاتح الملک علی ناصر کو چیرمین ڈیڈاک لویر چترال مقررکیا گیا ہے۔

chitraltimes ddac chairman notification kp

Posted in تازہ ترین, جنرل خبریں, چترال خبریں
90994

چترال پریس کلب کا ہنگامی اجلاس، نوشہرہ سے تعلق رکھنے والے سینئر صحافی حسن زیب کی قتل پر افسوس کا اظہار، حکومت سے ملزمان کی جلدگرفتاری اور کیفرکردار تک پہنچانے کا مطالبہ

چترال پریس کلب کا ہنگامی اجلاس، نوشہرہ سے تعلق رکھنے والے سینئر صحافی حسن زیب کی قتل پر افسوس کا اظہار، حکومت سے ملزمان کی جلدگرفتاری اور کیفرکردار تک پہنچانے کا مطالبہ

چترال (نمائندہ چترال ٹائمز) چترال پریس کلب کا ہنگامی اجلاس چترال پریس کلب کے صدر ظہیر الدین کے زیر صدارت منعقد ہوا جس میں پبی نوشہر ہ سے تعلق رکھنے والے سینئر صحافی اور روزنامہ آج کے رپورٹر حسن زیب کو نامعلوم افراد کے ہاتھوں فائرنگ کرکے قتل کرنے پر سخت غم وغصے کا اظہار کرتے ہوئے حکومت سے پرزور مطالبہ کیا گیا کہ صحافیوں کی جان ومال اور آبرو کی حفاظت کو یقینی بنائی جائے۔ اور حسن زیب کے قاتلوں کو جلد کیفرکردار تک پہنچایا جائے۔ صدر ظہیرا لدین نے کہاکہ اس سال صوبے کے مختلف علاقوں میں صحافیوں کی ٹارگٹ کیلنگ کا سلسلہ نہایت افسوسناک ہے جسے مزید برداشت نہیں کیا جائے گا اور صحافیوں کی تحفظ کے لئے حکومت کو ہنگامی بنیادوں پر اقدامات کرنا چاہئے تاکہ وہ آزادانہ ماحول میں اپنے فرائض منصبی ادا کرسکیں۔ انہوں نے کہاکہ شہید حسن زیب کا خون رائیگان ہرگز نہیں جائے گا جس نے مرتے تک آزاد ی صحافت کے لئے جدوجہد کرتے رہے اور کسی سے دباؤ قبول کئے بغیر آواز حق بلندکرتے رہے اور خیبر پختونخوا کے صحافی ان کے خون کی ایک ایک قطرے کا حساب لے کر رہیں گے۔ اجلاس میں شہید صحافی حسن زیب کے اہل خاندان سے اظہار تعزیت کرتے ہوئے ان کے روح کی ایصال ثواب اور پسماندگان کے لئے صبر جمیل کی دعائیں مانگی گئی۔

Posted in تازہ ترین, جنرل خبریں
91000

محمد طلحہ محمود فاونڈیشن نے جو بھی وعدے چترال کی عوام کے ساتھ کیے تھے وہ سب شرمندہ تعبیر ہو کر رہیں گے۔ ترجمان طلحہ محمود فاونڈیشن

Posted on

محمد طلحہ محمود فاونڈیشن نے جو بھی وعدے چترال کی عوام کے ساتھ کیے تھے وہ سب شرمندہ تعبیر ہو کر رہیں گے۔ ترجمان طلحہ محمود فاونڈیشن

چترال ( چترال ٹائمز رپورٹ )محمد طلحہ محمود فاونڈیشن ٹیم کی طرف سے جاری پریس ریلیز میں کہا گیا ہے،کہ طلحہ محمود فاؤنڈیشن جس طرح سے پورے چترال میں انسانیت کی خدمت اور چترال کی تعمیر و ترقی کے لیے کام کر رہی ہے اس کی کوئی مثال نہیں ملتی۔ طلحہ محمود فاؤنڈیشن چترال کے طول و عرض میں پہنچ کر انسانیت کی خدمت میں مصروف ہے۔ بحیثیت انسان اور مسلمان ہونے کے یہ ہمارا فرض ہے کہ ہم اچھے کام کی تعریف کریں اور اپنی بساط کے مطابق اس میں حصہ ڈالنے کی کوشش کریں۔

انسانی خدمت کی اس سفر میں کچھ لوگ اپنی سیاسی مفادات، ذاتی مفادات اور قومی مفادات کے لیے نیک کاموں میں بھی رکاوٹ ڈالنے کی کوشش کرتے ہیں۔ ایسے لوگوں میں شامل فیس بک میں ایک پیج میں آئے روز سینٹر طلحہ محمود اور ان کی سیاست کے بارے میں مختلف قسم کے پوسٹ ہوتے رہتے ہیں۔ یہ پیج جو بھی چلا رہا ہے یہ اپنے آپ کو سینٹر طلحہ کے قریبی رشتہ داروں میں دکھانے کی کوشش کر رہا ہے۔ اس حوالے سے سینیٹر محمد طلحہ محمود کے فرزند مصطفی بن طلحہ نےوضاحتی بیان دیا تھا کہ اس پیج کا ہمارے ساتھ کوئی تعلق نہیں ہے۔

آج ہم اپنی طرف سے یہ واضح کرنا چاہتے ہیں کہ اس پیج کا نہ ہمارے فاؤنڈیشن اور نہ ہمارے فاؤنڈیشن کے چیئرمین سینٹر محمد طلحہ محمود کے ساتھ کوئی تعلق واسطہ ہے بلکہ یہ ایک فیک پیج ہے جو کہ صرف اور صرف معاشرے میں منفی اثرات مرتب کرنے کے لیے بنایا گیا ہے۔ بحیثیت ادارہ ہم اس پیج کی بھرپور مذمت کرتے ہیں اور جو بھی پوسٹ اس پیج سے کی گئی ہیں ان سب سے لا تعلقی کا اظہار کرتے ہیں۔ محمد طلحا محمود فاؤنڈیشن کی سرگرمیاں اسی طرح پورے چترال میں چلتی رہیں گی۔ سینیٹر محمد طلحہ محمود نے جو بھی وعدے چترال کی عوام کے ساتھ کیے تھے وہ سب شرمندہ تعبیر ہو کر رہیں گے۔

Posted in تازہ ترین, جنرل خبریں, چترال خبریں
90979

وزیراعلیٰ خیبرپختونخواسردار علی امین خان گنڈا پورکا محکمہ داخلہ میں قائم سنٹرل کمانڈ اینڈ کنٹرول روم کا دورہ

Posted on

وزیراعلیٰ خیبرپختونخواسردار علی امین خان گنڈا پورکا محکمہ داخلہ میں قائم سنٹرل کمانڈ اینڈ کنٹرول روم کا دورہ

پشاور ( چترال ٹائمزرپورٹ ) وزیراعلیٰ خیبرپختونخواسردار علی امین خان گنڈا پورنے منگل کے روز محکمہ داخلہ میں قائم سنٹرل کمانڈ اینڈ کنٹرول روم کا دورہ کیا اور دسویں محرم کیلئے سیکیورٹی انتظامات کا تفصیلی جائزہ لیا۔ سپیکر خیبرپختونخوا اسمبلی بابر سلیم سواتی، انسپکٹر جنرل پولیس اختر حیات خان گنڈا پور، ایڈیشنل چیف سیکرٹری داخلہ محمد عابد مجید، کمشنر پشاور ریاض محسوداور دیگر متعلقہ حکام بھی اس موقع پر موجود تھے۔ وزیراعلیٰ کو متعلقہ حکام کی جانب سے سیکیورٹی کے انتظامات کے بارے تفصیلی بریفنگ دی گئی اور بتایا گیا کہ محرم الحرام کے جلوس اور مجالس صوبے کے کل چودہ اضلاع میں منعقد ہو رہے ہیں، ان میں سے 8 اضلاع حساس ترین جبکہ 6 حساس قرار دئیے گئے ہیں۔ان 14 اضلاع میں محرم الحرام کی سیکیورٹی کیلئے 40 ہزار سیکیورٹی عملہ تعینات ہے جس میں پولیس کے علاوہ پاک فوج، ایف سی اور دیگر سول محکموں کے اہلکار بھی شامل ہیں۔

 

مزید بتایا گیا کہ صوبے میں محرم الحرام کی کل 7054 مجالس منعقد ہو رہی ہیں،جبکہ محرم الحرام کے جلوسوں کی کل تعداد 858 ہے۔محرم الحرام کے جلوسوں کے تمام راستوں کی سی سی ٹی وی اور ڈرون کیمروں سے مانیٹرنگ کی جارہی ہے۔ مزید برآں مرکزی کنٹرول روم میں صوبے میں محرم الحرام کے تمام جلوسوں کی لائیو مانیٹرنگ کی جارہی ہے اور تمام متعلقہ محکموں اور اداروں کے درمیان کوآرڈینیشن کا مو ¿ثر نظام قائم ہے۔ مرکزی کمانڈ اینڈ کنٹرول روم میں پولیس اور فوج کے علاوہ دیگر تمام متعلقہ صوبائی محکموں اور اداروں کے نمائندے 24 گھنٹے ڈیوٹی پر مامور ہیں۔ کسی بھی ہنگامی صورتحال سے نمٹنے کیلئے کوئیک رسپانس کا مو ¿ثر میکینز م قائم ہے۔ مزید برآں سوشل میڈیا پر نفرت انگیز تقاریر پر کڑی نظر رکھی جارہی ہے۔ بعد ازاں وزیراعلیٰ نے خان رازق شہید پولیس سٹیشن قصہ خوانی میں قائم مانیٹرنگ روم اور کوہاٹی گیٹ میں قائم سپریم کمانڈ پوسٹ کا بھی دورہ کیا اور محرم الحرام کیلئے سیکیورٹی اور دیگر انتظامات کا جائزہ لیا۔

 

وزیراعلیٰ کو متعلقہ حکام کی جانب سے محرم الحرام کی سیکیورٹی سمیت مجالس اور جلوس والے مقامات پر صفائی ستھرائی اور زخمیوں کو بر وقت فرسٹ ایڈ کی فراہمی اور دیگر امور پر بریفنگ دی گئی۔ وزیراعلیٰ نے محرم الحرام باالخصوص یوم عاشورہ کیلئے خصوصی سیکیورٹی اور دیگر انتظامات پر اطمینان کا اظہار کرتے ہوئے دسویں محرم الحرام کے جلوسوں کی سیکیورٹی پر خصوصی توجہ دینے کی ہدایت کی ہے۔ علی امین خان گنڈا پور نے محرم الحرام کے دوران سیکیورٹی ڈیوٹی پر مامور سول محکموں کے اہلکاروں کیلئے اعزازیہ دینے کا اعلان کیا ہے اور متعلقہ حکام کو اس سلسلے میں ضروری کارروائی عمل میں لانے کی ہدایت کی ہے۔ وزیراعلیٰ نے اس موقع پر گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ دسویں محرم کیلئے سیکیورٹی سمیت تمام انتظامات تسلی بخش ہیں، امید ہے کہ محرم الحرام پر امن انداز میں گزر جائے گا۔ وزیراعلیٰ نے تمام مکاتب فکر کے علمائکرام اور شہریوں سے محرم الحرام کے دوران فرقہ ورانہ ہم آہنگی کو قائم رکھنے کیلئے اپنا کردار ادا کرنے کی اپیل کی ہے۔

 

chitraltimes cm kp visit command and controll office peshawar on Aashura 2

chitraltimes cm kp visit command and controll office peshawar on Aashura 3

 

عاشورہ محرم کے موقع پر وزیراعلیٰ علی امین گنڈا پور کا پیغام

پشاور (چترال ٹائمزرپورٹ ) وزیراعلیٰ خیبرپختونخواسردار علی امین خان گنڈا پورنے کہا ہے کہ واقعہ کربلا حق و باطل کے درمیان ایک عظیم معرکہ تھا جس میں نواسہ رسول امام عالی مقام حضرت امام حسینؓ نے دین اسلام کی سربلندی کےلئے لازوال اوربے مثال قربانی پیش کی جو رہتی دنیا تک یاد رکھی جائے گی۔ کربلا کا واقعہ ہمیں ایثار، قربانی، حق کی حمایت ، باطل کی مخالفت اور ظلم کے خلاف ڈٹ جانے کا درس دیتا ہے جس پر عمل پیرا ہو کر مسلمان نہ صرف اپنی عظمت رفتہ کو بحال کر سکتے ہیں بلکہ دنیا میں انسانیت کے استحصال اور ظلم کا خاتمہ کر کے پائیدار امن بھی قائم کر سکتے ہیں۔ عاشورہ محرم کی مناسبت سے یہاں سے جاری اپنے پیغام میں وزیراعلیٰ نے کہاکہ سانحہ کربلا تاریخ کے نااہل حکمرانوں کے ظلم و بربریت پر مبنی ایک واقعہ ہے جس میں پوری انسانیت کےلئے عظیم درس پوشیدہ ہے۔ امام عالی مقام یزیدی ظلم و جبر کے خلاف حق کے علمبردار تھے، آپ نے ظالم و جابر حکمرانوں اورانکی انسانیت دشمن پالیسیوں کے خلاف اٹھ کھڑے ہونے کا درس دیااور اپنے پورے خاندان کی قربانی دی اور حق و صداقت کی بالادستی کیلئے صبر و استقامت کی عظیم مثالیں قائم کیں۔انہوں نے کہاکہ وقت کا تقاضا ہے کہ ہم ظلم و لاقانونیت کے خلاف متحد ہو جائیں، آپس میں الجھنے کی بجائے ان الجھنوں کا سبب بننے والے عوامل کا قلع قمع کریں،غلبہ اسلام اور استحکام پاکستان کے لیے ایک زندہ قوم کے طور پر ظلم اورنا انصافی کے خلاف اُٹھ کھڑے ہوں۔ علی امین خان نے اس بات پر زور دیا ہے کہ اس مبارک مہینہ کے دوران امن و امان کو یقینی بنانے کیلئے مسلکی ہم آہنگی کو ہر حال میں برقرار رکھا جائے۔ انہوں نے تمام مکاتب فکر کے علماءاور عوام سے فرقہ وارانہ ہم آہنگی کو فروغ دینے کے لئے اپنا مثبت کردار ادا کرنے کی اپیل کی ہے۔

 

 

Posted in تازہ ترین, جنرل خبریںTagged
90972

ایم این اے عبد الطیف کی چیئرمین این ایچ اے سے ملاقات، ریشن کے مقام پر چترال شندور روڈ کو بچانے کے لئے ہنگامی بنیادوں پر اقدامات اُٹھانے کی یقین دہانی 

ایم این اے عبد الطیف کی چیئرمین این ایچ اے سے ملاقات، ریشن کے مقام پر چترال شندور روڈ کو بچانے کے لئے ہنگامی بنیادوں پر اقدامات اُٹھانے کی یقین دہانی

چترال (نمائندہ آج) چترال سے قومی اسمبلی کے رکن عبداللطیف نے چیرمین نیشنل ہائی وے اتھارٹی سے ان کے دفتر میں ملاقات کرکے انہیں چترال میں این اے ایچ کی روڈ پراجیکٹس اور خصوصاً چترال شندور روڈ اور ریشن کے مقام پر سڑک کی دریا بردگی کے خطرات کے بارے میں تفصیل سے آگاہ کرتے ہوئے شدید عوامی ردعمل اور تشویش سے ان کو آگاہ کیا اور ان پر واضح کیاکہ اگر رواں سیزن میں اس پر ایمرجنسی بنیادوں پر کام کرکے اسے بچانے کی کوشش نہ کی گئی تو نہ صرف اپر اور لویر چترال کے درمیان سڑک کے ذریعے رابطہ منقطع ہوگا بلکہ گلگت بلتستان سے بھی رابطہ منقطع ہونے سے سیاحت کو ناقابل تلافی نقصان لا حق ہوگا۔ منگل کے روز اسلام آباد سے ٹیلی فون کے ذریعے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے انہوں نے بتایاکہ چیرمین این ایچ اے نے انہیں یقین دہانی کرائی کہ اپر چترال کے ریشن میں سڑک کو دریا برد ہونے سے بچانے کے لئے ہنگامی بنیادوں پر اقدامات کئے جائیں گے اورچترال شندور روڈ پراجیکٹ کی نشاندہی کردہ نقائص کو دور کرکے اس پراجیکٹ پر کام کو مقررہ معیار کے عین مطابق بروقت پایہ تکمیل کو پہنچانے میں کوئی کسر نہیں چھوڑ ا جائے گا۔

 

انہوں نے بتایاکہ پی ٹی آئی کے سابق صوبائی حکومت کے دوران وزیر اعلیٰ خیبر پختونخوا کے معاون خصوصی وزیر زادہ صاحب نے2022ء میں آفت زدہ ریشن گاؤں تین اطراف سے سیلاب کے خطرات سے بچانے کے لئے 16کروڑ روپے کی خطیر رقم منظور کرائی تھی جس میں سے ساڑھے 3کروڑ روپے سے 1100فٹ طویل حفاظتی پشتہ شادیر کے مقام پر سڑک کو دریا سے بچانے کے لئے تعمیر کی گئی تھی جوکہ 32فٹ وسیع البنیاد اور 15فٹ اونچی تھی لیکن لون گاؤں کے سرک جانے کے نتیجے میں دریا کا رخ مکمل طور پر اس طرف مڑجانے کی وجہ سے دریا کی طغیانی کے دوران پانی کا سطح حد سے ذیادہ بلند ہوکر اس حفاظتی پشتے کے اوپر سے زمینات کی کٹائی شروع کردی۔ انہوں نے کہاکہ باقی ساڑھے 12کروڑ سے ریشن گول اور دوسرے مقامات پر حفاظتی پشتوں پر کام جاری ہیں۔ چترال یونیورسٹی کی بندش کی افواہ کے بارے میں چترال سے ایم این اے عبداللطیف کا کہنا تھاکہ صوبائی حکومت کسی بھی یونیورسٹی کے پراجیکٹ فیز میں اس کا مکمل ذمہ دار ہوتا ہے اور اس دوران صوبائی حکومت نے اس یونیورسٹی کو مالی بحران سے دوچار ہونے نہیں دیا مگر جب یونیورسٹی باقاعدہ ایکٹ کے تحت قائم ہونے اور یہاں وائس چانسلر کی تقرری کے بعد یہاں مالی مسئلہ سر اٹھانے لگا جب وفاقی حکومت نے اس سے منہ موڑنے کا سلسلہ شروع کیا۔ انہوں نے کہا کہ صوبائی حکومت نے 2022ء میں 200 میلین روپے ریلیز کی جس سی یونیورسٹی اب تک چل رہی ہے لیکن پی ڈی ایم حکومت نے اپنی زمہ داری پوری نہیں کی اور گرانٹ نہیں دی۔

انہوں نے کہاکہ پی ٹی آئی کی صوبائی حکومت نے 56کرروڑ روپے کی خطیر رقم سے یونیورسٹی کے لیے زمین خریدی جب کہ تعمیر کے لئے 2 ارب سے زائد فنڈ پی ٹی ائی کے گزشتہ وفاقی گورنمنٹ نے منظور کی لیکن بدقسمتی سے اس سال کی بجٹ میں وفاقی حکومت نے صرف دو سو ملین مختص جوکہ شرمناک ہے۔عبداللطیف نے کہاکہ چترال یونیورسٹی کو موجودہ وقت میں مالی بحران سے نکالنے کے لئے چیف منسٹر سے گرانٹ ان ایڈ کے لئے کیس بھیج دیا گیا ہے۔لیکن وفاقی حکومت ہائر ایجوکیشن کمیشن کے ذریعے خیبر پختون خواہ کے تمام یونیورسٹی کو اپریشنل اخراجات کے. لۓ فنڈز دینے کے لیے تیار نہیں ہے جس کی وجہ سے خیبر پختون خواہ کی یونیورسٹیز مالی بحران کا شکار ہو چکے ہیں اس کی تمام تر ذمہ داری وفاقی حکومت پر عائد ہوتی ہے جو کہ پاکستان تحریک انصاف کے سیاسی دشمنی میں خیبر پختون خواہ کے لوگوں کے حقوق پہ ڈاکہ ڈال رہی ہے جس طرح مرکزی حکومت نے پی ایس ڈی پی سے پہلے سے منظور شدہ عوامی مفاد کے 90 سکیم بجٹ سے نکال دی ہے جس میں چترال گرم چشمہ روڈ بھی شامل ہے۔پیپلز پارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری سندھ کے لیے تو اسمبلیوں سے استعفی دینے کی دھمکی بھی دے کر بلیک میلنگ کر کے فنڈ منظور کرواتا رہا ہے لیکن چترال اور خیبر پختون خواہ کے لیے کبھی بھی ایک لفظ بولنے کے لیے تیار نہیں اگر بلاول بھٹو چترال کے ساتھ مخلص ہوتا تو جس طرح سندھ کے منصوبے منظور کروانے کے لیے بھوک ہڑتال کرنے کے لیے تیار تھا اس طرح گرم چشمہ روڈ بھی منظور کروانا کوئی مشکل کام نہیں تھا۔

Posted in تازہ ترین, جنرل خبریں, چترال خبریںTagged
90967

پختونخوا حکومت کا ایک لاکھ خاندانوں کو مفت سولر سسٹم دینے کا فیصلہ

Posted on

پختونخوا حکومت کا ایک لاکھ خاندانوں کو مفت سولر سسٹم دینے کا فیصلہ

پشاور(چترال ٹائمزرپورٹ) خیبر پختونخوا حکومت نے ایک لاکھ خاندانوں کو مفت سولر سسٹم دینے کا فیصلہ کیا ہے۔ وزیراعلیٰ خیبر پختونخوا علی امین گنڈاپور نے صوبے میں لوڈشیڈنگ سے پریشان غریب خاندانوں کو سولر سسٹم دینے کی ہدایت کردی ہے۔صوبائی حکومت کے تحت پختونخوا کے غریب خاندانوں کو 2 کے وی کا سولر سسٹم دیا جائے گا۔

solar panel

Posted in تازہ ترین, جنرل خبریںTagged
90965

ملک بھر میں 9 محرم کے جلوس، سخت سکیورٹی انتظامات، موبائل سروس جزوی بند

Posted on

ملک بھر میں 9 محرم کے جلوس، سخت سکیورٹی انتظامات، موبائل سروس جزوی بند

اسلام آباد(سی ایم لنکس)ملک بھر میں 9 محرم کے جلوس مختلف شہروں سے برآمد ہوئے، اس موقع پر سخت سکیورٹی انتظامات کئے گئے، موبائل سروس جزوی بند ہے۔وفاقی دارالحکومت اسلام آ باد لاہور، کراچی، پشاور، کوئٹہ سمیت دیگر شہروں میں نواسہ رسول حضرت امام حسین رضی اللہ تعالی عنہ اور شہدائے کربلا کی عظیم قربانیوں کی یاد میں ملک بھر میں 9 ویں محرم الحرام کے موقع پر چھوٹے بڑے شہروں میں جلوس نکالے گئے۔عزاداروں کی جانب سے نوحہ خوانی اور سینہ کوبی کی گئی،اس موقع پر سکیورٹی کے سخت انتظامات کئے گئے ہیں، سکیورٹی خدشات کے پیش نظر مختلف شہروں میں جلوس کے راستوں پر موبائل فون سروس بھی جزوی طور پر معطل ہے،جلوس کے راستوں پر عزاداروں کے لئے سبیلوں اور لنگر حسینی کا بھی اہتمام کیا گیا ہے۔لاہور میں 9 ویں محرم الحرام کا مرکزی جلوس پانڈو اسٹریٹ اسلام پورہ سے برآمد ہو ا جلوس کے راستوں پر سکیورٹی کے سخت انتظامات کئے گئے ہیں، علاقے میں واک تھرو گیٹس لگا دیئے گئے جبکہ خار دار تاریں، کنٹینر اور بیریئر لگا کر جلوس کی آمد گاہ اور راستے کو سیل کر دیا گیا ہے۔اسلام آباد میں 9 ویں محرم کا جلوس امام بارگاہ اثنا عشری جی سکس سے برآمد ہوا،جلوس روایتی راستوں سے ہوتے ہوئے امام بارگاہ اثنا عشری میں ہی اختتام پذیر ہو گا،

 

جلوس کے راستوں پر سکیورٹی کے سخت انتظامات کئے گئے ہیں، جلوس میں شامل ہونے کیلئے واک تھرو گیٹس لگائے گئے، مختلف مقامات پر جلوس کی گزرگاہ کے اطراف کے راستوں کو سیل کردیا گیا ہے۔کراچی میں 9 محرم الحرام کا مرکزی جلوس دن ڈیڑھ بجے نشتر پارک سے برآمد ہو گا۔ دوپہر 12 بجے کے بعد نشتر پارک میں مرکزی مجلس ہو گی اور مجلس کے بعد جلوس نشتر پارک سے برآمد ہو گا۔ ٹریفک پولیس کراچی کے مطابق ایم اے جناح روڈ کو ٹریفک کیلئے بند کر دیا گیا ہے، شہریوں کیلئے کوریڈور تھری، سولجر بازار، کشمیر روڈ، پیپلز چورنگی اور شارع قائدین کے متبادل راستے کھولے گئے ہیں، جلوس کی گزرگاہ اور اطراف کے راستوں میں موبائل فونز سگنل بھی بند، جلوس کی سکیورٹی پر 7 ہزار سے زائد اہلکار تعینات کئے گئے ہیں۔پشاور میں مجموعی طور پر 18 ماتمی جلوس پہلا جلوس صدر امام بارگاہ حسینیہ ہال سے صبح 10 بجے جبکہ دوسرا جلوس امام بارگاہ قمربنی ہاشم علی کالونی سٹی سے 3 بجے برآمد ہو گا، جلوس کیلئے شہر بھر میں سکیورٹی کے سخت ترین انتظامات کئے گئے ہیں، مجموعی طور پر 14 ہزار سے زائد پولیس اہلکار تعینات کئے گئے، صدر اور اندرون شہر مکمل طور پر سیل کر دیا گیا جبکہ موبائل فون سروس بھی جزوی طور پر معطل ہے۔کوئٹہ میں 9 ویں محرم الحرام کی مرکزی جلوس کی سکیورٹی کے سخت انتظامات کئے گئے، جلوس کے دوران امام بارگاہ جانیوالے راستوں کو سیل کر دیا گیا،ملک بھر میں 9 محرم الحرام کے جلوس چھوٹے اور بڑوں شہروں سے برآمد ہو رہے ہیں جبکہ مجالس منعقد اور نوحہ خانی کی جارہی ہے۔ جلوس کے راستوں پر سیکیورٹی کے غیرمعمولی انتظامات کیے گئے ہیں۔ جلوس اپنے مقررہ راستوں سے ہوتے ہوئے اپنی مطلوبہ منزل پر پہنچ کر اختتام پذیر ہو جائیں گے۔

 

Posted in تازہ ترین, جنرل خبریںTagged
90962

خیبرپختونخوا حکومت کا بچوں کو بروقت ایمرجنسی علاج معالجے کی سہولیات کی فراہمی یقینی بنانے کے لیے سرکاری ہسپتالوں میں چلڈرن ایمرجنسی رومز اور ٹیلی میڈیسن سیٹلائٹ سنٹرز قائم کرنے کا اصولی فیصلہ 

Posted on

خیبرپختونخوا حکومت کا بچوں کو بروقت ایمرجنسی علاج معالجے کی سہولیات کی فراہمی یقینی بنانے کے لیے سرکاری ہسپتالوں میں چلڈرن ایمرجنسی رومز اور ٹیلی میڈیسن سیٹلائٹ سنٹرز قائم کرنے کا اصولی فیصلہ

 

پشاور ( چترال ٹائمزرپورٹ ) خیبرپختونخوا حکومت نے نوزائیدہ بچوں کی شرح اموات میں کمی لانے اور بچوں کو بروقت ایمرجنسی علاج معالجے کی سہولیات کی فراہمی یقینی بنانے کے لیے صوبے کے سرکاری ہسپتالوں میں چلڈرن ایمرجنسی رومز اور ٹیلی میڈیسن سیٹلائٹ سنٹرز قائم کرنے کا اصولی فیصلہ کیا ہے ۔ یہ فیصلہ گزشتہ روز وزیر اعلیٰ خیبر پختونخوا سردار علی امین خان گنڈاپورکی زیر صدارت محکمہ صحت کے ایک اجلاس میں کیا گیا۔ صوبائی وزیر صحت سید قاسم علی شاہ، وزیر اعلی کے مشیر برائے خزانہ مزمل اسلم، ایڈیشنل چیف سیکرٹری منصوبہ بندی سید امتیاز حسین شاہ ، سیکرٹری صحت عدیل شاہ کے علاو ¿ہ نجی تنظیم چائلڈ لائف فاو ¿نڈیشن کے حکام بھی اجلاس میں شریک ہوئے۔ اجلاس کو ایمرجنسی رومز اور ٹیلی میڈیسن سٹیلائٹ سنٹر کے قیام کےلئے مجوزہ پروگرام کے بارے بریفنگ دیتے ہوئے بتایا گیا کہ ایمرجنسی رومز اور ٹیلی میڈیسن سنٹرز کے قیام کا مقصد بچوں کی بڑھتی ہوئی شرح اموات میں خاطر خواہ کمی لانا ہے۔

 

مجوزہ پروگرام کے تحت صوبے میں اسٹیٹ آف دی آرٹ 9 ایمرجنسی رومز اور 100 ٹیلی میڈیسن سیٹلائٹ سنٹرز قائم کیے جائیں گے جن سے لوگوں کو علاج معالجے کی سہولیات ان کے گھر کی دہلیز پر فراہم ہونگی۔ مزید بتایا گیا کہ یہ ایمرجنسی رومز اور سیٹلائٹ سنٹرز صوبے کے سرکاری تدریسی اور ثانوی ہسپتالوں میں قائم کئے جائیں گے جن میں 24 گھنٹے ڈاکٹر اور دیگر تربیت یافتہ عملہ موجود ہوگا۔اجلاس میں ایمرجنسی رومز اور ٹیلی میڈیسن سنٹرز کے قیام کے لئے محکمہ صحت اور نجی تنظیم چائلڈ لائف فاو ¿نڈیشن کے درمیان معاہدے کا اصولی فیصلہ کیاگیا ہے جبکہ معاملہ حتمی منظوری کےلئے صوبائی کابینہ کے سامنے پیش کیا جائے گا۔اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے وزیراعلیٰ نے مذکورہ پروگرام کو وقت کی اہم ضرورت قرار دیتے ہوئے متعلقہ حکام کو اس سلسلے میں ہوم ورک جلد مکمل کرکے کابینہ کی حتمی منظوری کےلئے پیش کرنے کی ہدایت کی ہے ۔ انہوں نے صحت کے شعبے میں اصلاحات اور علاج معالجے کی بہتر سہولیات کی فراہمی کو اپنی حکومت کی ترجیحات کا اہم جز قرار دیتے ہوئے کہا کہ موجودہ صوبائی حکومت اس مقصد کےلئے جدید ٹیکنالوجی متعارف کرانے کی نہ صرف حوصلہ افزائی کرے گی بلکہ اس سلسلے میں تمام درکار وسائل ترجیحی بنیادوں پر فراہم کرے گی۔

 

 

وزیر اعلیٰ خیبر پختونخوا سردار علی امین خان گنڈاپورکا  بنوں کینٹ پر دہشت گرد حملے میں سکیورٹی فورسز کے آٹھ اہلکاروں کی شہادت پر افسوس کا اظہار

پشاور ( چترال ٹائمزرپورٹ ) وزیر اعلیٰ خیبر پختونخوا سردار علی امین خان گنڈاپور نے گزشتہ روز بنوں کینٹ پر دہشت گرد حملے کی کوشش ناکام بناتے ہوئے سکیورٹی فورسز کے آٹھ اہلکاروں کی شہادت پر افسوس کا اظہار کرتے شہداءکے لواحقین سے تعزیت کی ہے۔ یہاں سے جاری اپنے تعزیتی بیان میں وزیر اعلیٰ نے شہداءکے اہل خانہ سے دلی ہمدردی کا اظہار کرتے ہوئے شہداءکے درجات کی بلندی اور پسماندگان کے لئے صبر جمیل کی دعا کی ہے۔ دہشت گرد حملے کی کوشش ناکام بنانے پر سکیورٹی فورسز کے جوانوں کو خراج تحسین پیش کرتے ہوئے وزیر اعلیٰ نے کہا ہے کہ سکیورٹی فورسز کے جوانوں نے انتہائی بہادری کے ساتھ دہشت گرد حملے کو ناکام بنایا اور سکیورٹی فورسز کی بروقت اور مو ¿ثر کارروائی سے بنوں بڑی تباہی سے بچ گیا۔ وزیر اعلیٰ نے حملے کی کوشش کی شدید الفاظ میں مذمت کرتے ہوئے کہا ہے کہ اس طرح کے بزدلانہ واقعات سے سکیورٹی فورسز کے حوصلے پست نہیں ہونگے۔ انہوں نے مزید کہا ہے کہ دہشت گردی کے خلاف جنگ میں سکیورٹی فورسز نے بے شمار قربانیاں دی ہیں، ہم ملک و قوم کی خاطر جانوں کا نذرانہ پیش کرنے والے سکیورٹی فورسز کے اہلکاروں کو سلام پیش کرتے ہیں،سکیورٹی فورسز کی یہ قربانیاں رائیگاں نہیں جائیں گی اور دہشت گردی کے خلاف جنگ میں پوری قوم سکیورٹی فورسز کے ساتھ ہے۔

 

 

وزیر اعلیٰ خیبر پختونخوا سردار علی امین خان گنڈاپور نے ڈی آئی خان میں رورل ہیلتھ سنٹر پر دہشتگردوں کے حملے کی شدید الفاظ میں مذمت کرتے ہوئے اسے ایک بزدلانہ اور غیر انسانی فعل قرار دیا ہے۔ یہاں سے جاری اپنے ایک بیان میں وزیر اعلیٰ نے حملے میں رورل ہیلتھ سنٹر کے خواتین عملے سمیت پانچ شہریوں جبکہ فائرنگ کے تبادلے میں دو سکیورٹی اہلکاروں کی شہادت پر افسوس کا اظہار کرتے ہوئے لواحقین سے تعزیت کی ہے۔ متاثرہ خاندانوں سے دلی ہمدردی کا اظہار کرتے ہوئے وزیر اعلی نے شہداءکے درجات کی بلندی اور پسماندگان کے لئے صبر جمیل کی دعا کی ہے۔ وزیر اعلیٰ نے کہا ہے کہ صوبائی حکومت شہداءکے لواحقین کے غم میں برابر کی شریک ہے، انہیں تنہا نہیں چھوڑا جائے گا اور ان کی ہر ممکن معاونت کی جائے گی۔ وزیر اعلیٰ نے مزید کہا ہے کہ رورل ہیلتھ سنٹر پر حملہ کرنا اور معصوم شہریوں کو نشانہ بنانا انتہائی بزدلانہ اقدام ہے جس کی جتنی بھی مذمت کی جائے کم ہے اور اس طرح کی کارروائی میں ملوث عناصر انسان کہلانے کے لائق نہیں۔

 

دریں اثنا  وزیر اعلیٰ خیبر پختونخوا سردار علی امین خان گنڈاپور نے جنوبی وزیرستان میں بارودی سرنگ کے دھماکے میں دو بچوں کے جاں بحق ہونے پر افسوس کا اظہار کرتے ہوئے لواحقین سے تعزیت کی ہے۔ یہاں سے جاری اپنے تعزیتی بیان میں وزیر اعلیٰ نے جاں بحق بچوں کے اہل خانہ سے دلی ہمدردی کا اظہار کرتے ہوئے جاں بحق بچوں کی مغفرت اور پسماندگان کے لئے صبر جمیل کی دعا کی ہے۔درایں اثناءوزیر اعلیٰ نے پارہ چنار اور تیمر گرہ میں پیش آنے والے ٹریفک حادثات میں چھ افراد کے جاں بحق ہونے پر بھی افسوس کا اظہار کرتے ہوئے لواحقین سے تعزیت کی ہے۔ متاثرہ خاندانوں سے دلی ہمدردی کا اظہار کرتے ہوئے وزیر اعلیٰ نے جاں بحق افراد کی مغفرت اور پسماندگان کے لئے صبر جمیل کی دعا کی ہے۔

Posted in تازہ ترین, جنرل خبریںTagged
90959

حکومت کا پی ٹی آئی پر پابندی، عمران خان پر غداری کا مقدمہ چلانے کا فیصلہ

Posted on

حکومت کا پی ٹی آئی پر پابندی، عمران خان پر غداری کا مقدمہ چلانے کا فیصلہ

اسلام آباد(چترال ٹائمزرپورٹ )وفاقی وزیر اطلاعات و نشریات عطااللہ تارڑ نے کہا ہے کہ وفاقی حکومت نے غیر قانونی سرگرمیوں پر پی ٹی آئی پر پابندی عائد کرنے، سپریم کورٹ کے حالیہ فیصلے پر نظرثانی کی اپیل دائر کرنے اور بانی پی ٹی آئی، ساق صدر عارف علوی اور سابق ڈپٹی سپیکر قومی اسمبلی قاسم سوری کے خلاف آرٹیکل 6 کے تحت کاررائی کا فیصلہ کیا ہے،آرٹیکل 6 لگانے کا ریفرنس سپریم کورٹ میں بھیجا جائے گا،ملک مخالف سرگرمیوں میں ملوث بیرون ملک بیٹھے عناصرکے خلاف کارروائی ہوگی، ملک کو آگے لے جانا ہے تو شرپسند عناصر پر پابندی لگانا ہوگی، آئی ایم ایف کو خط لکھنا پی ٹی آئی کے ملک دشمن ایجنڈے کا حصہ تھا، ایک سیاسی جماعت کو وہ حق دیا گیا جو اس نے مانگا ہی نہیں تھا، حکومت کسی کے خلاف انتقامی کارروائی نہیں کریگی۔ وہ پیر کو پی ٹی وی ہیڈ کوارٹر میں پریس کانفرنس سے خطاب کر رہے تھے۔وفاقی وزیر اطلاعات و نشریات عطا اللہ تارڑ نے کہا کہ گزشتہ چند روز سے ملک میں ہیجانی کیفیت پیدا کرنے کی کوشش کی جارہی ہے،ایک فلمی ٹریلر چلایا جارہا ہے جو سات خون معاف کے نام سے ہے اور بتایا جارہا ہے کہ ان ٹچ ایبل ہیں۔ انہوں نے کہا کہ ہمارے قائد نے ہماری یہ تربیت کی ہے کہ سیاسی مخالفین کو بھی صاحب کہہ کر بلانا ہے، تنقید برائے اصلاح ہمارے سیاسی لیڈر کی تربیت تھی،ہماری قیادت کی پہلی صف کو جیلوں میں ڈالا گیا تو اف تک نہیں کی، بانی پی ٹی آئی بدترین لیڈر ہے،

 

انہوں نے انتقام کی آگ کو بجھانے کے لئے بہن، بیٹیوں کو جیلوں میں ڈالنے کی روایات ڈالیں۔وزیر اعظم شہباز شریف نے ایوان میں کہا ہم میثاق معیشت کرنے کو تیار کریں، ہم نے کہا کہ ہم میثاق معیشت کرنے کو تیار ہیں یہ ہماری تربیت تھی،ہم سیاسی مخالف کی خوشی غمی میں شریک ہوتے ہیں،ایک سیاسی جماعت نے تربیت دی کہ کوئی کسی کی خوشی غمی میں نہیں جائے گا۔ انہوں نے کہا کہ ہماری دانشمندی کو ہماری کمزوری سمجھا گیا۔انہوں نے ہمیں کمزور سمجھا اور گالی دینے کا کلچر پھیلایا گیا،کہا گیا کہ اسلامی ٹچ دو اور اسلام کو سیاسی مقاصد کے لئے استعمال کرو، یہ وہ روش ہے جو کئی سالوں سے رواں دواں ہے۔2014 کے دھرنوں سے آج تک ایک مخصوص مائنڈ سیٹ کو پروان چڑھایا جارہا ہے۔جب فلسطین پر حملے ہورہے ہیں تو ان کے رہنما اسرائیلی بزنس مین کے ساتھ کھانے کیوں کھا رہے تھے، بہت ہوگیا،اس ملک کے ساتھ کھلواڑ نہیں ہونے دیں گے۔وزیر اطلاعات نے کہا کہ پاکستان میں سیاسی و معاشی استحکام کیلئے کوشاں ہیں۔ انہوں نے کہا کہ سنی اتحاد کونسل کا منشور ہے کہ کوئی غیر مسلم ان کی جماعت کا رکن نہیں بن سکتا،حالیہ فیصلے میں تحریک انصاف کو بن مانگے ریلیف دیا گیا۔ انہوں نے کہا کہ حکومت اور اتحادی جماعتوں نے سپریم کورٹ کے فیصلے کے خلاف نظرثانی اپیل دائر کرنے کا فیصلہ کیا ہے، نظرثانی میں یہ استدعا کی جائے گی جنہیں ریلیف دیا گیا ہے کیا ۔انہوں نے مانگا تھا؟

 

انہوں نے کہا کہ ایک سیاسی جماعت کو وہ حق دیا گیا جس کا وہ حق نہیں رکھتی، ہم سمجھتے ہیں کہ نظرثانی کی اپیل دائر کرنے میں حق بجانب ہیں۔ انہوں نے کہا کہ پی ٹی آئی نے انٹرا پارٹی الیکشن نہیں کروائے، ان کے ایم این ایز نے عدلیہ کے سامنے یہ نہیں کہا کہ ہم تحریک انصاف کے رکن ہیں، جن ایم این ایز کو ریلیف دیا گیا ہے کیا وہ عدلیہ کے سامنے موجود تھے؟کیا انہوں نے یہ ریلیف مانگا تھا جو انہیں دیا گیا ہے۔وزیر اطلاعات نے کہا کہ پی ٹی آئی نے ممنوعہ ذرائع سے فنڈنگ لی ہے، فارن فنڈنگ کیس میں چھ سال سے سٹے پر سٹے لیا جا رہا ہے۔ انہوں نے کہا کہ 9 مئی کو ملکی دفاع پر ذاتی مفاد میں حملہ کیا، بانی پی ٹی آئی کا پورا خاندان اس حملے میں ملوث تھا، بانی پی ٹی آئی کی تینوں بہنیں کور کمانڈر ہاؤس کے باہر موجود تھیں،قوم کو کہا جا رہا تھا کہ انقلاب برپا ہونے لگا ہے،فوری طور پر اپنی اپنی لوکیشن پر پہنچیں، بانی پی ٹی آئی نے انتشار اور تشدد کی سیاست کو فروغ دیا،انہوں نے ملک کے دفاعی اداروں کو نقصان پہنچایا، پی ٹی آئی حکومت ہی ٹی ٹی پی کو واپس لائی، ایک طرف یہ دہشت گردوں کو لا کر پناہ گاہیں دے رہے تھے اور کہہ رہے تھے کہ یہ ملک کی سالمیت میں کردار ادا کریں گے اور دوسری طرف انہوں نے جی ایچ کیو اور کمانڈر پر حملہ کیا،

 

انہوں نے نیشنل ایکشن پلان کو ختم کیا۔وفاقی وزیر اطلاعا ت نے کہا کہ نواز شریف اپنی اہلیہ کو بستر مرگ پر چھوڑ کر آئے، نواز شریف نے ہمیشہ پاکستان کی بات کی، بے نظیر بھٹو کی شہادت کے بعد آصف علی زرداری نے پاکستان کھپے کا نعرہ لگایا،دوسری جانب دیکھا جائے تو پی ٹی آئی نے فارن فنڈنگ، 9 مئی کے حملے اور دہشت گردوں کو واپس لایا، پی ٹی آئی نے سائفر کا ڈرامہ رچایا،انہوں نے اپنے سیاسی مفاد کے لئے عالمی سطح پر ملک کے تعلقات خراب کرنے کی کوشش کی، امریکا میں ہمارے سفیر نے کہا کہ کوئی تھریٹ موجود نہیں تھا۔ وفاقی وزیر اطلاعات نے کہا کہ انہی وجوہات کی بنا پر وفاقی حکومت تحریک انصاف پر پابندی لگانے کے لئے کیس دائر کرے گی،آئین حکومت کو ملک مخالف سرگرمیوں میں ملوث جماعت پر پابندی لگانے کا اختیار دیتا ہے، وفاقی حکومت تحریک انصاف پر پابندی لگانے کے لئے کیس دائر کرے گی،تحریک انصاف پر پابندی کے لئے جواز موجود ہے۔انہوں نے کہا کہ تحریک انصاف نے غیر آئینی طور پر اسمبلیوں کو توڑا، آئی ایم ایف کو خط لکھنا پی ٹی آئی ملک دشمن ایجنڈے کا حصہ تھا، ملک کے ساتھ اب کھلواڑ نہیں ہونے دیں گے،ملک کو آگے لے کر جانا ہے تو شرپسند عناصر پر پابندی لگانا ہی ہوگی، پی ٹی آئی نے آئین کی خلاف ورزی کی، تحریک عدم اعتماد کے ہوتے ہوئے اسمبلیوں کو تحلیل کیا، اس وقت کے صدر عارف علوی، اس وقت کے وزیراعظم عمران خان نیازی اور اس وقت کے ڈپٹی سپیکر قاسم سوری کے خلاف آرٹیکل 6 کا ریفرنس کابینہ کی منظوری کے بعد سپریم کورٹ کو بھجوایا جائے گا۔

 

وفاقی وزیر اطلاعات عطاتارڑ نے کہا کہ تارکین وطن محنتی لوگ ہیں، وہ ملک کی ترسیلات میں اضافہ کرتے ہیں،بیرون ملک کچھ مخصوص لابیاں پاکستان کی سالمیت کے خلاف سازشوں میں مصروف ہیں۔انہوں نے کہا کہ ملک کے خلاف سازشوں میں ملوث بیرون ملک موجود لابیوں کے خلاف حکومت نے تادیبی کارروائی کرنے کا فیصلہ کیا ہے،پاکستان سے باہر بیٹھ کر ممنوعہ فنڈنگ وصول کر کے ملک کے خلاف مہم چلانے والوں کے خلاف سخت قانونی کارروائی عمل میں لائی جائے گی، ہم نے تحمل، بردباری اور دانشمندی کا مظاہرہ کر کے دیکھا لیکن اسے ہماری کمزوری سمجھا گیا، اب یہ چیئرمین نیب کو ٹارگٹ کر رہے ہیں، پریشر ڈالا جا رہا ہے کہ نیب توشہ خانہ کے کیسز سے پیچھے ہٹ جائے، آئین اور قانون کے دائرے کے اندر رہتے ہوئے ان کے خلاف کارروائی کا عمل مکمل کیا جائے گا۔انہوں نے آئی ایم ایف ڈیل کو سبوتاڑ کیا، ملک کو ڈیفالٹ کے دھانے پر پہنچایا اور سائفر کے ساتھ کھلواڑ کیا، انہوں نے ملک دشمن قوتوں کو تقویت دی اور اپنے سیاسی فائدے کے لئے پاکستان کا نقصان کیا،ان کے خلاف قانون اور آئین کے مطابق کارروائی عمل میں لائی جائے گی۔

 

 

مخصوص نشستوں کے فیصلے کیخلاف نظرثانی درخواست سپریم کورٹ میں دائر

اسلام آباد(سی ایم لنکس)مخصوص نشستیں پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) کو دینے کے معاملے پر مسلم لیگ ن نے نظرثانی درخواست سپریم کورٹ میں دائر کر دی۔نظرثانی درخواست ایڈووکیٹ حارث عظمت کے ذریعے سپریم کورٹ میں دائر کی گئی۔درخواست میں موقف اپنایا گیا کہ پی ٹی آئی کیس میں فریق ہی نہیں تھی اور پی ٹی آئی جب عدالتی کارروائی میں شامل ہی نہیں تھی تو اسے نشستیں کیسے دی جا سکتی ہیں۔ ن لیگ کی جانب سے استدعا کی گئی کہ 12 جولائی کے مختصر حکمنامے کو کالعدم قرار دے کر سپریم کورٹ حکم امتناع جاری کرے۔قبل ازیں، وفاقی حکومت اور اتحادی جماعتوں نے مخصوص نشستوں پر سپریم کورٹ کے فیصلے کے خلاف نظرثانی اپیل دائر کرنے کا فیصلہ کیا تھا۔اسلام آباد میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے وفاقی وزیر اطلاعات عطاء اللہ تارڑ نے کہا کہ حالیہ فیصلے میں تحریک انصاف کو بن مانگے ریلیف دیا گیا جس پر نظرثانی اپیل دائر کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے، سنی اتحاد کونسل کا منشور ہے کہ کوئی غیر مسلم ان کی جماعت کا رکن نہیں بن سکتا۔عطاء اللہ تارڑ نے کہا کہ نظرثانی میں یہ استدعا کی جائے گی جنہیں ریلیف دیا گیا ہے کیا انہوں نے مانگا تھا؟ ایک سیاسی جماعت کو وہ حق دیا گیا جس کا وہ حق نہیں رکھتی، ہم سمجھتے ہیں کہ نظرثانی کی اپیل دائر کرنے میں حق بجانب ہیں۔انہوں نے کہا کہ پی ٹی آئی نے انٹرا پارٹی الیکشن نہیں کروائے، ان کے ایم این ایز نے عدلیہ کے سامنے یہ نہیں کہا کہ ہم تحریک انصاف کے رکن ہیں اور جن ایم این ایز کو ریلیف دیا گیا ہے کیا وہ عدلیہ کے سامنے موجود تھے؟ کیا انہوں نے یہ ریلیف مانگا تھا جو انہیں دیا گیا ہیوفاقی وزیر اطلاعات نے کہا کہ پی ٹی آئی نے ممنوعہ ذرائع سے فنڈنگ لی ہے اور فارن فنڈنگ کیس میں 6سال سے اسٹے پر اسٹے لیا جا رہا ہے۔واضح رہے کہ سپریم کورٹ نے پشاور ہائیکورٹ اور الیکشن کمیشن کا فیصلہ کالعدم قرار دیتے ہوئے مخصوص نشستیں پی ٹی آئی کو دینے کا حکم دیا تھا۔ سپریم کورٹ نے تحریکِ انصاف کو پارلیمنٹ اور صوبائی اسمبلیوں میں بطور جماعت قرار دے دیا۔

 

حکومت غیر جمہوری فیصلوں سے باز رہے، جماعت اسلامی کی پی ٹی آئی پر پابندی کی مذمت

کراچی(چترال ٹائمزرپورٹ)امیر جماعت اسلامی کراچی منعم ظفرخان نے تحریک انصاف پر پابندی کے فیصلے کی مذمت کردی۔منعم ظفرخان نے ایکس پر لکھا کہ تحریک انصاف پر پابندی لگانے کا فیصلہ قابل مذمت ہے، حیرت ہے ماضی میں جو کام ڈکٹیٹر کرتے تھے وہ اب سیاسی جماعتیں باہمی مشاورت سے کرنے جارہی ہیں۔انہوں نے کہا کہ جمہوریت میں ان پابندیوں کی کوئی اہمیت نہیں ہوتی، اصل اہمیت عوام کی رائے کی ہے۔ پی ڈی ایم حکومت اس بات کو تسلیم کرے اور غیر جمہوری فیصلوں سے باز رہے۔ پاکستان کو اس وقت استحکام کی ضرورت ہے نہ کہ عدم استحکام کی۔وفاقی حکومت نے پاکستان تحریک انصاف پر پابندی عائد کرنے اور عمران خان پر غداری کا مقدمہ چلانے کا فیصلہ کیا ہے۔وفاقی وزیر اطلاعات و نشریات عطاء اللہ تارڑ نے اسلام آباد میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا کہ پاکستان تحریک انصاف پر پابندی عائد کرنے کا فیصلہ کیا ہے، حکومت پی ٹی آئی پر پابندی کے لئے سپریم کورٹ میں کیس دائر کرے گی، بہت واضح ثبوت موجود ہیں کہ پی ٹی آئی پر پابندی لگائی جائے، آئین حکومت کو ملک مخالف سرگرمیوں میں ملوث جماعت پر پابندی لگانے کا اختیار دیتا ہے۔

Posted in تازہ ترین, جنرل خبریںTagged
90954

خیبر پختونخوا حکومت کا پرائمری سطح کے سرکاری اسکولوں میں “اسکول کھانہ پروگرام” شروع کرنے کا اصولی فیصلہ

Posted on

خیبر پختونخوا حکومت کا پرائمری سطح کے سرکاری اسکولوں میں “اسکول کھانہ پروگرام” شروع کرنے کا اصولی فیصلہ

پشاور ( چترال ٹائمزرپورٹ ) خیبر پختونخوا حکومت نے ایک اہم فلاحی اقدام کے طور پر پرائمری سطح کے سرکاری اسکولوں میں “اسکول کھانہ پروگرام” شروع کرنے کا اصولی فیصلہ کیا ہے جس کے تحت صوبے کے تمام ڈویژنل ہیڈکوارٹرز کے شہری علاقوں کے پرائمری اسکولوں میں بچوں کو مفت کھانا فراہم کیا جائے گا۔ یہ فیصلہ پیر کے روز وزیر اعلیٰ خیبر پختونخوا سردار علی امین خان گنڈاپور کی زیر صدارت ایک اجلاس میں کیا گیا۔ صوبائی وزیر برائے ابتدائی و ثانوی تعلیم فیصل خان ترکئی، وزیر اعلیٰ کے مشیر برائے خزانہ مزمل اسلم، ایڈیشنل چیف سیکرٹری منصوبہ بندی سید امتیاز حسین شاہ اور متعلقہ محکموں کے اعلیٰ حکام کے علاوہ نجی فلاحی تنظیم اللہ والے ٹرسٹ کے چیف ایگزیکٹو آفیسر شاہد لون اور دیگر عملے نے اجلاس میں شرکت کی۔اجلاس میں طے پایا کہ ابتدائی طور پر ایبٹ آباد اور سوات میں بطور پائلٹ پراجیکٹ پروگرام کا آغاز کیا جائے گا جسے بعد میں صوبے کے دیگر ڈویژنل ہیڈکوارٹرز تک توسیع دی جائے گی۔

 

مجوزہ پروگرام کے تحت کم و بیش 70 ہزار بچوں کو روزانہ مفت اور معیاری کھانا فراہم کیا جائے گا۔ پروگرام پر سالانہ 50 کروڑ روپے کا تخمینہ لگایا گیا ہے جو صوبائی حکومت برداشت کرے گی۔ مزید طے پایا کہ مجوزہ پروگرام پر عملدرآمد کےلئے محکمہ سماجی بہبود اور مذکورہ نجی فلاحی تنظیم کے ساتھ مفاہمت کی یادداشت پر دستخط کئے جائیں گے۔ اجلاس میں پروگرام پر عملدرآمد کے سلسلے میں پیشرفت کےلئے محکمہ تعلیم اور سماجی بہبود کے حکام پر مشتمل کمیٹی بنانے کا فیصلہ کیا گیا جو اس سلسلے میں تمام جزئیات کو حتمی شکل دے کر حتمی منظوری کےلئے صوبائی کابینہ کو پیش کرے گی۔ اس موقع پر گفتگو کرتے ہوئے وزیر اعلیٰ کا کہنا تھا کہ مجوزہ پروگرام موجود صوبائی حکومت کا ایک اور اہم فلاحی اقدام ہے، پروگرام کے تحت سرکاری اسکولوں کے بچوں کو مفت اور معیاری کھانا فراہم کیا جائے گا، اس اقدام سے سرکاری اسکولوں میں انرولمنٹ کو بڑھانے میں بھی مدد ملے گی اور صوبائی حکومت اس مقصد کےلئے ترجیحی بنیادوں پر فنڈز فراہم کرے گی۔ انہوں نے کہا کہ لوگوں پر زیادہ سے زیادہ وسائل خرچ کرنا عمران خان اور پی ٹی آئی کے وژن کا حصہ ہے اور موجودہ صوبائی حکومت عمران خان کے وژن کے مطابق اس طرح کے مزید فلاحی منصوبے بھی شروع کرے گی۔ انہوں نے متعلقہ حکام کو ہدایت کی کہ وہ مجوزہ پروگرام پر عملدرآمد کے سلسلے میں عملی پیشرفت کے لئے لائحہ عمل کو جلد سے جلد حتمی شکل دیں۔

 

وفاقی حکومت کی طرف سے پی ٹی آئی پر پابندی کے لئے کاروائی شروع کرنے کا فیصلے  مضحکہ خیزہےجبکہ موجودہ وفاقی حکومت مینڈیٹ چور ہے اور جعلی طریقے سے اقتدار پر قابض ہے۔وزیراعلیٰ

پشاور ( چترال ٹائمزرپورٹ ) وزیر اعلی خیبر پختونخوا سردار علی امین خان گنڈاپور نے وفاقی حکومت کی طرف سے پی ٹی آئی پر پابندی کے لئے کاروائی شروع کرنے کے فیصلے کو مضحکہ خیز قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ موجودہ وفاقی حکومت مینڈیٹ چور ہے اور جعلی طریقے سے اقتدار پر قابض ہے، اور کیا فارم 47 کی بنیاد پر بنی یہ جعلی حکومت پی ٹی آئی پر پابندی لگانے کا فیصلہ کرے گی۔ مذکورہ فیصلے پر اپنے ردعمل کا اظہار کرتے ہوئے سردار علی امین گنڈاپور نے کہا ہے کہ ملک کی مقبول ترین سیاسی جماعت پر پابندی لگانے کا فیصلہ جعلی حکومت کی ایک نامکمن خواہش سے زیادہ کچھ نہیں، مینڈیٹ چور حکومت سیاسی میدان میں عمران خان اور پی ٹی آئی کا کسی صورت مقابلہ نہیں کر سکتی اس لئے ہواس باختہ ہو کر اس طرح کی خواہشات کا اظہار کر رہی ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ تمام تر فسطائیت اور ہر قسم کے حربے استعمال کرنے کی باوجود مینڈیٹ چور حکومت کو ہر میدان میں منہ کی کھانی پڑھ رہی ہے،

یہ ملک 25 کروڑ عوام کا ہے کسی کے باپ کا نہیں جو دل میں آئے فیصلہ کرے۔ وزیر اعلی کا کہنا تھا کہ مخصوص نشتوں پر فیصلہ سپریم کورٹ نے آئین کے مطابق کیا ہے ان کو اسی فیصلے پر تکلیف ہو رہی ہے اور اس ٹولے نے کھبی عدلیہ کے فیصلوں کو تسلیم نہیں کیا، ماضی میں سپریم کورٹ پر حملے کا دھبہ بھی اس ٹولے کے چہرے پر لگا ہے۔ علی امین گنڈاپور نے کہا کہ الیکشن ٹریبونل اور مستقبل میں آنے والے فیصلوں سے ان کا دھڑن تختہ ہوجائے گا، مینڈیٹ چور سرکار کو اپنی شکست واضح نظر آرہی ہے، جعلی حکومت کو اپنا خاتمہ نظر آرہاہے اسلئے بوکھلاہٹ میں احمقانہ بیانات دیے جارہے ہیں۔ انہوں نے واضح کیا ہم نے پہلے بھی ان کا مقابلہ کیا ہے، یہ جو بھی کریں ہم ان کا بھر پور مقابلہ کریں گے۔

 

 

Posted in تازہ ترین, جنرل خبریں
90951

بجلی مہنگی کرنے کا نوٹیفکیشن جاری، ایک یونٹ 48.84 روپے تک پہنچ گیا

Posted on

بجلی مہنگی کرنے کا نوٹیفکیشن جاری، ایک یونٹ 48.84 روپے تک پہنچ گیا

اسلام آباد(چترال ٹائمزرپورٹ )حکومت نے عوام پر بجلی بم گرادیا، کراچی سمیت ملک بھر کے لیے بجلی مہنگی کرنے کا نوٹیفکیشن جاری کردیا گیا۔بجلی کے بنیادی ٹیرف میں اضافے کا نوٹیفکیشن پاور ڈویڑن نے جاری کیا۔ گھریلوصارفین کے لییبجلی کے بنیادی ٹیرف میں 7.12روپے تک اضافہ کردیا گیا۔ ماہانہ200 یونٹ تک والیگھریلو صارفین کو صرف 3 ماہ کے لیے اس اضافے سیمستثنٰی قرار دیا گیا ہے۔باقی گھریلوصارفین کے لیے بجلی کا بنیادی ٹیرف بڑھادیا گیا جس کے نتیجے میں فی یونٹ بنیادی ٹیرف48روپے84پیسے تک پہنچ گیا۔ماہانہ201 سے300 یونٹ تک کا ٹیرف7.12 روپے اضافے سے34.26 روپے ہوگیا۔ 301 سے400یونٹ کا ٹیرف7.02 روپے اضافے سے39.15روپے اور 700 یونٹ سیزیادہ کا ٹیرف6.12 روپے اضافے سے 48.84 روپے ہوگیا۔401 سے500 یونٹ کا ٹیرف6.12روپیاضافے سے41.36روپے اور 501 سے600یونٹ کا ٹیرف6.12روپے اضافے سے42.78روپے جبکہ 601سے 700 یونٹ کا ٹیرف 6.12روپے اضافے سے43.92روپے ہوگیا۔اگر بجلی کے بلز میں ٹیکسز کو ملایا جائے تو سلیب کے حساب سے فی یونٹ ٹیرف کی قیمت اس سے کہیں زیادہ بنتی ہے۔ماہانہ50یونٹ تک لائف لائن صارفین کے لیے فی یونٹ3.95 روپے اور 51سے100 یونٹ تک کے لیے فی یونٹ7.74 روپے برقرار رہے گا.

 

Posted in تازہ ترین, جنرل خبریںTagged
90911

پاکستان نے آئی ایم ایف سے 7 ارب ڈالر قرض کی وصولی کے لیے بھاری ٹیکس وصولیوں کا پلان تیار کر لیا 

Posted on

پاکستان نے آئی ایم ایف سے 7 ارب ڈالر قرض کی وصولی کے لیے بھاری ٹیکس وصولیوں کا پلان تیار کر لیا

اسلام آباد ( چترال ٹائمزرپورٹ ) پاکستان نے آئی ایم ایف کو تین سال میں ٹیکس ریونیو میں 3724 ارب روپے اضافے کی یقین دہانی کروا دی۔ وزارت خزانہ کی دستاویزات کے مطابق رواں مالی سال ٹیکس ریونیو میں 1.25 فیصد اضافے کا پلان ہے، زرعی شعبے سے حاصل آمدنی کو ٹیکس نیٹ میں لانا بھی شرائط میں شامل ہے۔

دستاویزات کے مطابق ری ٹیلرز اور برآمد کنندگان بھی اضافی ٹیکسوں کی زد میں آئیں گے جبکہ نان فائلرز کے گرد گھیرا تنگ کیا جائے گا اور تاجروں کی رجسٹریشن کی جائے گی۔ ڈیجیٹائزیشن کے ذریعے ٹیکس نیٹ میں توسیع کی جائےگی اور مختلف شعبوں کو حاصل چھوٹ، سبسڈیز کا بتدریج خاتمہ پلان میں شامل ہے۔

بجلی اور گیس ٹیرف میں بھی مقررہ شیڈول کے مطابق اضافہ کیا جائے گا اور آئی ایم ایف کو ٹیکس ریونیو کی وصولی کو آسان بنانے کی یقین دہانی بھی کروائی گئی ہے۔ خیال رہے کہ پاکستان اور آئی ایم ایف کے درمیان اسٹاف لیول معاہدہ طے پا گیا ہے جس کے تحت آئی ایم ایف پاکستان کو 37 ماہ میں 7 ارب ڈالر قرض فراہم کرے گا۔

تاریخ میں پہلی بار اسلام آباد کے لیے ماحولیاتی تبدیلی فنڈ قائم

اسلام آباد(سی ایم لنکس) وفاقی وزیر داخلہ محسن نقوی کی ہدایت پر سی ڈی اے نے تاریخ میں پہلی بار اسلام آباد کے لیے ماحولیاتی تبدیلی فنڈ قائم کر دیا۔سی ڈی اے نے خصوصی فنڈ کلائیمٹ چینج انیشیٹو کے تحت قائم کیا۔ وزیر داخلہ محسن نقوی نے ماحولیاتی فنڈ کے قیام پر چیئرمین سی ڈی اے محمد علی رندھاوا اور متعلقہ ٹیم کو شاباش دی۔محسن نقوی نے کہا کہ سی ڈی اے نے ماحولیاتی فنڈ قائم کر کے لیڈ لی ہے، سی ڈی اے کی ٹیم مبارک باد کی مستحق ہے۔چیئرمین سی ڈی اے محمد علی رندھاوا نے کہا کہ انیشیٹو کے تحت شہر میں کاربن کریڈٹ پروگرام بھی شروع کیا جائے گا، کاربن کریڈٹ پروگرام کے تحت شہر میں درخت لگانے کے لیے 2ہزار سے 10ہزار کنال پر محیط مقامات مختص کر دیے ہیں جہاں 40 لاکھ سے 50 لاکھ درخت لگائے جائیں گے۔ درخت لگانے کے لیے مقامات نئے سیکٹرز، ایونیوز اور دیگر کھلے علاقوں میں مختص کیے گئے ہیں۔مارگلہ ہلز پر واقع تفریحی مقامات پر مارگلہ ہلز فنڈ کی منظوری بھی دی گئی۔چیئرمین سی ڈی اے نے کہا کہ یہ فنڈ تفریحی مقامات کی آمدن کا 1.5 فیصد حصہ ہوگا، حاصل رقم سے مارگلہ ہلز کی حفاظت اور خوبصورتی کو یقینی بنایا جائے گا۔

 

Posted in تازہ ترین, جنرل خبریںTagged
90909

چین کی نجی سرمایہ کار کمپنی کے وفدکا وزیراعلیٰ  سے ملاقات،  خیبر پختونخوا میں معدنیات اور صنعت کے شعبوں میں سرمایہ کاری کی خواہش کا اظہار

Posted on

چین کی نجی سرمایہ کار کمپنی کے وفدکا وزیراعلیٰ  سے ملاقات،  خیبر پختونخوا میں معدنیات اور صنعت کے شعبوں میں سرمایہ کاری کی خواہش کا اظہار

پشاور ( چترال ٹائمزرپورٹ ) وزیر اعلی خیبر پختونخوا سردار علی امین خان گنڈاپور سے چین کی نجی سرمایہ کار کمپنی کے وفد نے گزشتہ روز وزیر اعلیٰ ہاو س پشاور میں ملاقات کی اور مختلف شعبوں میں سرمایہ کاری سے متعلق امور پر تبادلہ خیال کیا۔ وفد نے خیبر پختونخوا میں معدنیات اور صنعت کے شعبوں میں سرمایہ کاری کی خواہش کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ کمپنی اس سلسلے میں ایک ہفتے کے اندر صوبائی حکومت کو قابل عمل تجاویز پیش کرے گی۔ وزیر اعلیٰ نے متعلقہ حکام کو ان تجاویز کا جائزہ لے کر مزید پیشرفت کے لئے لائحہ عمل تیار کرنے کی ہدایت کی ہے۔ انہوں نے وفد کو لائیو اسٹاک، سولر انرجی، زراعت اور دیگر شعبوں میں بھی سرمایہ کاری کی پیشکش کرتے ہوئے کہا کہ خیبر پختونخوا میں بیرونی سرمایہ کاری کے بے پناہ مواقع موجود ہیں، ہم بیرونی سرمایہ کاری کی نہ صرف حوصلہ افزائی کریں گے بلکہ سرمایہ کاروں کو ہر ممکن سہولیات بھی فراہم کریں گے۔ وزیر اعلی کا کہنا تھا کہ صوبائی حکومت زراعت کی ترقی کے لئے چین کی جدید ٹیکنالوجی سے استفادہ کرنے کا ارادہ رکھتی ہے۔صوبائی حکومت سرکاری دفاتر اور تعلیمی اداروں کے علاوہ مستحق گھرانوں کو سولر انرجی کی فراہمی کے منصوبے پر کام کر رہی ہے۔ وزیر اعلی نے کہا کہ صوبے میں سولر پلییٹس اور سولر بیٹری میں استعمال ہونے والے معدنیات کے وافر ذخائر موجود ہیں، صوبائی حکومت صوبے میں ہی سولر پینل اور سولر بیٹری کی صنعت قائم کرنا چاہتی ہے، اس لئے اس شعبے میں سرمایہ کاری کے بے حد مواقع موجود ہیں اور ہم اس شعبے میں چینی سرمایہ کاری کی بھر پور حوصلہ افزائی کریں گے۔وزیراعلیٰ کے معاون خصوصی برائے صنعت عبد الکریم خان کے علاوہ بورڈ آف انوسٹمنٹ اینڈ ٹریڈ کے حکام بھی اس موقع پر موجود تھے ۔

 

Posted in تازہ ترین, جنرل خبریں
90896

گورنر اور وزیراعلیٰ خیبرپختونخوا کا بریپ اپرچترال میں سڑک حادثے میں پانچ قیمتی جانوں کی ضیاع پر افسوس اور تعزیت کا اظہار

گورنر اور وزیراعلیٰ خیبرپختونخوا کا بریپ اپرچترال میں سڑک حادثے میں پانچ قیمتی جانوں کی ضیاع پر افسوس اور تعزیت کا اظہار

پشاور ( چترال ٹائمزرپورٹ )وزیر اعلی خیبر پختونخوا سردار علی امین خان گنڈاپور نے ضلع اپر چترال کے علاقہ بریپ میں سڑک کے حادثے میں بچوں سمیت پانچ افراد جاں بحق ہونے پر افسوس کا اظہار کرتے ہوئے لواحقین سے تعزیت کی ہے۔ یہاں سے جاری اپنے تعزیتی بیان میں وزیر اعلی نے جاں بحق افراد کے لواحقین سے دلی ہمدردی کا اظہار کرتے ہوئے جاں بحق افراد کی معفرت اور پسماندگان کے لئے صبر جمیل کی دعا کی ہے۔ وزیر اعلی نے حادثے کے زخمیوں کی جلد صحت یابی کے لئے بھی نیک خواہشات کا اظہار کرتے ہوئے ضلع انتظامیہ کو زخمیوں کو بہترین طبی امداد کی فراہمی یقینی بنانے کی ہدایت کی ہے۔

 

دریں اثنا گورنر خیبرپختونخوا فیصل کریم کنڈی نے اپر چترال کے علاقہ بریپ میں وین گہری کھائی میں گرنے سے قیمتی جانی نقصان پر دلی رنج و غم کا اظہار کیاہے. گورنرنے جاں بحق افراد کے لواحقین سے دلی ہمدردی اور تعزیت کا اظہار کرتے ہوئے جاں بحق افراد کی مغفرت اور پسماندگان کے لئے صبر جمیل کی دعا کی ہے. انہوں نے حادثے کے زخمیوں کی جلد صحت یابی کے لئے بھی نیک خواہشات کا اظہار کیا ہے اور کہا ہے کہ واقعہ انتہائی افسوسناک ہے، متاثرہ خاندانوں کے غم میں برابر کے شریک ہیں.

اسی طرح وزیر اعلی خیبر پختونخوا سردار علی امین خان گنڈاپور نے ضلع اپر دیر کے علاقہ عشیرئ درہ میں سیلابی ریلے میں بہہ کر دو افراد کے جاں بحق اور ایک کے لاپتہ ہونے پر افسوس کا اظہار کرتے ہوئے جاں بحق افراد کے لواحقین سے تعزیت کی ہے۔ یہاں سے جاری اپنے تعزیتی بیان میں وزیر اعلی نے جاں بحق افراد کے لواحقین سے دلی ہمدردی کا اظہار کرتے ہوئے جاں بحق افراد کی معفرت اور پسماندگان کے لئے صبر جمیل کی دعا کی ہے۔ وزیر اعلی نے متعلقہ ضلعی انتظامیہ کو لاپتہ شخص کو ڈھونڈنے کے لئے تمام وسائل بروئے کار لانے کی ہدایت کی ہے اور کہا ہے کہ صوبائی حکومت متاثرہ خاندانوں کے دکھ درد میں برابر کی شریک ہے، صوبائی حکومت جاں بحق افراد کے لواحقین کو تنہا نہیں چھوڑے گی۔

 

دریں اثنا وزیر اعلی خیبر پختونخوا سردار علی امین گنڈاپور نے نوشہرہ کے علاقہ اکبر پورہ میں نامعلوم افراد کے ہاتھوں صحافی حسن زیب کے قتل کا نوٹس لیتے ہوئے پولیس کے اعلی حکام سے واقعے کی رپورٹ طلب کر لی ہے اور پولیس کو قتل میں ملوث عناصر کی فوری گرفتاری کے لئے کاروائی عمل میں لانے کی ہدایت کی ہے۔ یہاں سے جاری اپنے ایک بیان میں وزیر اعلی نے واقعے کی شدید الفاظ میں مذمت کرتے ہوئے کہا ہے کہ قتل میں ملوث عناصر قانون کی گرفت سے بچ نہیں سکتے، انہیں جلد گرفتار کرکے قانون کے کٹہرے میں لایا جائے گا اور لواحقین کو انصاف دینے کے لئے تمام اقدامات اٹھائے جائیں گے۔ وزیر اعلی نے مقتول کے اہل خاندان سے دلی ہمدردی اور تعزیت کا اظہار کرتے ہوئے مقتول کی معفرت اور پسماندگان کے لئے صبر جمیل کی دعا کی ہے اور کہا ہے کہ وہسوگوار خاندان اور صحافی برادری کے غم میں برابر کے شریک ہیں۔

Posted in تازہ ترین, جنرل خبریں, چترال خبریں
90894

حضرت امام حسین رضی اللہ تعالی عنہ کی شہادت، خلافت کے نظام کے تحفظ اور بقا کے لیے جدوجہد کی اعلی مثال ہے -ڈاکٹر حمیرا طارق

Posted on

حضرت امام حسین رضی اللہ تعالی عنہ کی شہادت، خلافت کے نظام کے تحفظ اور بقا کے لیے جدوجہد کی اعلی مثال ہے -ڈاکٹر حمیرا طارق

موجودہ دور میں نظام کی اصلاح اور کلمۃ اللہ کے قیام کے لیے حضرت امام حسین رضی اللہ عنہ کے نقش قدم کی پیروی ضروری ہے –
ہم حضرت امام حسین کی قربانی کے مقصد کی۔ بھلا بیٹھے ہیں عائشہ سید

سیکرٹری جنرل جماعت اسلامی پاکستان ڈاکٹر حمیرا طارق اور ناظمہ خیبر پختونخوا عائشہ سید کا عاشورہ محرم کے حوالے سے خصوصی مشترکہ پیغام

چترال (چترال ٹائمزرپورٹ ) عاشورہ محرم حق و باطل کے اس معرکے کی یاد دلاتا ہے جب خانوادہ رسول صلی اللہ نے دین حق کی بالا دستی کے لیے تن من دھن قربان کر دیا مگر اسلام میں خلافت کی ملوکیت میں تبدیلی کو قبول نہیں کیا- نبی کریم صلی اللہ علیہ وسلم کے نواسے اور فاطمۂ الزہرا کے روشن چراغ حضرت امام حسین رضی اللہ عنہ نے سنت نبوی صلی اللہ علیہ وسلم کی روشنی میں نظام کی اصلاح کے لیے اپنی اور پورے خاندان کی قربانی پیش کر دی –
مگر اسلامی نظام حکومت میں غلط روایات کو جڑ سے اکھاڑ دیا- ان خیالات کا اظہار سیکرٹری جنرل جماعت اسلامی پاکستان ڈاکٹر حمیرا طارق اور ناظمہ خیبر پختونخوا حلقہ خواتین جماعت اسلامی پاکستان نے عاشورہ محرم کے حوالے سے اپنے ایک مشترکہ بیان میں کیا۔۔۔۔ ڈاکٹر حمیرہ طارق نے کہا کہ سیدنا امام حسین رضی اللہ عنہ کا میدان جنگ میں ڈٹ جانا اس بات کا اعلان تھا کہ مسلمان خلافت کو ختم کرکے ایک انسان کی بادشاہت کسی صورت قبول نہیں کر سکتے عاشورہ محرم ہمیں یہی پیغام یاد دلاتا ہے کہ ہمیں اسلامی نظام حکومت کے قیام کے لیے اسی انداز میں جدوجہد کرنی ہے اورنظام الہیہ کے علاوہ تمام باطل نظریات کو دفن کرنا ہے-

عائشہ سید نے کہا کہ پاکستان میں اس وقت مہنگائی، ظلم ، لاقانونیت نے پنجے گاڑ رکھے ہیں – وقت کے یزید کو لگام دینے کے لیے اج حضرت امام حسین رضی اللہ جیسے کردار کی تلاش ہے-
آج مسلمان پوری دنیا میں وقت کے یزیدوں کےہاتھوں لہو لہو ہیں -فلسطین میں انسانیت سسک رہی ہے لیکن عالم اسلام کے حکمران حضرت امام حسین رضی اللہ کے فلسفہ قربانی و شہادت کے عملی پہلو کو فراموش کر بیٹھے ہیں -اگر بحثیت مسلمان امت سر اٹھا کر جینا ہے تو واقعہ کربلا کی حقیقی روح اور فلسفے کو سمجھتے ہوئے نقش امام حسین رضی اللہ کی پیروی لازم ہے

Posted in تازہ ترین, جنرل خبریںTagged
90890

حکومت کا بجلی بلوں کیلیے اسمارٹ میٹرنگ کا نظام متعارف کرانے کا فیصلہ

Posted on

حکومت کا بجلی بلوں کیلیے اسمارٹ میٹرنگ کا نظام متعارف کرانے کا فیصلہ

اسلام آباد(چترال ٹائمزرپورٹ)وزیراعظم شہباز شریف نے بجلی چوری کی روک تھام کیلیے ملک بھر میں اسمارٹ میٹرنگ نظام متعارف کرانے کیلیے اقدامات کی ہدایت کردی۔تفصیلات کے مطابق وزیراعظم محمد شہباز شریف کی زیر صدارت زرعی ٹیوب ویلوں کی سولرآئزیشن اور بجلی چوری کی روک تھام کے حوالے سے اجلاس ہوا۔شرکا سے گفتگو میں شہباز شریف نے کہا کہ شمسی توانائی بجلی پیدا کرنے کا سستا ترین ذریعہ ہے اسی لئے توانائی کے شعبے میں شمسی توانائی کا فروغ حکومت کی اولین ترجیح ہے، بلوچستان کے بعد پنجاب، سندھ اور خیبر پختونخوا میں زرعی ٹیوب ویلوں کی شمسی توانائی پر منتقلی کے حوالے سے صوبوں کی حکومتوں کے ساتھ مل کر کسانوں کی خوشحالی کے لئے کام کریں گے۔

 

وزیراعظم نے صوبوں میں زرعی ٹیوب ویلوں کی شمسی توانائی پر منتقلی کے حوالے سے صوبائی حکومتوں سے مشاورت کے بعد ایک جامع حکمت عملی ترتیب دینے کی ہدایت کرتے ہوئے بجلی چوری کی روک تھام کے اقدامات کو مزید بہتر بنانے کے حوالے سے جامع حکمت عملی اپنانے کی ہدایت کی۔وزیراعظم نے بجلی چوری کے حوالے سے وزارت توانائی کے تعاون پر وزیراعظم کی صوبائی حکومتوں کی تعریف کی اور ملک بھر میں بجلی کی بلوں کے حوالے سے اسمارٹ میٹرنگ کا نظام متعارف کروانے اور اس حوالے سے جامع پلان پیش کرنے کی ہدایت کی۔وزیراعظم نے چاروں صوبوں میں بجلی کی تمام تقسیم کار کمپنیوں کو اسمارٹ میٹرنگ کے حوالے سے ماڈل بنانے کی ہدایت کی اور کہا کہ بجلی کے بلوں میں اوور بلنگ کسی صورت قبول نہیں کی جائے گی۔وزیراعظم کو زرعی ٹیوب ویلوں کی شمسی توانائی پر منتقلی اور انسداد بجلی چوری، ڈیزل سے چلنے والے زرعی ٹیوب ویلوں کو ماحول دوست شمسی توانائی پر منتقل کرنے سے 2.7 ارب امریکی ڈالرز کا زر مبادلہ بچانے کے حوالے سے بریفنگ دی گئی۔

 

اس کے علاوہ بریفنگ میں بتایا گیا کہ انسداد بجلی چوری مہم میں ستمبر 2023 سے اب تک ملک بھر میں 84,366 افراد کو گرفتار کیا گیا، 174,562 ایف آئی آرز درج ہوئیں، بجلی تقسیم کار کمپنیوں کے 456 ملازمین کو معطل کیا گیا اور 421,460 کیسز فائل کئے گئے، حال ہی میں خیبر پختونخوا میں ایک ہزار ایک سو تیرہ نئے میٹرز لگائے گئے اور تقریباً 12 ہزار کنڈے ہٹائے گئے۔اجلاس میں وفاقی وزیر اقتصادی امور احد خان چیمہ، وفاقی وزیر پاور اویس احمد خان لغاری، وفاقی وزیر پیٹرولیم ڈاکٹر مصدق ملک، وزیر مملکت برائے خزانہ و محصولات علی پرویز ملک (بذریعہ وڈیو لنک), وزیراعظم کے کوآرڈینیٹر رانا احسان افضل (بذریعہ وڈیو لنک)، اور اعلیٰ سرکاری افسران نے شرکت کی جبکہ چاروں صوبوں کے چیف سیکریٹریز نے بھی اجلاس میں بذریعہ وڈیو لنک شرکت کی۔

پختونخوا؛ نئے کرشنگ سیزن تک چینی کے صوبائی کوٹے کی برآمد مؤخر

پشاور(سی ایم لنکس)خیبر پختونخوا حکومت نے نئے کرشنگ سیزن تک چینی کے صوبائی کوٹے کی برآمد کو مؤخر کردیا۔مشیر خزانہ کے پی کے مزمل اسلم کے مطابق وزیراعلیٰ خیبر پختونخوا علی امین گنڈاپور نے کابینہ اجلاس میں نئے کرشنگ سیزن تک چینی کے صوبائی کوٹے کی برآمدگی کو مؤخر کردیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ وفاقی حکومت کے چینی برآمدگی کے احکامات کے باوجود صوبائی کوٹہ مؤخر کرنا دانشمندانہ فیصلہ ہے۔مزمل اسلم کا کہنا ہے کہ اگر چینی کی قیمت میں اضافہ ہوتا ہے تو خیبرپختونخوا حکومت شراکت دار نہیں ہوگی۔ شہباز حکومت نے پہلے ملک میں گندم درآمد کی اجازت دے کر کسانوں کا معاشی قتل کیا۔ برآمدگی کی اجازت دے کر گندم آٹا کے نرخ بڑھائے پھر پابندی لگادی۔انہوں نے کہا کہ1991ء سے ن لیگ کی حکومتوں میں ایسے فیصلے ہوتے رہے ہیں، کچھ تو دال میں کالا ہے۔

Posted in تازہ ترین, جنرل خبریںTagged
90875

عدت میں نکاح کیس، عمران خان اور بشریٰ بی بی کی سزا کالعدم قرار، کیس سے بری، رہائی کے روبکار جاری

Posted on

عدت میں نکاح کیس، عمران خان اور بشریٰ بی بی کی سزا کالعدم قرار، کیس سے بری، رہائی کے روبکار جاری

اسلام آباد(چترال ٹائمزرپورٹ)بانی پی ٹی آئی اور بشریٰ بی بی کو عدت میں نکاح کیس سے بری کردیا گیا۔عدت میں نکاح کیس میں بانی پی ٹی آئی اور بشریٰ بی بی کی سزا کیخلاف اپیلیں منظور کرلی گئیں۔ اپیلیں منظور ہونے پر ٹرائل کورٹ کا فیصلہ کالعدم قرار دے دیا گیا۔بانی پی ٹی آئی اور بشریٰ بی بی کے خلاف دورانِ عدت نکاح کیس میں سزا کے خلاف مرکزی اپیلوں پر سماعت ایڈیشنل سیشن جج افضل مجوکہ نے کی۔عدالت نے اپیلوں کے منظور ہونے کا مختصر فیصلہ سنایا جس میں کہا گیا ہے کہ بانی پی ٹی آئی اور بشریٰ بی بی کی اپیلیں منظور کر کے ان کی رہائی کے روبکار جاری کردیے ہیں۔عدالت کا کہنا ہے کہ میڈیکل بورڈ اور علماء کی رائے سے متعلق دونوں درخواستیں مسترد کی جاتی ہیں۔

 

بعدازاں عدت میں نکاح کیس میں بریت کا تحریری فیصلہ بھی جاری کردیا گیا، 28 صفحات پر مشتمل تحریری فیصلہ ایڈیشنل سیشن جج افضل مجوکہ نے جاری کیا۔آج خاور مانیکا کے وکیل اور بانی پی ٹی آئی کے وکلاء اسلام آباد کی ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن عدالت میں پیش ہوئے تھے۔خاورمانیکا کے وکیل نے کہا کہ ٹرائل کے دوران بانی پی ٹی آئی اور بشریٰ بی بی کے وکلاء کی جانب سے گواہ لانے کا کہا گیا، اگر گواہ لانا چاہتے ہیں تو ہمیں کوئی اعتراض نہیں۔انہوں نے کہا کہ عدالت کسی بھی وقت شواہد لے سکتی ہے، کل آپ نے فقہ حنفی کا پوچھا تھا، کہیں بھی ذکر نہیں کیا گیا کہ حنفی ہیں، مفتی سعید نے بھی یہ نہیں کہا کہ دونوں حنفی ہیں۔خاور مانیکا کے وکیل نے کہا کہ سلمان اکرم راجہ کہتے ہیں کہ ان کے کلائنٹ بانی پی ٹی آئی نے شادی کی ہے، انہیں عدت کے بارے میں علم نہیں، تمام تر ذمہ داری بشریٰ بی بی کے کندھوں پر منتقل کی جارہی ہے۔

 

انہوں نے کہا کہ شوہر عورت کی قربانیوں کو سائیڈ پر رکھ کر کہہ رہا ہے میں نے کچھ نہیں کیا، خاتون مشکل وقت میں خاوند کے ساتھ کھڑی رہی، ایک لیڈر سے ایسی توقع نہیں کی جاسکتی۔خاور مانیکا کے وکیل نے کہا کہ بیوی بنی گالہ کی آسائش چھوڑ کر اڈیالہ جیل تک چلی گئی۔جج افضل مجوکہ نے کہا کہ ایسے ہو ہی نہیں سکتا اگر شادی ہوئی تو دونوں ذمہ دار ہیں۔خاور مانیکا کے وکیل نے کہا کہ بیوی کیا سوچے گی کہ میری محبتوں کا یہ صلہ دیا، ان حالات میں میں اقبال کی شاعری کا سہارا لوں گا۔خاور مانیکا کے وکیل نے کہا کہ مجھے اپیل کنندگان کے اضافی ثبوت پر کوئی اعتراض نہیں وہ پیش کرسکتے ہیں، بشریٰ بی بی کی جانب سے کہا گیا کہ اپریل 2017ء میں زبانی طلاق دی گئی، سلمان اکرم راجہ صاحب زبانی طلاق کو مان رہے ہیں کہ اپریل میں ہوئی۔انہوں نے کہا کہ اگر خاتون کہتی ہے کہ اسے زبانی طلاق دی گئی تو کیا اس کی زبانی بات پر اعتبار کیا جائے گا؟ زبانی طلاق کی کوئی حیثیت نہیں ہے اس حوالے سے عدالتی فیصلے موجود ہیں، قانون کہتا ہے دستاویزی ثبوت زبانی بات پر حاوی ہوگا،

 

بشریٰ بی بی نے کس بیان میں کہا شادی عدت کے دوران نہیں ہوئی۔انہوں نے کہا کہ مفتی سعید نے بشریٰ بی بی کی بہن کے کہنے پر کہ شادی کے لوازمات پورے ہیں نکاح پڑھوایا، کسی جگہ بشریٰ بی بی نے مفتی سعید کو نہیں کہا کہ ان کی عدت پوری ہے، جس بہن نے عدت پوری ہونے کا کہا اسے پھر بطور گواہ لایا جاتا۔جج افضل مجوکہ بولے کہ پراسیکیوشن کی ڈیوٹی ہے کہ وہ ثابت کرے کہ عدت پوری نہیں، بشریٰ بی بی کے بیان کو آپ اس کے خلاف کیسے استعمال کرسکتے ہیں، شرعی تقاضے پورے کرنے کا ذکر تو کیا گیا ہے، بیان میں تو کہا گیا ہے کہ نکاح کے لیے شرعی تقاضے پورے ہیں۔جج نے کہا کہ ملزم کا کام ہے کہ عدالت کے ذہن میں شک ڈالے، ثابت کرنا تو پراسیکیوشن کا کام ہے۔وکیل نے کہا کہ بانی پی ٹی آئی نے کہا کہ میں نے فرد جرم نہیں سنی لیکن یہ بھی کہا کہ یہ جھوٹا کیس ہے، خاور مانیکا کا سافٹ ویئر اپڈیٹ ہوا۔

 

جج افضل مجوکہ نے کہا کہ اس بیان کا سرٹیفکیٹ کدھر ہے جب بیان ہو تو عدالت سرٹیفکیٹ دیتی ہے۔عدالت میں بشریٰ بی بی کے وکیل نے کہا کہ ہم ریمانڈ بیک نہیں چاہ رہے ہم صرف میرٹ پر فیصلہ چاہتے ہیں۔عدالت میں ایڈووکیٹ سلمان اکرم راجہ نے کہا کہ خاور مانیکا نے ٹی وی انٹرویو میں بھی میری سابقہ اہلیہ کے الفاظ استعمال کیے تھے، سیکشن 494 کا بھی کوئی ثبوت موجود نہیں ہے وہ کیسے سزا مانگ رہے ہیں۔سلمان اکرم راجہ نے کہا کہ 496 بی ڈالا گیا مگر وہ چارج فریم میں نکال دیا گیا، اللہ داد کیس میں سپریم کورٹ نے سیکشن 7 کے بارے میں واضح کیا کہ 4 سال بعد دوبارہ سابق شوہر کی بیوی تصور نہیں کیا جاسکتا۔۔۔کیس کا پس منظر۔۔۔یاد رہے کہ 5 نومبر 2023ء کو خاور مانیکا نے مقامی عدالت میں شکایت دائر کی تھی۔سینئر سول جج قدرت اللہ نے 3 فروری 2024ء کو بانی پی ٹی آئی اور بشریٰ بی بی کو اس کیس میں 7،7 سال قید کی سزا سنائی تھی جس کے بعد 23 فروری 2024ء کو بانی پی ٹی آئی اور بشریٰ بی بی کی سزا کیخلاف اپیلیں دائرکی گئیں تھیں۔بعدازاں 23 مئی 2024ء کو سیشن جج شاہ رخ ارجمند نے سزا کیخلاف اپیلوں پر فیصلہ محفوظ کیا تھا جس کے بعد 29 مئی کو خاور مانیکا نے عدالت پر عدم اعتماد کا اظہار کیا تھا جس پر سیشن جج نے فیصلہ سنانے کے بجائے اپیلیں دوسری عدالت منتقلی کیلئے خط لکھا تھا۔

 

سیشن جج شاہ رخ ارجمند کی جانب سے اسلام آباد ہائیکورٹ کوخط لکھا گیا تھا جس کے بعد 3 جون 2024ء کو اسلام آباد ہائیکورٹ نے اپیلیں ایڈیشنل سیشن جج افضل مجوکہ کو منتقل کی تھیں اور 13جون کو اسلام آباد ہائیکورٹ نے دوران عدت نکاح کیس میں سزا معطلی کی درخواستوں پر دس روز میں فیصلے کا حکم دیا تھا۔

 

 

بشریٰ بی بی کی گرفتاری کا امکان، نیب ٹیم اڈیالہ جیل پہنچ گئی

راولپنڈی(سی ایم لنکس)بانی پی ٹی آئی عمران خان کی اہلیہ بشریٰ بی بی کی گرفتاری کا امکان ہے۔ ڈپٹی ڈائریکٹر محسن ہارون کی سربراہی میں نیب ٹیم اڈیالہ جیل پہنچ گئی۔ نیب ٹیم گیٹ نمبر 5 سے اڈیالہ جیل کے اندر داخل ہوئی۔ ذرائع نے کہا کہ نیب ٹیم کی جانب سے توشہ خانہ کے نئے کیس میں بشریٰ بی بی کی گرفتاری کا امکان ہے۔

 

عمران خان رہا نہیں ہوں گے، لاہور پولیس کا 9 مئی مقدمات میں گرفتاری کا فیصلہ

اسلام آباد( چترال ٹائمزرپورٹ) بانی پی ٹی آئی و بشری بی بی کے عدت کیسز میں بری ہونے کے باوجود اڈیالہ جیل راولپنڈی سے فوری رہائی ممکن نہیں۔ذرائع کے مطابق راولپنڈی میں درج نو مئی کے 12 کیسز میں اگرچہ بانی پی ٹی آئی کی ضمانتیں ہوچکی ہیں، مگر 7 مقدمات کی روبکاریں جیل انتظامیہ کے پاس پہنچ چکیں تاہم سائفر سمیت پانچ کیسز کی موصول نہیں ہوئیں، جب تک تمام روبکاریں نہیں آجاتیں بانی پی ٹی آئی کی فوری رہائی ممکن نہیں۔اس کے علاوہ لاہور پولیس نے بھی سانحہ نو مئی کے تین مقدمات میں بانی پی ٹی آئی کی گرفتاری کا فیصلہ کیا ہے۔ انسداد دہشت گردی عدالت راولپنڈی نے بانی پی ٹی آئی کی گرفتاری ڈالنے کی اجازت دیدی۔لاہور پولیس بانی پی ٹی آئی سے نو مئی کے تین مقدمات میں جیل میں تفتیش کریگی۔ انسداد دہشت گردی عدالت لاہور نے بانی پی ٹی آئی کی تین مقدمات میں درخواست ضمانت خارج کی تھی۔دریں اثنا عدت میں نکاح کیس فیصلے کے بعد بانی پی ٹی آئی قیدی نہیں رہے۔ ان کا جیل میں اسٹیٹس تبدیل ہوگیا۔ بانی پی ٹی آئی اب انسداد دہشتگردی کے تین مقدمات میں حوالاتی ہیں تاہم وہ اس فیصلے کے باوجود جیل سے رہا نہیں ہو پائیں گے۔ ان کیخلاف 9 مئی کے تین کیسز موجود ہیں جن میں بانی پی ٹی آئی کی ضمانتیں منسوخ ہوچکی ہیں۔واضح رہے کہ ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن کورٹس اسلام آباد نے عدت کے دوران نکاح کیس میں عمران خان اور بشریٰ بی بی کی سزا کے خلاف اپیلیں منظور کرکے انہیں باعزت طور پر بری کردیا۔ عدالت نے بانی پی ٹی آئی اور بشری بی بی کو رہا کرنے کا حکم دیتے ہوئے خاور مانیکا کی دونوں درخواستیں مسترد کردیں۔

 

مخصوص نشستوں کے کیس میں اپیل کا فیصلہ نہیں کیا، اٹارنی جنرل

کراچی(سی ایم لنکس) اٹارنی جنرل پاکستان منصور اعوان نے کہا ہے کہ حکومت پاکستان نے سپریم کورٹ کے مخصوص نشستوں کے کیس میں نظر ثانی کی اپیل کا فیصلہ نہیں کیا۔یہ بات انہوں نے سندھ ہائیکورٹ میں چیف جسٹس سندھ ہائیکورٹ کی حلف برداری کی تقریب کے بعد میڈیا سے غیر رسمی گفتگو میں کہی۔اٹارنی جنرل منصور اعوان نے کہا کہ ابھی شارٹ آرڈر ہے، نظر ثانی کے حوالے سے کابینہ یا اعلی سطح پر گفتگو نہیں ہوئی۔ نظر ثانی کی اپیل دائر کرنے فیصلہ حکومت کرے گی، ابھی کچھ کہنا مشکل ہے۔انہوں نے کہا کہ اگر نظر ثانی کی اپیل میں جانا ہے تو سوچ سمجھ کر جانا چاہیے۔ فیصلے پر ڈسکشن ہوئی ہے، مگر نظر ثانی پر جانا چاہئے یا نہیں ڈسکشن نہیں ہوا۔

Posted in تازہ ترین, جنرل خبریںTagged
90873

صوبائی حکومت اپنی بجلی سستے نرخوں پر مقامی صنعتوں کو فراہم کرنے پر کام کررہی ہے،وزیراعلیٰ خیبرپختونخوا کی ایشین ڈویلپمنٹ بینک کے وفد سے گفتگو

Posted on

صوبائی حکومت اپنی بجلی سستے نرخوں پر مقامی صنعتوں کو فراہم کرنے پر کام کررہی ہے،وزیراعلیٰ خیبرپختونخوا کی ایشین ڈویلپمنٹ بینک کے وفد سے گفتگو

پشاور ( چترال ٹائمزرپورٹ ) وزیراعلیٰ خیبرپختونخوا سردار علی امین خان گنڈا پورسے ایشین ڈویلپمنٹ بینک کے وفد نے گزشتہ روز وزیراعلیٰ ہاﺅس پشاور میں ملاقات کی اور باہمی دلچسپی کے اُمور خصوصی طور پر مختلف شعبوں میں ایشیائی ترقیاتی بینک کے تعاون سے جاری منصوبوں سے متعلق معاملات پر تبادلہ خیال کیا۔ ایڈیشنل چیف سیکرٹری منصوبہ بندی و ترقیات سید امتیاز حسین شاہ کے علاوہ متعلقہ محکموں کے انتظامی سیکرٹریز اور دیگر حکام بھی ملاقات میں موجود تھے۔ملاقات میں روڈ انفراسٹرکچر، واٹر، ایگریکلچر، انرجی ، اربن ڈیویلپمنٹ اور صحت کے شعبوں میں ایشین ڈویلپمنٹ بینک کے اشتراک سے جاری منصوبوں پرٹائم لائنز کے مطابق پیشرفت اور ان کی بروقت تکمیل سے متعلق معاملات پر تفصیلی گفتگو کی گئی۔ علاوہ ازیں اگلے تین سالوں کے دوران ایشین ڈویلپمنٹ بینک کی معاونت سے شروع کئے جانے والے ترقیاتی منصوبوں پر بھی غوروخوص کیا گیا اور پیشگی لوازمات بروقت مکمل ہونے کی صورت میں ان منصوبوں پر جلد عملدرآمد شروع کرنے پر اتفاق کیا گیا۔

 

وفد نے ان منصوبوں پر عملدرآمد کے لئے ٹائم لائینز سے پہلے فنڈز جاری کرنے پر بھی رضا مندی کا اظہارکیا۔اہم منصوبوں میں خیبرپختونخوا سسٹینیبل اربن موبیلیٹی، خیبرپختونخوا رورل روڈز ڈویلپمنٹ، سٹیز امپرومنٹ پراجیکٹ، فوڈ سکیورٹی اینڈ لائیو اسٹاک مینجمنٹ پروگرام کے تحت مختلف منصوبے شامل ہیں۔وزیر اعلیٰ نے مذکورہ منصوبوں پر بلا تاخیر عمل درآمد شروع کرنے کیلئے متعلقہ حکام کوپیشگی لوازمات جلد سے جلد مکمل کرنے کے لئے اقدامات کی ہدایت کی ہے۔ملاقات میں پانچ سالہ کنٹری پارٹنرشپ اسٹریٹجی 30-2026 کے تحت خیبر پختونخوا کے لئے مجوزہ منصوبوں کا بھی جائزہ لیا گیا اورسماجی شعبوں میں اشتراک کار کو مزید وسعت دینے پر اتفاق کیا گیا۔

وزیراعلیٰ نے وفد کے شرکاءسے گفتگو کرتے ہوئے کہاکہ صوبائی حکومت سماجی شعبوں کی ترقی کے لئے ایشین ڈویلپمنٹ بینک کے اشتراک اور تعاون کو قدر کی نگاہ سے دیکھتی ہے۔وزیراعلیٰ کا کہنا تھا کہ صوبائی حکومت اپنی آمدن بڑھانے کے لئے استعداد کے حامل شعبوں میں خطیر سرمایہ کاری کر رہی ہے، خیبر پختونخوا میں زراعت، لائیو اسٹاک، سیاحت، معدنیات، پن بجلی اور ہاوسنگ کے شعبوں میں سرمایہ کاری کے بے پناہ مواقع موجود ہیں، ان شعبوں کو ترقی دے کر لوگوں کو روزگار کے مواقع فراہم کرنا صوبائی حکومت کے وژن کا اہم حصہ ہے، ہمارا حتمی ہدف لوگوں کو اپنے پاو¿ں پر کھڑا کرنا ہے۔

علی امین گنڈ ا پور نے کہاکہ ضم اضلاع میں انفراسٹرکچر کی ترقی اور لوگوں کو روزگار کے مواقع فراہم کرنا صوبائی حکومت کی اہم ترجیحات میںشامل ہے۔ علاوہ ازیں صوبے کی فوڈ سکیورٹی کا مسئلہ مستقل بنیادوں پر حل کرنے کے لئے سی آر بی سی سمیت چھوٹے ڈیموں کے منصوبے بھی صوبائی حکومت کی ترجیح ہیں،صوبائی حکومت ان منصوبوں پر عملدرآمد کے لئے سرمایہ کاری کر رہی ہے،اس سلسلے میں شراکت اداروں کے تعاون کی بھی ضرورت ہے۔وزیراعلیٰ نے مزید کہاکہ موجود صوبائی حکومت اپنے ترقیاتی پروگرام میں بنیادی اصلاحات متعارف کرارہی ہے،ہم ترقیاتی منصوبوں کا تھرو فارورڈ 13 سال سے کم کرکے 6 سال تک لے آئے ہیں۔اسی طرح وزیراعلیٰ نے کہاکہ صوبائی حکومت اپنی بجلی سستے نرخوں پر مقامی صنعتوں کو فراہم کرنے پر کام کررہی ہے،اس سلسلے میں صوبائی حکومت کو اپنی ٹرانسمیشن لائن کی ضرورت ہے ۔ صوبائی حکومت اس شعبے میں نجی سرمایہ کاری کا خیر مقدم کرے گی۔وزیراعلیٰ نے وفد کو یقین دلایا کہ ہم ایز آف ڈوئنگ بزنس پالیسی کے تحت سرمایہ کاروں کو ہر قسم کی سہولیات فراہم کریں گے۔

Posted in تازہ ترین, جنرل خبریںTagged
90861

اداروں کی نجکاری کا فیصلہ کر لیا گیا ہے، پی آئی اے، روزویلٹ ہوٹل، ہاؤس بلڈنگ فنانس کمپنی لمیٹڈ، فرسٹ وویمن بینک لمیٹڈ کی نجکاری اسی سال مکمل ہو نے کی امید ہے، سینیٹ کی قائمہ کمیٹی برائے نجکاری کو بریفنگ

اداروں کی نجکاری کا فیصلہ کر لیا گیا ہے، پی آئی اے، روزویلٹ ہوٹل، ہاؤس بلڈنگ فنانس کمپنی لمیٹڈ، فرسٹ وویمن بینک لمیٹڈ کی نجکاری اسی سال مکمل ہو نے کی امید ہے، سینیٹ کی قائمہ کمیٹی برائے نجکاری کو بریفنگ

اسلام آباد(چترال ٹائمزرپورٹ)سینیٹ کی قائمہ کمیٹی برائے نجکاری کو بتایا گیا ہے کہ 24اداروں کی نجکاری کا فیصلہ کر لیا گیا ہے، پی آئی اے، روزویلٹ ہوٹل، ہاؤس بلڈنگ فنانس کمپنی لمیٹڈ، فرسٹ وویمن بینک لمیٹڈ کی نجکاری اسی سال مکمل ہو نے کی امید ہے، وفاقی حکومت سے منظور شدہ نجکاری پروگرام کو شفافیت کے ساتھ عملی جامہ پہنایا جا رہا ہے، نجکاری کا عمل عوامی پیشکش کے تحت ہو رہاہے اور متعلقہ وزارتوں سے رائے بھی لی جاتی ہے۔ سینیٹ کی قائمہ کمیٹی برائے نجکاری کا اجلاس جمعہ کو یہاں چیئرمین کمیٹی سینیٹر محمد طلال بدر کی زیر صدارت پارلیمنٹ ہاؤس میں منعقد ہوا۔قائمہ کمیٹی کے اجلاس میں وزارت نجکاری اور اس کے ماتحت اداروں کی مجموعی کارکردگی اور کام کے طریقہ کار کے علاوہ وزارت نجکاری سے آئندہ ایک سال کے نجکاری پروگرام کی تفصیلات کے امور کا تفصیل سے جائزہ لیا گیا۔ چیئرمین کمیٹی سینیٹر محمد طلال بدر نے اراکین کمیٹی اور وزارت کے نمائندوں کو خوش آمدید کرتے ہوئے کہا کہ اراکین کمیٹی اور وزارت کے ساتھ مل کر ملک کی معیشت کی بحالی اور نجکاری کے عمل کو شفاف سے شفاف تر بنانے کے لئے لائحہ عمل اختیار کیا جائے گا، یہ وزارت واحد امید ہے جو اگر احسن طریقے سے نجکاری کے عمل پر عملدرآمد کرے تو ملکی معیشت بھنور سے نکل سکتی ہے۔

 

انہوں نے کہا کہ حکومتیں بزنس نہیں کرتی بلکہ اداروں کو ریگولیٹ کرتی ہیں اور یہ حکومت کا اولین فرض ہوتا ہے کہ وہ ادارے جو قومی نقصان کا سبب بن رہے ہوں ان کو ترقی کی جانب گامزن کر سکے اور اگر ایسا ممکن نہ ہو تو اس کے لئے موثر لائحہ عمل اختیار کرے اور ملک کو نقصان سے بچایا جا سکے۔ اراکین کمیٹی نے چیئرمین کمیٹی سینیٹر محمد طلال بدر کو چیئرمین کمیٹی منتخب ہونے مبارکباد پیش کرتے ہوئے بھرپور تعاون کا یقین دلایا اور کہا کہ سیاسی وابستگیوں سے بالا تر ہو کر ملکی ترقی و خوشحالی کیلئے مل کر کام کریں گے۔سیکرٹری وزارت نجکاری نے قائمہ کمیٹی کو تفصیلی بریفنگ دیتے ہوئے بتایا کہ نجکاری کے امور میں شفافیت کا پہلو نہ صرف حکومت اورملک کے لئے اہم ہوتا ہے بلکہ اس سے عوام کی حالت زار بھی بہتر ہوتی ہے۔ انہوں نے کہا کہ وفاقی حکومت سے منظور شدہ نجکاری پروگرام کو شفافیت کے ساتھ عملی جامہ پہنانا اس ادارے کا کام ہے۔ ادارے کاکام نجکاری کے حوالے سے پالیسیز بنانا ہے جو نجکاری بورڈ میں پیش کی جاتی ہے۔ نجکاری بورڈ سفارشات وفاقی کیبنٹ میں پیش کرتا ہے اور وفاقی کابینہ کی منظوری کے بعد اس پر عمل شروع کر دیا جاتا ہے۔

 

کمیٹی کو بتایا گیا کہ نجکاری ڈویڑن میں 82 آسامیاں ہیں جن میں سے 17 خالی ہیں۔ گریڈ17 اور اس سے اوپر کی کل12 آسامیاں ہیں۔ گریڈ ایک سے16 تک 70 آسامیاں ہیں۔نجکاری کمیشن میں 143 پوسٹیں ہیں جن میں سے 20 خالی ہیں۔24 گریڈ 17 اور اس سے اوپر کی اسامیاں ہیں اور 119 گریڈ ایک سے16 کی آسامیاں ہیں۔ قائمہ کمیٹی کو نجکاری ڈویڑن اور نجکاری کمیشن کے بجٹ کی تفصیلات سے بھی آگاہ کیا گیا۔کمیٹی کو بتایا گیا کہ نجکاری کمیشن کو بجٹ حکومت کی جانب سے دیا جاتا ہے۔ نجکاری کمیشن کو فنڈز بجٹ کی گرانٹس اور نجکاری فنڈ کے ذریعے فراہم کی جاتی ہے۔ قائمہ کمیٹی کو نجکاری کمیشن کے قیام، پالیسی فریم ورک اور افعال بارے بھی آگاہ کیا گیا۔قائمہ کمیٹی کو بتایا گیا کہ نجکاری کمیشن کا ایک بورڈ ہے جس کا ایک چیئرمین اور 8 ممبران ہوتے ہیں۔نجکاری پر ایک کیبنٹ کمیٹی بھی بنائی گئی ہے جس کے چیئرمین وزیر خارجہ امور ہوتے ہیں اور اس کے ممبران میں وزیر خزانہ، وزیر تجارت، وزیر توانائی، وزیر صنعت وپیداوار اور وزیر نجکاری شامل ہوتے ہیں۔ کمیٹی کو بتایا گیا کہ حکومت نے نجکاری کمیشن رولز بنانے کے اختیارات بھی دئیے ہیں۔ قائمہ کمیٹی کو بنائے گئے مختلف رولز کی تفصیلات سے بھی آگاہ کیا گیا۔سینیٹر محسن عزیز نے کہا کہ نجکاری کمیشن کا بجٹ 8 ارب کا ہے جبکہ وزارت کا بجٹ کم ہے۔ کمیٹی کو بتایا گیا کہ نجکاری کا عمل عوامی پیشکش کے تحت ہو رہا ہے اور نجکاری کیے جانے والے اداروں میں متعلقہ وزارتوں سے رائے بھی لی جاتی ہے اور بورڈ میں ان منصوبوں کی نمائندگی کے لئے وزارت کے لوگ بھی ہوتے ہیں۔

 

قائمہ کمیٹی کو بتایا گیاکہ فنانشنل ایڈوائز ہائیر کرنے پر بہت خرچ ہوتاہے جس پر چیئرمین کمیٹی نے کہا کہ قائمہ کمیٹی کو گزشتہ پانچ برسوں کا بجٹ، اخراجات سے متعلقہ تفصیلات فراہم کی جائیں۔ کمیٹی کو بتایا گیا کہ گزشتہ 15 برسوں میں کوئی بڑی ٹرانزکشن نہیں کی گئی۔یہ بھی آگاہ کیا گیا کہ پاکستان سٹیل ملز کو نجکاری سے نکال دیا گیا ہے۔چیئرمین کمیٹی نے کہا کہ فنانشنل ایڈوائرز پر آج تک جتنا خرچہ ہوا ہے اور وہ کام پورا کئے بغیر چلے گئے ہیں ان کی تفصیلات بھی فراہم کی جائیں۔ چیئرمین کمیٹی نے نجکاری کے لئے کوششوں اورگزشتہ 15 سالوں میں فنانشنل ایڈوائز ز پر آنیوالے اخراجات کی تفصیلات فراہم کرنے کی ہدایت کی۔ سینیٹر فیصل سلیم رحمان نے کہا کہ جب فنانشل ایڈوائز نے کام ٹھیک نہیں کیا تو کیا ان سے ریکوری کر سکتے ہیں۔ قائمہ کمیٹی کو آگاہ کیا گیا کہ کل 84 اداروں کی مختلف وزارتوں میں نجکاری کے لئے کی نشاندہی کی گئی تھی جن میں 24 اداروں کی نجکاری کا فیصلہ کر لیا گیا ہے اور 41 کیبنٹ کے پاس ہیں۔24 اداروں میں سے 4 ادارے جن میں پی آئی اے کمپنی لمیٹڈ، روزویل ہوٹل، ہاؤس بلڈنگ فنانس کمپنی لمیٹڈ، فرسٹ وویمن بینک لمیٹڈ کی نجکاری امید ہے اسی سال مکمل ہو جائے گی۔ قائمہ کمیٹی کو بتایا گیا کہ نجکاری کا عمل ایک سے 5 سال کے دوران تین مراحل میں مکمل ہو گا۔نجکاری کا عمل قانونی تقاضوں کے تحت عمل میں لایا جا رہا ہے۔ قائمہ کمیٹی نے خسارہ میں جانے والے سرکاری اداروں کی تفصیلی رپورٹ بھی طلب کر لی۔

 

اراکین کمیٹی نے کہا کہ کچھ ادارے منافع میں ہیں ان کی نجکاری کیوں کی جا رہی ہے جس پر کمیٹی کو بتایا گیا کہ ابھی منافع کم ہورہا ہے نجکاری کے بعد منافع بڑھ جائے گا۔کمیٹی کو بتایا گیا کہ فرسٹ ویمن بینک، ہاؤس بلڈنگ فنانس، پی آر سی ایل اور سٹیٹ لائف منافع بخش ادارے ہیں۔ بجلی کی نو تقسیم کار کمپنیوں کی پانچ سال میں نجکاری کی جائے گی۔ تین تقسیم کار کمپنیوں کی نجکاری کیلئے فنانشل ایڈوائزر کی تعیناتی اسی سال ہو جائے گی۔سیکرٹری نجکاری ڈویڑن نے کہا کہ پی آئی اے کارپوریشن لمیٹڈ، روزویلٹ ہوٹل، ہاؤس بلڈنگ، فرسٹ ویمن بینک کی نجکاری اسی سال ہوگی۔انہوں نے کہا کہ پی آئی اے نے 800 ارب روپے کے واجبات ادا وجہ سے سپریم کورٹ نے نہ صرف اپنے وقار کو محفوظ رکھا بلکہ مزید وقار میں اضافہ کردیا یہ تاریخ ساز فیصلہ پاکستانی قوم یاد رکھے گی انہوں نے کہاکہ پی ڈی ایم کے ٹولے کی شکست کا دن ہے وہ آج کا فیصلہ یاد رکھیں گے پی ٹی آئی کا نام مٹانے والی حریف جماعتیں خود مٹ گئیں پی ٹی آئی ایک بار پھر برسر اقتدار آئے گی اور مظلوم عوام کی آواز بن کر ابھرے گی اب پی ٹی آئی باآسانی وفاقی حکومت بنائے گی سپریم کورٹ نے کسی کا خوف نہ رکھتے ہوئے مظلوم کا ساتھ دیا خوش آئند بات یہ ہے کہ ججز نے قوم کو مایوس نہیں کیا اور پاکستان تحریک انصاف کو مخصوص نشستوں کا حق دے دیا انہوں نے کہاکہ قائد عمران خان کی رہائی کو ہر صورت ممکن بنائیں گے عمران خان عوام سے محبت کی بناء پر قید و بند کی صعوبتیں برداشت کر رہے ہیں جلد ہی قائد عمران خان ہمارے درمیان موجود ہوں گے اور عمران خان جلد پھر سے پاکستانی قوم کی ترجمانی کا ذمہ اٹھائیں گے۔

 

 

 

Posted in تازہ ترین, جنرل خبریںTagged
90847

قومی اسمبلی میں سیاسی جماعتوں کی پوزیشن کیا ہوگی؟ حکمراں اتحاد دو تہائی اکثریت سے محروم، پی ٹی آئی قومی اسمبلی کی سب سے بڑی جماعت بن جائیگی

قومی اسمبلی میں سیاسی جماعتوں کی پوزیشن کیا ہوگی؟ حکمراں اتحاد دو تہائی اکثریت سے محروم، پی ٹی آئی قومی اسمبلی کی سب سے بڑی جماعت بن جائیگی

اسلام آباد(چترال ٹائمزرپورٹ )سپریم کورٹ آف پاکستان (ایس سی پی) کے فیصلے کے بعد پارلیمان میں سیاسی جماعتوں کی پوزیشن کیا ہوگی؟حکمران جماعت مسلم لیگ (ن) کی قومی اسمبلی میں کل 108 نشستیں بچیں گی جبکہ پیپلز پارٹی کی نشستوں کی تعداد 68 رہ جائے گی۔جمعیت علماء اسلام (جے یو آئی ف) کی نشستیں 11 سے کم ہو کر 8 رہ جائیں گی۔ن لیگ، پی پی اور ایم کیو ایم سمیت دیگر جماعتوں پر مشتمل حکمران اتحاد کے ارکان کی تعداد 209ء ہے، جسے قومی اسمبلی سادہ اکثریت حاصل ہے۔اس وقت سنی اتحاد کونسل یعنی پی ٹی آئی کے ارکان سمیت اپوزیشن کے مجموعی ارکان کی تعداد 97 ہے، مخصوص نشستیں ملنے کے بعد یہ تعداد 120 ہوجائے گی۔سپریم کورٹ نے آج پشاور ہائی کورٹ اور الیکشن کمیشن کا فیصلہ کالعدم قرار دیا اور مخصوص نشستیں پی ٹی آئی کو دینے کا حکم دیا۔

 

حکمراں اتحاد دو تہائی اکثریت سے محروم، پی ٹی آئی قومی اسمبلی کی سب سے بڑی جماعت بن جائیگی

اسلام آباد(سی ایم لنکس)مخصوص نشستیں پی ٹی آئی کو ملنے کے فیصلے سے حکمران اتحاد دو تہائی اکثریت سے محروم ہوگیا اور پی ٹی آئی کے قومی اسمبلی میں سنگل لارجسٹ پارٹی بننے کے امکانات روشن ہوگئے۔ قومی اسمبلی میں سنی اتحاد کونسل کے ممبران کی تعداد 84 جبکہ پی ٹی آئی کے حمایت یافتہ 8 آزاد اراکین بھی قومی اسمبلی میں موجود ہیں جس سے پی ٹی آئی کے حمایت یافتہ اراکین کی مجموعی تعداد 92 ہے۔سپریم کورٹ کے فیصلے کی روشنی میں خواتین کی 20 جبکہ 4 اقلیتی نشستیں پی ٹی آئی کو ملیں گی جس سے پی ٹی آئی اراکین کی تعداد قومی اسمبلی میں 116 تک پہنچنے کا امکان ہے۔ مسلم لیگ ن مجموعی طور پر 108 نشستوں کے ساتھ دوسری جبکہ پاکستان پیپلز پارٹی 68 نشستوں کی ساتھ قومی اسمبلی میں تیسری بڑی جماعت کے طور پر موجود ہے۔ ایم کیو ایم 21، جے یو آئی ف 8، مسلم لیگ ق 5، استحکام پارٹی 4 جبکہ مسلم لیگ ضیاء ، بلوچستان نیشنل پارٹی، نیشنل پارٹی، پختونخوا ملی عوامی پارٹی اور ایم ڈبلیو ایم کے ایک ایک رکن قومی اسمبلی میں موجود ہیں۔سپریم کورٹ کا مخصوص نشستوں سے متعلق فیصلے کا براہ راست اثر مرکز کے ساتھ صوبے پر بھی پڑے گا جہاں پی ٹی آئی کو پنجاب اسمبلی میں خواتین کی 24 جبکہ 3 غیر مسلم کی نشستیں ملیں گی۔ سندھ اسمبلی میں 2 خواتین اور ایک غیر مسلم جبکہ کے پی اسمبلی کی 21 خواتین اور 4 اقلیتی نشستیں ملیں گی۔دوسری جانب سپریم کورٹ فیصلے نے حکومتی اتحاد کو قومی اسمبلی میں دو تہائی اکثریت سے محروم کر دیا۔ سپریم کورٹ کے فیصلے کی روشنی میں حکومتی اتحاد ی جماعتوں کے اراکین کی مجموعی تعداد 208 جبکہ اپوزیشن میں موجود جماعتوں کے اراکین کی تعداد 128 ہوجائے گی۔

 

Posted in تازہ ترین, جنرل خبریںTagged
90845

پی ٹی آئی 15 دن میں مخصوص نشستوں کی فہرستیں دے اور الیکشن کمیشن نوٹس جاری کرے، تحریری فیصلہ

Posted on

پی ٹی آئی 15 دن میں مخصوص نشستوں کی فہرستیں دے اور الیکشن کمیشن نوٹس جاری کرے، تحریری فیصلہ

اسلام آباد(چترال ٹائمزرپورٹ) مخصوص نشستوں کے کیس کا مختصر فیصلہ سامنے آگیا جس میں عدالت نے کہا ہے کہ پی ٹی آئی میں شامل 41 ارکان اسمبلی 15 ورکنگ دنوں میں سیاسی جماعت سے وابستگی ظاہر کریں بعدازاں پی ٹی آئی الیکشن کمیشن کے نوٹس پر امیدواروں کی تصدیق کرے۔ سنی اتحاد کونسل کی مخصوص نشستوں کے کیس میں سپریم کورٹ کے آٹھ ججز کا اکثریتی مختصر فیصلہ جاری کردیا گیا۔ چیف جسٹس قاضی فائز عیسیٰ، جسٹس جمال خان مندوخیل کا مختصر اختلافی نوٹ، جسٹس یحییٰ آفریدی کا مختصر اختلافی نوٹ بھی جاری کیا گیا ہے۔مختصر اکثریتی فیصلے میں کہا گیا ہے کہ پی ٹی آئی سیاسی جماعت تھی اور ہے تحریک انصاف نے عام انتخابات 2024ء میں قومی و صوبائی اسمبلیوں سے نشستیں جیتیں، 27 جون کو الیکشن کمیشن کی جانب سے 80 اراکین قومی اسمبلی کی فہرست پیش کی، الیکشن کمیشن کی جانب سے جمع کرائی گئی فہرست بھی مختصر عدالتی فیصلے کا حصہ ہے۔

 

فیصلے میں کہا گیا ہے کہ الیکشن کمیشن کی جمع کرائی گئی فہرست کے مطابق 80 میں سے 39 کو پی ٹی آئی کے امیدوار ظاہر کیا گیا، الیکشن کمیشن نے اپنی فہرست میں 41 امیدوار وں کو آزاد ظاہر کیا، آزاد 41 امیدوار 15 ورکنگ دنوں میں سیاسی جماعت سے وابستگی ظاہر کریں اور پارٹی وابستگی ظاہر کرنے پر الیکشن کمیشن 7 دنوں میں سیاسی جماعت کو نوٹس جاری کرے، سیاسی جماعت الیکشن کمیشن کے نوٹس پر 15 ورکنگ دنوں میں امیدوار کی پارٹی سے وابستگی کی تصدیق کرے۔فیصلے میں کہا گیا ہے کہ آزاد امیدواروں کی پارٹی وابستگی کا تصدیقی عمل مکمل ہونے پر الیکشن کمیشن 7 روز میں فہرست جاری کرے، الیکشن کمیشن آزاد امیدواروں کی پارٹی سے وابستگی کے تمام مراحل مکمل ہونے پر عمل درآمد رپورٹ سپریم کورٹ میں پیش کرے، تحریک انصاف 15دنوں میں مخصوص نشستوں کی فہرستیں جمع کروائے۔ الیکشن کمیشن مخصوص نشستوں تحریک انصاف کو دے کر نوٹی فکیشن جاری کرے۔ججز نے فیصلے میں کہا کہ ہے کہ سپریم کورٹ کے فیصلے کا اطلاق متناسب نمائندگی کے اصول کے تناظر میں تین صوبائی اسمبلیوں پربھی ہوگا، الیکشن کمیشن یا تحریک انصاف کو کوئی وضاحت ضروری ہو تو ہو درخواست دے سکتے ہیں، درخواست آنے کی صورت میں اکثریتی ججز چیمبر میں مناسب ہدایات جاری کریں گے۔

 

الیکشن کمیشن سپریم کورٹ کے فیصلے پر فوری عمل درآمد کرے، بیرسٹر گوہر

اسلام آباد(سی ایم لنکس) چئیرمین پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) کا کہنا ہے کہ الیکشن کمیشن سپریم کورٹ کے فیصلے پر فوری عمل درآمد کرے۔اسلام آباد میں میڈیا سے گفتگو میں چئیرمین پی ٹی آئی بیرسٹر گوہر نے کہا کہ الحمدللہ آج سپریم کورٹ کے فل کورٹ نے پی ٹی آئی کے حق میں سچ کا ساتھ دیا۔ آج 25 کروڑ عوام کے لیے اور محب وطن پاکستانیوں کے لیے خوشی کا دن ہے۔انہوں نے کہا کہ یہ فیصلہ تاریخ میں یاد رکھا جائے گا۔ ہمارا حق آخرکارہمیں مل گیا۔ پاکستان تحریک انصاف کے حق پرڈاکا ڈالا گیا۔ آج 11 ججز نے متفقہ طور پر کہا پی ٹی آئی ان سیٹیوں کی حقدار ہے۔انشاء اللہ اب تمام سیٹیں پی ٹی آئی کو واپس ملیں گی۔ الیکشن کمیشن سپریم کورٹ کے فیصلے پر فوری عمل درآمد کرے۔ ہماری سیٹیں جمہوریت کو مضبوط کریں گی۔اسلام آباد میں میڈیا سے گفتگو میں چئیرمین پی ٹی آئی بیرسٹر گوہر نے کہا کہ الحمدللہ آج سپریم کورٹ کے فل کورٹ نے پی ٹی آئی کے حق میں سچ کا ساتھ دیا۔ آج 25 کروڑ عوام کے لیے اور محب وطن پاکستانیوں کے لیے خوشی کا دن ہے۔انہوں نے کہا کہ یہ فیصلہ تاریخ میں یاد رکھا جائے گا۔ ہمارا حق آخرکارہمیں مل گیا۔ پاکستان تحریک انصاف کے حق پرڈاکا ڈالا گیا۔ آج 11 ججز نے متفقہ طور پر کہا پی ٹی آئی ان سیٹیوں کی حقدار ہے۔انشاء اللہ اب تمام سیٹیں پی ٹی آئی کو واپس ملیں گی۔ الیکشن کمیشن سپریم کورٹ کے فیصلے پر فوری عمل درآمد کرے۔پی ٹی آئی کی رہنما کنول شوزب نے میڈیا سے گفتگو میں کہا کہ آج عدالت نے اقرار کیا کہ پی ٹی آئی کے ساتھ نا انصافی ہوئی۔عدالت کا شکریہ ادا کرتی ہوں۔ پوری دنیا نے دیکھا کہ جمہوریت کا کس طریقے سے استحصال کیا گیا۔ آج آئین کی روح کے مطابق جمہوریت کو مضبوط کیا گیا۔ سپریم کورٹ سے مطالبہ ہے ہمارے لیڈر کے کیس میں بھی انصاف کریں۔اس موقع پررہنما پی ٹی آئی شبلی فراز نے کہا کہ سیاسی تاریخ میں آج کا دن انتہائی اہمیت کا حامل ہے۔ فارم 47 کے ذریعے لوگ منتخب کروائے گئے۔ جب تک ہماری تمام سیٹیں واپس نہیں ملتیں جدو جہد جاری رہے گی۔ ہمیں مخصوص نشستیں تو مل گئیں فارم 47 کے ذریعے چھینی گئی سیٹیں بھی واپس کی جائیں۔

 

چیئرمین سنی اتحاد کونسل کا چیف الیکشن کمشنر سے فوری مستعفی ہونیکا مطالبہ

اسلام آباد(چترال ٹائمزرپورٹ )سنی اتحاد کونسل کے چیئرمین حامد رضا نے چیف الیکشن کمشنر سے فوری مستعفی ہونے کا مطالبہ کر دیا۔عدالتی فیصلے کے بعد سپریم کورٹ کے باہر گفتگو کرتے ہوئے حامد رضا نے کہا کہ الیکشن کمیشن نے مینڈیٹ چرانے کی کوشش کی لیکن کامیاب نہیں ہوسکا، سپریم کورٹ نے بھی الیکشن کمیشن پر اظہار عدم اعتماد کر دیا۔چیئرمین حامد رضا نے کہا ہے کہ آج سپریم کورٹ نے حق دار کو حق ادا کرکے ادارے کا وقار بحال کر دیا ہے۔پی ٹی آئی رہنما شبلی فراز نے کہا کہ سیاسی تاریخ میں آج کا دن انتہائی اہمیت کا حامل ہے، ہمیں مخصوص نشستیں تو مل گئیں لیکن فارم 47 کے ذریعے چھینی گئی سیٹیں بھی واپس کی جائیں۔شبلی فراز نے کہا کہ فارم 47 کے ذریعے لوگ منتخب کروائے گئے، جب تک ہماری تمام سیٹیں واپس نہیں ملتیں جدوجہد جاری رہے گی۔واضح رہے کہ سپریم کورٹ نے سنی اتحاد کونسل کی مخصوص نشستوں سے متعلق پشاور ہائیکورٹ اور الیکشن کمیشن کا فیصلہ کالعدم قرار دیا ہے۔چیف جسٹس آف پاکستان جسٹس قاضی فائز عیسیٰ کی سربراہی میں عدالت عظمیٰ کے 13 رکنی لارجر بینچ نے سنی اتحاد کونسل کی مخصوص نشستوں کے حوالے سے کیس کا فیصلہ محفوظ کیا تھا، جسے جسٹس منصور علی شاہ نے سنایا۔عدالت نے 13مئی کا الیکشن کمیشن کا نوٹیفکیشن غیر آئینی قرار دے دیا۔ سپریم کورٹ کے اکثریتی فیصلے میں کہا گیا ہے کہ انتخابی نشان سے محروم رکھ کر کسی پارٹی کو انتخابی عمل سے محروم نہیں کیا جاسکتا۔

 

Posted in تازہ ترین, جنرل خبریںTagged
90840

کسی یونیورسٹی کے انضمام پر بات نہیں کی گئی۔ ٹاسک فورس کی توجہ معیار اور مستقبل کے روڈ میپ کو بہتر بنانے پر مرکوز ہے عوام میڈیا کی افواہوں پر کان نہ دھریں۔ ڈاکٹر ضیاء

Posted on

کسی یونیورسٹی کے انضمام پر بات نہیں کی گئی۔ ٹاسک فورس کی توجہ معیار اور مستقبل کے روڈ میپ کو بہتر بنانے پر مرکوز ہے عوام میڈیا کی افواہوں پر کان نہ دھریں۔ ڈاکٹر ضیاء

چوتھی ٹاسک فورس کمیٹی کے اجلاس میں خیبرپختونخوا یونیورسٹیوں میں اعلیٰ تعلیمی اصلاحات پر تبادلہ خیال

پشاور ( چترال ٹائمزرپورٹ ) صوبائی ٹاسک فورس کمیٹی کا چوتھا اجلاس خیبر میڈیکل یونیورسٹی (کےایم یو ) میں وائس چانسلر میرٹوریئس پروفیسر ڈاکٹر ضیاء الحق کی زیر صدارت منعقد ہوا۔ وزیر اعلیٰ خیبر پختون خوا اور اعلیٰ تعلیم کے صوبائی وزیر مینا خان افریدی کی طرف سے تشکیل دی گئی اس کمیٹی کے ممبران میں ایچ ای سی (آئی ٹی) اسلام آباد سے پروفیسر ڈاکٹر جمیل احمد، پروفیسر ڈاکٹر عبدالسلام خالص، پروفیسر ڈاکٹر قبلہ ایاز آئی ایم سائنسز کے ڈائریکٹر پروفیسر ڈاکٹر عثمان غنی ، یو ای ٹی پشاور سے پروفیسر ڈاکٹر گل محمد، آئی ایم سائنسز پشاور سے پروفیسر ڈاکٹر ظہور خان، ڈائریکٹرکالجز فرید اللہ شاہ، پروفیسر ڈاکٹر رضا شاہ، ڈاکٹر عبداللہ صادق ،ڈاکٹر محسن حبیب ڈپٹی سیکرٹری یونیورسٹیز، پروفیسر ڈاکٹر شفیق الرحمان ایڈوائزرکیو اے ایچ ای ڈی، پروفیسر ڈاکٹر حفیظ اللہ اور ڈاکٹر عبدالصادق نے شرکت کی۔

 

وزیر اعلیٰ علی امین گنڈا پور اور صوبائی وزیر برائے اعلیٰ تعلیم مینا خان افریدی خیبر پختونخوا کے اعلیٰ تعلیمی نظام میں جدت اور معیار کی یقین دہانی کو بڑھانے کے لیے کوشاں ہیں۔ خیبر پختون خوا حکومت صوبے کی تمام یونیورسٹیوں کے مالی استحکام کو یقینی بنانے کے لیے پرعزم ہے۔ میڈیا کی افواہوں کے برعکس یونیورسٹیوں کو ضم کرنے کے لیے کوئی بات چیت نہیں ہو رہی۔ اس کے بجائے، ٹاسک کمیٹی کی توجہ صرف معیار کو بہتر بنانے اور تمام یونیورسٹیوں کے لیے مستقبل کا روڈ میپ دینے پر مرکوز ہے۔

 

ٹاسک فورس کمیٹی اپنی سفارشات کی رہنمائی کے لیے ایک بنیادی خاکہ تیار کر رہی ہے، جو 31 جولائی 2024 کو صوبائی حکومت کو پیش کی جائے گی۔ ان سفارشات کا مقصد خیبر پختونخوا میں اعلیٰ تعلیم میں نمایاں بہتری اور جدت، اورممکنہ طور پر اس شعبے میں انقلاب لانا ہے۔ مجوزہ اقدامات سیکٹرل پلانز، پالیسی سفارشات، فنڈز اور وسائل کے بہترین استعمال، مالیاتی بحران کے انتظام اور اعلیٰ تعلیمی اداروں میں وسائل کی اصلاح پر توجہ مرکوز کریں گے

 

 

Posted in تازہ ترین, جنرل خبریں
90830

وزیراعلیٰ کا قرآن محل کی تعمیر، رحمت للعالمین کانفرس اورعلماء اور مشائخ کانفرنس سرکاری سطح پر منعقد کرانے کا فیصلہ

Posted on

وزیراعلیٰ خیبرپختونخوا کی زیر صدارت محکمہ اوقاف کا اجلاس
وزیراعلیٰ کا قرآن محل کی تعمیر، رحمت للعالمین کانفرس اورعلماء اور مشائخ کانفرنس سرکاری سطح پر منعقد کرانے کا فیصلہ

پشاور ( چترال ٹائمزرپورٹ ) وزیر اعلیٰ خیبر پختونخوا سردار علی امین خان گنڈاپورنے قرآن مجید کے ضعیف نسخوں کو محفوظ بنانے کیلئے صوبائی دارلحکومت پشاور میں قرآن محل تعمیر کرنے کا فیصلہ کیا ہے اور پشاور ڈویلپمنٹ اتھارٹی کو اس مقصد کیلئے زمین فراہم کرنے کی ہدایت کی ہے ۔ اُنہوں نے واضح کیا کہ قرآن محل کو اسلامی طرز تعمیر کا ایک خوبصورت نمونہ ہونا چاہیے۔ صوبہ بھر سے قرآن مجید کے ضعیف نسخے قرآن محل میں محفوظ کئے جائیں گے۔ وہ گزشتہ روز وزیراعلیٰ ہاﺅس پشاور میں محکمہ اوقاف اور مذہبی اُمور کے پہلے اجلاس کی صدارت کر رہے تھے۔صوبائی وزیر برائے اوقاف عدنان قادری، پرنسپل سیکرٹری برائے وزیراعلیٰ امجد علی خان، سیکرٹری اوقاف اور دیگر متعلقہ حکام نے اجلاس میں شرکت کی ۔

 

وزیر اعلیٰ کو محکمے کے انتظامی امور، مالی معاملات، وقف جائیدادوں کی لیز پالیسی اور دیگر اُمور بارے تفصیلی بریفنگ دی گئی ۔ وزیراعلیٰ نے رواں سال رحمت للعالمین کانفرنس صوبہ بھر میں سرکاری سطح پر شایان شان انداز میں منعقد کرنے کا فیصلہ کیا اور متعلقہ حکام کو ہدایت کی کہ صوبائی دارالحکومت پشاور کے ساتھ ساتھ تمام ڈویژنل اور ڈسٹرکٹ ہیڈکوارٹرز میں رحمت للعالمین کانفرنس کے انعقاد کے لیے انتظامات کئے جائیں، وزیر اعلیٰ نے صوبائی سطح پر رحمت للعالمین کانفرنس کے انعقاد کے لئے 50 لاکھ، ڈویژنل سطح پر کانفرسز کے لئے 20،20 لاکھ جبکہ اضلاع کی سطح پر کانفرنسز کے لئے 10، 10 لاکھ روپے فراہم کرنے کا اعلان کیا۔ اُنہوں نے اس موقع پر علماءو مشائخ کانفرنس بھی دوبارہ سرکاری سطح پر منعقد کرانے کا فیصلہ کیا ہے۔ مزید برآں اُنہوںنے متعلقہ حکام کو پشاور شہر میں قبرستان کی ضرورت کو پورا کرنے کے سلسلے میں سرکای قبرستان کے لئے موزوں زمین کی نشاندہی کی ہدایت کی ہے۔ اجلاس میں اوقاف کی جائیدادوں کے بہتر انتظام و انصرام کے لئے محکمہ اوقاف میں ایسٹ مینجمنٹ یونٹ کے قیام اور صوبہ بھر میں اوقاف کی جائیدادوں کی جی آئی ایس میپنگ کا بھی فیصلہ کیا گیا ہے۔ اسی طرح محکمہ اوقاف کی جائیدادوں سے متعلق مختلف عدالتوں میں زیر سماعت کیسز کی بہتر انداز میں پیروی کے لئے لاءفرم ہائیر کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔

 

 

Posted in تازہ ترین, جنرل خبریں
90825

جہاں کالجز کی ضروت ہے وہیں کرایہ کی عمارات میں نئے کالجز کے قیام کے لے فیزیبلٹی پر کام شروع کر کے 10 دنوں میں فیزیبلٹی رپورٹ پیش کی جائیں۔ صوبائی وزیراعلیٰ تعلیم مینا خان 

جہاں کالجز کی ضروت ہے وہیں کرایہ کی عمارات میں نئے کالجز کے قیام کے لے فیزیبلٹی پر کام شروع کر کے 10 دنوں میں فیزیبلٹی رپورٹ پیش کی جائیں۔ صوبائی وزیراعلیٰ تعلیم مینا خان

 

پشاور (چترال ٹائمزرپورٹ) خیبر پختونخوا کے وزیر برائے اعلی تعلیم مینا خان آفریدی نے محکمہ اعلی تعلیم کے متعلقہ افسران کو ہدایت جاری کی ہے کہ کرایہ کی عمارات میں نئے کالجز کے قیام کے لے فیزیبلٹی پر کام شروع کر کے 10 دنوں میں فیزیبلٹی رپورٹ پیش کی جائیں، انہوں نے مزید ہدایت کی کہ جہاں پر نئے کالجز کی زیادہ ضرورت ہو ان اضلاع کے دورے کرکے کالجز کے لیے موزوں عمارات کا تفصیلی معائنہ کریں صوبائی وزیر نے یہ ہدایات صوبے میں نئے کالجز کو کرایہ کی عمارات میں شروع کرنے کے حوالے سے جائزہ اجلاس کی صدارت کرتے ہوئے جاری، کیں اجلاس میں محکمہ اعلیٰ تعلیم کے افسران نے شرکت کی اجلاس میں صوبائی وزیر کو کرایہ کے عمارات نئے کالجز کے قیام پر منصوبے پر تفصیلی بریفنگ دی گئی اور سکیم کے بنیادی مقصد سے آگاہ کیا گیا، صوبائی وزیر نے متعلقہ افسران کو مزید ہدایت کی کہ کرایہ کی عمارات میں کالجز شروع کرنے کی فیزیبیٹی پر کام میں تیزی لائی جائے کیونکہ ستمبر کے مہینے میں کالجز کا نیا سیشن شروع ہوگا نیا سیشن شروع ہونے سے پہلے اس منصوبے کو عملی جامعہ پہنایا جائے۔

Posted in تازہ ترین, جنرل خبریں
90822

سپریم کورٹ کے فیصلہ سے قانون، آئین اور جمہوریت کی مزید بالادستی ہوئی ہے، اس تاریخی فیصلے کے بعد چیف الیکشن کمشنر کو فوری مستعفی ہونا چاہیئے، بیرسٹر ڈاکٹر سیف 

Posted on

سپریم کورٹ کے فیصلہ سے قانون، آئین اور جمہوریت کی مزید بالادستی ہوئی ہے، اس تاریخی فیصلے کے بعد چیف الیکشن کمشنر کو فوری مستعفی ہونا چاہیئے، بیرسٹر ڈاکٹر سیف

 

پشاور (چترال ٹائمزرپورٹ) وزیر اعلیٰ خیبر پختونخوا کے مشیر اطلاعات و تعلقات عامہ بیرسٹر ڈاکٹر سیف نے سپریم کے تاریخی فیصلے پر پوری قوم اور پی ٹی آئی کے کارکنوں کو مبارکباد دیتے ہوئے کہا کہ سپریم کورٹ کا فیصلہ قانون، آئین اور جمہوریت کی بالادستی ہے، اس فیصلے نے عمران خان اور پارٹی کے موقف پر مہر تصدیق ثبت کردی۔ جمعہ کو جاری بیان میں بیرسٹر ڈاکٹرسیف کا کہنا تھا کہ اس فیصلے سے ثابت ہوا کہ ہمارا موقف حق و سچ پر مبنی تھا، سپریم کورٹ فیصلے سے ملک میں جاری آئینی بحران کا خاتمہ ہوا۔ ان کا کہنا تھا کہ آئندہ بھی سپریم کورٹ سے آئین اور قانون پر مبنی فیصلوں کی توقع رکھتے ہیں مشیر اطلاعات کا کہنا تھا کہ مخصوص نشستیں ملنے سے پارلیمنٹ میں پی ٹی آئی مضبوط ہوگی اور جعلی فارم 47 حکومت کا اپنے فائدے کے لئے آئینی ترامیم کا راستہ بھی رک جائیگا۔ ان کا کہنا تھا کہ فیصلے سے الیکشن کمیشن کا منفی کردار مزید عیاں ہوگیا ہے،اس تاریخی فیصلے کے بعد چیف الیکشن کمشنر کو فوری مستعفی ہونا چاہیئے۔

Posted in تازہ ترین, جنرل خبریں
90820

پاکستان میں مہنگی بجلی کی بڑی وجہ سامنے آ گئی، ماہرین کے چشم کشا انکشافات

Posted on

پاکستان میں مہنگی بجلی کی بڑی وجہ سامنے آ گئی، ماہرین کے چشم کشا انکشافات

کراچی(چترال ٹائمزرپورٹ) پاکستان میں بجلی مہنگی ہونے کی بڑی وجہ سامنے آ گئی، اس حوالے سے ماہرین نے حیران کن انکشافات کیے ہیں۔ملک میں ہوشربا پاور ٹیرف کی بنیادی وجہ اسے امریکی انفلیشن انڈیکس کے ساتھ منسلک کرنا ہے۔ یہ حیرت انگیز انکشاف سسٹین ایبل پالیسی انسٹیٹیوٹ (ایس پی آئی) کی جانب سے کونسل آف اکنامک اینڈ انرجی جرنلسٹس (سیج) کو دی گئی ایک بریفنگ میں کیا گیا ہے۔سیج کو دی گئی بریفنگ میں ایس پی آئی نے انکشاف کیا کہ مہنگائی امریکا میں ہوگی اور بجلی کی قیمت پاکستان میں بڑھے گی کیوں کہ آئی پی پیز امریکی مہنگائی کی قیمت پاکستانیوں سے وصول کرتی ہیں۔ سیٹین ایبل پالیسی انسٹیٹیوٹ کے انرجی ریسرچ فیلو ڈاکٹر خالد ولید اور احد نظیر کی جانب سے بریفنگ میں مزید بتایا گیا ہے کہ آئی پی پیز کے حکومت پاکستان سے بجلی معاہدے میں امریکی انفلیشن انڈیکس کو منسلک کیا گیا ہے۔

 

آئی پی پیز کے ٹیرف میں امریکی انفلیشن کو بھی انڈیکس کیا گیا ہے۔ڈاکٹر خالد ولید نے بتایا ہے کہ امریکی ڈالر کی قدر گرنے پر بھی پاکستان میں بجلی کا ٹیرف بڑھے گا۔ امریکا میں انفلیشن کی وجہ سے سال 2019ء سے سال 2024ء کے دوران ٹیرف کمپوننٹ میں 253فیصد کا اضافہ ہوا۔ ایس پی آئی ڈیٹا کے مطابق سال 2019 کے دوران پاکستان میں بجلی کی کپیسٹی چارجز کی رقم 3روپے 26پیسے فی یونٹ تھی جو سال 2024 میں بڑھ کر 10روپے 34 پیسے فی یونٹ ہو گئی ہے۔بریفنگ میں یہ بھی انکشاف کیا گیا ہے کہ امریکی مہنگائی کے ساتھ مقامی ملکی مہنگائی کا اثر بھی بجلی کے کپیسٹی چارجز میں شامل ہوگا جو عوام ہی کو دینا پڑے گا۔ ملک میں شرح سود بڑھنے سے گزشتہ 4 سال کے دوران بجلی کے یونٹ میں سودی ادائیگی 343فیصد بڑھ گئی ہے۔ آئی پی پیز کے ورکنگ کیپٹل نے 4 سال میں بجلی کا ایک یونٹ 716فیصد مہنگا کیا ہے۔بریفنگ میں انکشاف کیا گیا ہے کہ بجلی کے ٹیرف میں 12 سے 20فیصد تک ٹیکس جب کہ 70 فیصد کپیسٹی چارجز شامل ہیں۔ پاکستان میں بجلی کی پیداواری گنجائش 43 ہزار میگاواٹ اور ٹرانسمیشن کی صلاحیت 23 ہزار میگاواٹ ہے۔ یہ بھی انکشاف کیا گیا ہے کہ ملک میں سولرائزیشن کی وجہ سے شہریوں پر کپیسٹی چارجز کا اثر مزید بڑھے گا۔ پاور پلانٹ لگانے میں سیاسی فائدہ لیکن ٹرانسمیشن لائن بچھانے میں سیاسی فائدہ نہیں ہے۔

زیادہ مہنگے آئی پی پیز سے معاہدے ختم کرنے کا جائزہ لے رہے ہیں، وزیر توانائی

اسلام آباد(سی ایم لنکس)وزیر توانائی اویس لغاری نے کہا ہے کہ زیادہ مہنگے آئی پی پیز سے معاہدے ختم کرنے کا جائزہ لے رہے ہیں، آئی پی پیز سے متعلق اقدامات کر رہے ہیں جس کے اچھے نتائج سامنے آئیں گے۔توانائی کمیٹی کے اجلاس کے بعد میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے انہوں ں ے کہا کہ ملک میں بجلی کی طلب میں 10 فیصد تک کمی ہوگئی، آئی پی پیز کے حوالے سے بہت کچھ کررہے ہیں دیکھ رہے ہیں کہ کس آئی پی پی کا کتنا عرصہ باقی رہ گیا، کس آئی پی پی سے ہمیں کتنا فائدہ اور کتنا نقصان ہے ہم ان عوامل کا جائزہ لے رہے ہیں۔وزیر توانائی نے کہا کہ زیادہ مہنگے آئی پی پیز کو نکالنے کا کیا طریقہ ہے اس کی قیمت کیا ہوگی یہ سب دیکھنا ہوگا، آئی پی پیز کو نکالنے کی قیمت کیا آج ہم برداشت کرسکتے ہیں؟ آئی پی پیز کے معاملے کو مختلف حوالوں سے دیکھا جارہا ہے، وزیراعظم کی ہدایات کے مطابق بہت جلد اس پر کوئی نہ کوئی فیصلہ ہوگا۔اویس لغاری نے کہا کہ آئی پی پیز کے خاتمے والے شیخ رشید صاحب قسم کے بیانات نہیں دے سکتے، بجلی ٹیرف بڑھنے سے جنوری کے بعد ایڈجسٹمنٹ نہ ہونے سے قیمتیں کم رہیں گی۔

 

 

Posted in تازہ ترین, جنرل خبریںTagged
90805

سپریم کورٹ؛ سنی اتحاد کونسل کی مخصوص نشستوں کے کیس کا فیصلہ کل جمعہ کے دن سنایا جائے گا

Posted on

سپریم کورٹ؛ سنی اتحاد کونسل کی مخصوص نشستوں کے کیس کا فیصلہ کل جمعہ کے دن سنایا جائے گا

اسلام آباد(چترال ٹائمزرپورٹ) سپریم کورٹ سنی اتحاد کونسل کی مخصوص نشستوں کے کیس کا فیصلہ کل (جمعہ)سنائے گی۔ذرائع کے مطابق چیف جسٹس پاکستان قاضی فائز عیسیٰ کی زیر صدارت مشاورتی اجلاس ہوا جس میں مخصوص نشستوں کے کیس کی سماعت کرنے والے فل کورٹ میں شامل تیرہ ججز نے شرکت کی۔اجلاس تقریباً چالیس منٹ تک جاری رہا جس میں کیس کے فیصلے پر غور کیا گیا۔ ذرائع کے مطابق سپریم کورٹ کا تیرہ رکنی فل کورٹ کل کیس کا فیصلہ سنائے گا۔چیف جسٹس قاضی فائز عیسیٰ، جسٹس سید منصور علی شاہ، جسٹس منیب اختر، جسٹس یحییٰ آفریدی، جسٹس امین الدین خان، جسٹس جمال خان مندوخیل، جسٹس محمد علی مظہر، جسٹس عائشہ ملک، جسٹس اطہر من اللّٰہ، جسٹس سید حسن اظہر رضوی، جسٹس شاہد وحید، جسٹس عرفان سعادت خان اور جسٹس نعیم اختر افغان فل کورٹ کا حصہ ہیں۔واضح رہے کہ سپریم کورٹ نے منگل کو سنی اتحاد کونسل کی مخصوص نشستوں سے متعلق کیس کا فیصلہ محفوظ کیا تھا۔

 

مخصوص نشستیں کیس: چیف جسٹس کی سربراہی میں مشاورتی اجلاس

اسلام آباد(سی ایم لنکس)سپریم کورٹ میں مخصوص نشستوں سے متعلق کیس پر ہونے آج ہونے والا مشاورتی اجلاس ختم ہوگیا۔ چیف جسٹس قاضی فائز عیسیٰ کی سربراہی میں فل کورٹ بینچ کا اجلاس ہوا۔ مشاورتی اجلاس میں فل کورٹ بینچ میں شامل تمام ججز موجود تھے۔ خیال رہے کہ سنی اتحاد کونسل کی مخصوص نشستوں سے متعلق کیس کا فیصلہ آج سنائے جانے کا امکان ہے۔ اس سے قبل بھی چیف جسٹس قاضی فائز عیسیٰ کی زیر صدارت کیس کے فیصلے سے متعلق مشاورتی اجلاس ہوا تھا۔مخصوص نشستوں سے متعلق گزشتہ اجلاس تقریباً ڈیڑھ گھنٹہ جاری رہا تھا، اجلاس میں 13 رکنی فل کورٹ میں شامل تمام ججز شریک ہوئے تھے۔جسٹس سید منصور علی شاہ، جسٹس منیب اختر، جسٹس یحییٰ آفریدی، جسٹس امین الدین خان، جسٹس جمال خان مندوخیل، جسٹس محمد علی مظہر، جسٹس عائشہ ملک، جسٹس اطہر من اللّٰہ، جسٹس سید حسن اظہر رضوی، جسٹس شاہد وحید، جسٹس عرفان سعادت خان اور جسٹس نعیم اختر افغان فل کورٹ کا حصہ ہیں۔ذرائع نے بتایا تھا کہ گزشتہ اجلاس میں مخصوص نشستوں سے متعلق کیس کے فیصلے سے متعلق غور کیا گیا۔سپریم کورٹ میں مخصوص نشستوں کے کیس میں کب کیا ہوا؟سپریم کورٹ آف پاکستان میں چیف جسٹس پاکستان قاضی فائز عیسیٰ کی سربراہی میں 13 رکنی فل کورٹ نے مخصوص نشستوں پر سنی اتحاد کونسل کی اپیلیں سنیں۔31 مئی کو سنی اتحاد کونسل کی اپیلوں پر دستیاب ججز کا فل کورٹ بینچ تشکیل دیا گیا، جس نے سنی اتحاد کونسل کی مخصوص نشستوں پر اپیلوں کی 9 سماعتیں کیں۔سنی اتحاد کونسل کے وکیل نے عدالت کو بتایا کہ مجموعی طور پر 77 متنازع نشستیں ہیں، یہ 77 مخصوص نشستیں سنی اتحاد کونسل کو ملنی چاہیے تھیں مگر دیگر جماعتوں کو ملیں، 77 نشستوں میں قومی اسمبلی کی 22 اور صوبائی اسمبلیوں کی 55 نشستیں شامل ہیں۔الیکشن کمیشن نے سپریم کورٹ کے حکم کے بعد 77 متنازع مخصوص نشستوں کو معطل کر دیا تھا۔کْل77 متنازع نشستوں میں سے 22 قومی اور 55 صوبائی اسمبلیوں کی مخصوص نشستیں ہیں۔الیکشن کمیشن پاکستان نے 13مئی کے نوٹیفکیشن کے ذریعے ان نشستوں کو معطل کر دیا تھا۔قومی اسمبلی کی معطل 22 نشستوں میں پنجاب سے خواتین کی 11، خیبر پختون خوا سے 8 سیٹیں شامل ہیں۔قومی اسمبلی میں معطل نشستوں میں 3 اقلیتی مخصوص نشستیں بھی شامل ہیں۔قومی اسمبلی میں ن لیگ کو 14، پیپلز پارٹی کو 5، جے یو ا?ئی ف کو 3 اضافی نشستیں ملی تھیں۔خیبر پختون خوا اسمبلی میں 21 خواتین اور 4 اقلیتی مخصوص نشستیں معطل ہیں جن میں سے جے یو ا?ئی ف کو 10، مسلم لیگ ن کو 7، پیپلز پارٹی کو 7، اے این پی کو 1 اضافی نشست ملی تھی۔پنجاب اسمبلی میں 24 خواتین کی مخصوص نشستیں اور 3 اقلیتی نشستیں معطل ہیں، جن میں سے ن لیگ کو 23، پیپلز پارٹی کو 2، پی ایم ایل ق اور استحکامِ پاکستان پارٹی کو ایک ایک اضافی نشست ملی تھی۔سندھ اسمبلی سے 2 خواتین کی مخصوص نشستیں اور 1 اقلیتی نشست معطل ہیں جہاں پیپلز پارٹی کو 2 اور ایم کیو ایم کو 1 مخصوص نشست ملی تھی۔

Posted in تازہ ترین, جنرل خبریںTagged
90808

حکومت کا نئی پاسپورٹ پرنٹنگ مشینیں منگوانے کا فیصلہ، بحران ختم ہونے کی اْمید

Posted on

حکومت کا نئی پاسپورٹ پرنٹنگ مشینیں منگوانے کا فیصلہ، بحران ختم ہونے کی اْمید

اسلام آباد(چترال ٹائمزرپورٹ) حکومت نے پاسپورٹس کے لیے نئی پرنٹنگ مشینیں منگوانے کا فیصلہ کرلیا، جس کے بعد اس حوالے سے جاری بحران ختم ہونے کی امید پیدا ہوگئی ہے۔ملک بھر میں پاسپورٹ بنانے میں تاخیر کا مسئلہ حل ہونے کے قریب ہے اور حکومت کی جانب سے ملک بھر میں پاسپورٹس بحران کے خاتمے کے لیے اقدامات تیز کردیے گئے ہیں۔حکومت نے پاسپورٹس پرنٹ کرنے والی نئی مزید مشینیں منگوانے کا فیصلہ کرلیا، اس حوالے سے ڈی جی پاسپورٹس اینڈ امیگریشن کو ریکوزیشن تیار کرکے وزارت داخلہ کو ارسال کردی گئی ہے، جس کے بعد توقع کی جا رہی ہے کہ ستمبر میں نئی مشینیں بیرون ملک سے منگوا لی جائیں گی۔پاسپورٹ حکام کے مطابق نئی مشینوں میں 6 ڈیسک ٹاپ اور 2 ای پاسپورٹ مشینیں منگوائی جائیں گی۔ نئی مشینیں ایک گھنٹے میں ایک ہزار پاسپورٹ پرنٹ کرنے کی صلاحیت رکھتی ہیں۔واضح رہے کہ ملک بھر میں گزشتہ ایک سال سے پاسپورٹ بننے کا عمل تاخیر کا شکار ہے، جس کی وجوہات میں کاغذکی کمی اور مشینریوں کی کم استعداد کار تھی اور نتیجتاً شہریوں کو بڑی پریشانی کا سامنا کرنا پڑ رہا تھا۔

 

 

آئی ایم ایف کا نئے قرض پروگرام کیلئے پاکستان سے ڈو مور کا مطالبہ

اسلام آباد(سی ایم لنکس)آئی ایم ایف نے نئے قرض پروگرام کے لیے پاکستان سے ڈو مور کا مطالبہ کردیا۔ذرائع کے مطابق آئی ایم ایف نے زراعت پر انکم ٹیکس وصولی بہتر بنانے کا مطالبہ کیا ہے۔ذرائع کا بتانا ہے کہ آئی ایم ایف کے ماہرین نے چاروں صوبوں سے ورچوئل مذاکرات کیے، آئی ایم ایف کے ماہرین نے ہر صوبائی حکومت سے الگ مذاکرات کیے جس میں وزارت خزانہ کے وفاقی اور صوبائی افسران بھی شامل تھے۔ذرائع کے مطابق چاروں صوبوں نے زرعی انکم ٹیکس پر آئی ایم ایف کا مطالبہ مان لیا ہے، زرعی آمدن پر صوبوں نے آئی ایم ایف کو بھرپور تعاون کی یقین دہانی کرا دی ہے اور زرعی آمدن پر ٹیکس کی وصولی کا پلان مرتب کرنے کیلئے دو دن کا وقت مانگ لیا گیا ہے۔ذرائع کا کہنا ہے کہ چاروں صوبائی حکومتیں 12 جولائی تک پلان جمع کرائیں گی، زرعی آمدن پر انکم ٹیکس کی شرح سالانہ 6 لاکھ سے زائد آمدن پر عائد ہوگی، زرعی آمدن پر انکم ٹیکس کے ریٹ بھی نارمل انکم ٹیکس کے حساب سے ہوں گے۔ذرائع کے مطابق زرعی آمدن پر وفاق اور صوبے ایک پیج پر آجائیں گے، خیبرپختونخوا حکومت نے بھی آئی ایم ایف سے مثبت مذاکرات کیے، ا?ئی ایم ایف نے خیبرپختونخوا کے 100 ارب روپے سرپلس بجٹ کو سراہا۔

 

 

Posted in تازہ ترین, جنرل خبریں
90802

وزیراعلیٰ کے زیر صدارت محکمہ لوکل گورنمٹ کا اجلاس، محکمہ بلدیات کی جائیدادوں کولیز پردینے اور تحصیل میونسپل ایڈمنسٹریشن کے جملہ معاملات کو ڈیجیٹائز کرنے کا فیصلہ

Posted on

وزیراعلیٰ کے زیر صدارت محکمہ لوکل گورنمٹ کا اجلاس، محکمہ بلدیات کی جائیدادوں کولیز پردینے اور تحصیل میونسپل ایڈمنسٹریشن کے جملہ معاملات کو ڈیجیٹائز کرنے کا فیصلہ

پشاور ( چترال ٹائمزرپورٹ ) وزیر اعلیٰ خیبرپختونخوا سردار علی امین خان گنڈاپور کی زیر صدارت محکمہ لوکل گورنمنٹ کا اہم اجلاس جمعرات کے روز وزیر اعلیٰ ہاوس پشاور میں منعقد ہوا جس میں محکمے کے موجودہ نظام میں اصلاحات پر تفصیلی غور و خوص کیا گیا اور اہم فیصلے کیے گئے۔ صوبائی وزیر برائے بلدیات ارشد ایوب خان ، وزیر اعلیٰ کے پرنسپل سیکرٹری امجد علی خان، اسپیشل سیکرٹری وقارعلی خان، متعلقہ محکموں کے انتظامی سیکرٹریز اور دیگر اعلیٰ حکام نے اجلاس میں شرکت کی۔ اجلاس میں صوبے کی آمدن بڑھانے کےلئے محکمہ بلدیات کی جائیدادوں کے موثر استعمال کے سلسلے میں ایک اہم اقدام کے طور پر لوکل گورنمنٹ کے پراپرٹی لیز رولز 2024 کے مسودے کو حتمی شکل دے دی گئی جو حتمی منظوری کے لئے صوبائی کابینہ کو پیش کیے جائیں گے۔

 

مجوزہ رولز کے تحت بڑے پیمانے پر نجی سرمایہ کاری کے لئے پراپرٹی لیزز کی مدت 99 سال تک بڑھانے کی تجویز دی گئی ہے۔ تفصیلات کے مطابق پچاس کروڑ روپے سے زائد کی سرمایہ کاری پر لیز کی ابتدائی مدت 66 سال تجویز کی گئی ہے جو مزید 33 سالوں کے لیے قابل توسیع ہوگی۔ 50 کروڑ روپے تک کی سرمایہ کاری پر ابتدائی لیز کی مدت 33 سال ہو گی جو مزید 33 سالوں کے لئے قابل توسیع ہوگی۔ اسی طرح 20 کروڑ روپے تک کی سرمایہ کاری پر لیز کی بنیادی مدت 33 سال تجویز کی گئی ہے جو مزید 15 سالوں تک قابل توسیع ہوگی۔ علاوہ ازیں مجوزہ رولز میں لیز ہولڈر کی وفات کی صورت میں باقی ماندہ مدت کےلئے لیز کے حقوق قانونی وارث کو منتقل کرنے کی تجویز بھی دی گئی ہے۔ محکمہ بلدیات کی جائیدادوں کو لیز پر دینے کے لئے متعلقہ ڈپٹی کمشنر کی سربراہی میں لیز کمیٹی تشکیل دی جائے گی۔

 

وزیر اعلیٰ نے لیزنگ کے لیے آن لائن سسٹم متعارف کرانے کی ہدایت کی ہے تاکہ بیرون ممالک موجود سرمایہ کار بھی بآسانی مستفید ہو سکیں۔ وزیر اعلیٰ کا کہنا تھا کہ ہم نے اپنے سسٹم کو مضبوط بنانا ہے اور سرمایہ کاروں کو سہولیات فراہم کرنی ہیں، حتمی مقصد اپنے وسائل سے بھرپور استفادہ کر کے صوبے کی آمدن میں اضافہ کرنا ہے۔ اجلاس میں صوبے کے تمام اضلاع میں ٹی ایم ایز کی زیر نگرانی فروٹ اینڈ ویجیٹیبل مارکیٹس قائم کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے، فروٹ اینڈ ویجیٹیبل مارکیٹس کے قیام کے لئے نجی سرمایہ کاروں کی حوصلہ افزائی کی جائے گی۔ اجلاس میں اس مقصد کے لئے متعلقہ لیگل فریم ورک میں ترامیم کو بھی حتمی شکل دی گئی جو حتمی منظوری کے لئے کابینہ کے اگلے اجلاس میں پیش کی جائیں گی۔ وزیر اعلیٰ نے اس موقع پر متعلقہ حکام کو ہدایت کی کہ ہم نے نہ صرف نئی منڈیاں قائم کرنی ہیں بلکہ پہلے سے موجود منڈیوں کو بھی ریگولیٹ کرنا ہے، نئی منڈیوں کے قیام کا مقصد لوگوں کو سہولیات کی فراہمی ہے۔ علی امین گنڈاپور کا کہنا تھا کہ منڈیاں جتنی زیادہ ہوں گی اسی قدر معیار اور قیمتوں کو استحکام ملے گا۔

 

وزیر اعلیٰ نے کہا کہ یہ منڈیاں ضرورت کی بنیاد پر مناسب مقامات پر قائم کی جائیںگی۔ مزید برآں اجلاس میں تحصیل میونسپل ایڈمنسٹریشن کے جملہ معاملات کو ڈیجیٹائز کرنے کا بھی فیصلہ کیا گیا ہے۔ وزیر اعلیٰ نے محکمہ لوکل گورنمنٹ کی ڈیجٹلائزیشن کے مجوزہ پلان سے بھی اتفاق کیا جس کے اہم فیچرز میں ای ٹی ایم ایز، انٹگریٹڈ پورٹل، ڈیش بورڈ کا قیام، ڈیجیٹل پیمنٹس، ریونیو جنریشن، پرفارمنس مینجمنٹ اور پبلک سروس ڈیلیوری شامل ہیں۔ وزیر اعلیٰ نے ڈیجیٹائزیشن کے منصوبے پر بلاتاخیر عمل درآمد شروع کرنےکی ہدایت کرتے ہوئے واضح کیا کہ محکمہ کے ملازمین، پراپرٹیز، لیزز، پیمنٹس، ریونیو کولیکشن اور پرفارمنس سمیت تمام امور ڈیش بورڈ پر دستیاب ہونے چاہئیں۔ٹی ایم ایز کی ہر قسم کی ٹرانزیکشنز بینک اکاونٹس کے ذریعے یقینی بنائی جائیں۔ وزیر اعلیٰ نے کہا کہ ٹی ایم ایز ورکرز فرنٹ لائن پر کام کرتے ہیں، ہم نے ان کے بارے منفی تاثر کو ختم کرنا ہے۔ ان کا مزید کہنا تھا کہ لوکل گورنمنٹ کا سکوپ بہت وسیع ہے، یہ صوبہ بھر میں نچلی سطح تک کام کرتا ہے، اس لیے اس کے تمام ذیلی اداروں کو مضبوط بنانا ہو گا تاکہ اس کے تحت سروسز ڈیلیوری کے نظام کو بہتر بنایا جا سکے اور اس کی پراپرٹیز کو صوبائی حکومت کی آمدن میں اضافہ کے لیے مو ثر انداز میں استعمال میں لایا جاسکے۔

 

 

Posted in تازہ ترین, جنرل خبریںTagged
90798

نئے پنشن قوانین کیلیے فوج کو ایک سال کی مہلت دی گئی ہے، وزیر خزانہ

نئے پنشن قوانین کیلیے فوج کو ایک سال کی مہلت دی گئی ہے، وزیر خزانہ

اسلام آباد(چترال ٹائمزرپورٹ)وزیر خزانہ محمد اورنگ زیب نے کہا ہے کہ پنشن کے حوالے سے فوج کا اسٹرکچر مختلف ہے انہیں اپنا پورا سروس اسٹرکچر تبدیل کرنے پڑے گا جس کے لیے انہیں پنشن کے نئے قوانین پر جانے کے لیے ایک سال کی مہلت دی گئی ہے۔ قومی اسمبلی کی قائمہ کمیٹی خزانہ کا اجلاس چیئرمین سید نوید قمر کی زیر صدارت منعقد ہوا۔ وزیر خزانہ محمد اورنگزیب اور وزیر مملکت خزانہ علی پرویز ملک اجلاس میں موجود تھے۔ اجلاس میں آئی ایم ایف کے ساتھ جاری مذاکرات پر بریفنگ دی گئی، ان کے ساتھ وزات خزانہ کی مکمل ٹیم اجلاس میں موجود رہی۔وزیر خزانہ محمد اورنگ زیب نے کمیٹی کو بتایا کہ گزشتہ مالی سال تمام میکرو اکنامک اعشاریے مثبت ہوئے، گزشتہ مالی سال مہنگائی میں کمی آئی، 2023ء میں جب آئی ایم ایف پروگرام معطل ہوا تو مشکلات بڑھیں، سب سے بڑی مشکل سرمایہ کاروں کی بیرون ملک منافع کی ترسیل تھی تاہم اب صورتحال کافی بہتر ہوئی ہے۔

 

وزیر خزانہ نے کہا کہ آئی ایف سی نے پی ٹی سی ایل کو 40 کروڑ ڈالر کا قرض دیا، اب درآمدات پر کوئی پابندی نہیں ہے، اب کوئی پریشر نہیں ہے کہ کسی چیز کو مصنوعی طریقے سے دبائیں، فاریکس کی مارکیٹ میں استحکام آیا ہے، ٹیکس ٹو جی ڈی پی کو 13 فیصد پر لے کر جائیں گے کیوں کہ آئی ایم ایف کا کہنا ہے کہ کوئی ملک 9 فیصد ٹیکس ٹو جی ڈی پی کی سطح پر نہیں چل سکتا۔انہوں نے کہا کہ زرعی انکم ٹیکس پر صوبائی وزرائے خزانہ کا مشکور ہوں، ہمیں سب کو فائلر بنانا ہے اور سب کو ٹیکس نیٹ میں لے کر آنا ہے، آئی ایم ایف اصل آمدن پر ٹیکس چاہتا ہے جو کہ درست مطالبہ ہے، ایف بی آر پر عوام کا اعتماد بڑھایا جائے گا، گزشتہ مالی سال 60 ارب روپے کے اضافی ریفنڈ جاری کیے گئے۔انہوں نے کہا کہ حکومت کے اخراجات میں قرض اور سود کی ادائیگی بڑا خرچہ ہے، ترقیاتی بجٹ کیلئے پبلک پرائیویٹ پارٹنر شپ کو فروغ دیا جائے گا۔پنشن بل پر انہوں نے کہا کہ پنشن قومی خزانے پر بڑا بوجھ ہے ہر سال پنشن کی مد میں ایک ہزار ارب روپے ادا کیے جارہے ہیں اسے کم کرنے کی ضرورت ہے، بجٹ میں پنشن کے لیے اصلاحات لائی گئی ہیں، پنشن کی مد میں نئی اسکیمیں متعارف کرائی گئی ہیں جس کے تحت نئی ملازمین کو رضاکارانہ پنشن اسکیم دی جائے گی۔فوج کے حوالے سے انہوں نے کہا کہ فوج کا اسٹرکچر مختلف ہے انہیں اپنا پورا سروس اسٹرکچر تبدیل کرنے پڑے گا جس کے لیے انہیں پنشن کے نئے قوانین پر جانے کے لیے ایک سال کی مہلت دی گئی ہے۔وزیر خزانہ نے کہا کہ کفایت شعاری مہم کے تحت حکومتی اخراجات میں کمی کیلئے 5 وزاتوں کو ختم کیا جائے گا، پی ڈبلیو ڈی کے نقصانات کے باعث اس کو ختم کرنے کا فیصلہ کیا۔انہوں ں ے مزید کہا کہ آئی ایم ایف کے ساتھ مذاکرات مثبت انداز میں آگے بڑھ رہے ہیں، آئی ایم ایف کے ساتھ معاہدہ رواں ماہ ہو جائے گا۔

 

Posted in تازہ ترین, جنرل خبریںTagged
90812

15ارب روپے کی خطیر رقم سے احساس روزگار، احساس نوجوان، احساس ہنر اور اپنا گھر منصوبوں سے ایک لاکھ لوگوں کو روزگار اور 5 ہزار لوگوں کو گھروں کی تعمیر کیلئے قرضے دینگے. مشیر خزانہ خیبرپختونخوا مزمل اسلم  

Posted on

15ارب روپے کی خطیر رقم سے احساس روزگار، احساس نوجوان، احساس ہنر اور اپنا گھر منصوبوں سے ایک لاکھ لوگوں کو روزگار اور 5 ہزار لوگوں کو گھروں کی تعمیر کیلئے قرضے دینگے. مشیر خزانہ خیبرپختونخوا مزمل اسلم

ُپشاور (چترال ٹائمزرپورٹ) وزیراعلیٰ خیبرپختونخوا کی ہدایات پر 15 ارب روپے کی خطیر رقم سے احساس روزگار، احساس نوجوانان، احساس ہنر پروگرام اور احساس اپنا گھر منصوبوں کو عملی طور پر شروع کرنے کے لیے باقاعدہ طور پر پہلا اجلاس مشیر خزانہ و بین الصوبائی رابطہ خیبر پختونخوا مزمل اسلم کے زیر صدارت منعقد ہوا جس میں تجویز پیش کی گئی کہ چھوٹے کاروبار شروع کرنے کے لیے ایک تا پانچ لاکھ روپے کے قرضے دیے جائیں گے تاکہ صوبے میں غریب عوام کو روزگار کے مواقع میسر ہو سکیں۔ اسی طرح تجویز دی گئی کہ چھوٹے گھروں کی تعمیر کے لیے 15 لاکھ روپے کے قرضے بھی دیے جائیں گے تاکہ غریب لوگوں کو چھوٹے گھروں کی تعمیر کی سہولت میسر ہوسکے۔

 

اجلاس میں مشیر کھیل و امور نوجوانان فخر جہاں، سیکرٹری زکواۃ و عشر، اخوت فاؤنڈیشن کی چیف ایگزیکٹو افیسر ڈاکٹر کامران، ایڈیشنل سیکرٹری ہاؤسنگ، ڈائریکٹر یوتھ افیئر سمیت متعدد حکام نے شرکت کی۔ اس موقع پر مشیر خزانہ نے کہا کہ خیبرپختونخوا حکومت کی جانب سے صوبے میں روزگار کو فروغ دینے اور غریب عوام کے لیے چھوٹے گھروں کی تعمیر کے لیے بجٹ میں چار مختلف منصوبوں کا اعلان کیا گیا تھا جن کو عملی جامہ پہنانے کے لیے اقدامات شروع کر دیے گئے ہیں تاکہ عوام کو جلد از جلد ان منصوبوں کے فوائد مل سکیں۔ مشیر خزانہ خیبرپختونخوا مزمل اسلم نے کہا کہ وزیراعلی خیبرپختونخوا کی ہدایات پر اخوت فاؤنڈیشن کے ذریعے پانچ ہزار لوگوں کو گھروں کی تعمیر کے لیے آ سان قرضے اور ایک لاکھ لوگوں کو روزگار کے فراہم کریں گے تاکہ غریب اور متوسط طبقے کو حکومت کی طرف سے ریلیف مل سکے۔

 

 

Posted in تازہ ترین, جنرل خبریں
90794