Chitral Times

Jul 17, 2024

ﺗﻔﺼﻴﻼﺕ

تمام محکموں کو امور میں آسانیاں پیدا کرنے کیلئے آئی ٹی سیکٹر سے جوڑنا وقت کی اہم ضرورت ہے،گورنر

شیئر کریں:

تمام محکموں کو امور میں آسانیاں پیدا کرنے کیلئے آئی ٹی سیکٹر سے جوڑنا وقت کی اہم ضرورت ہے،گورنر

گورنر کی پشاور میں گو بز کنکٹ آن لائن پلیٹ فارم برائے بزنس۔گورنمنٹ کمیونیکیشن کے عنوان سے اورئینٹ سیشن کی افتتاحی تقریب میں بطور مہمان خصوصی شرکت،گو بز کنکٹ آئیڈیا کو سراہا

 

پشاور ( چترال ٹائمز رپورٹ ) گورنرخیبرپختونخوا حاجی غلام علی نے کہاہے کہ موجودہ دور جدید ٹیکنالوجی کا دور ہے،انفارمیشن ٹیکنالوجی کی افادیت کو سمجھتے ہوئے اس پر عبور حاصل کرنے کیلئے نوجوانوں کو بالخصوص آئی ٹی سیکٹر میں آگے لانے کی ضرورت ہے۔تمام محکموں کو امور میں آسانیاں پیدا کرنے کیلئے آئی ٹی سیکٹر سے جوڑنا بھی موجودہ دور کی اہم ضرورت ہے،صوبائی حکومت، چیمبرز کا بزنس کے فروغ کیلئے مشترکہ طور پر انفارمیشن ٹیکنالوجی کا حصول خوش آئند ہے،اس اقدام سے حکومت،فیڈریشن آف پاکستان چیمبر کے درمیان بروقت کمیونیکیشن یقینی ہو سکے گی،اس نظام کو کامیاب بنانے کیلئے ایف پی سی سی آئی کو ہر قسم کا تعاون یقینی بنائیں گے۔ گورنر خیبرپختونخوا حاجی غلام علی کی سرینہ ہوٹل پشاور میں گو بز کنکٹ آن لائن پلیٹ فارم برائے بزنس۔گورنمنٹ کمیونیکیشن کے عنوان سے اورئینٹ سیشن کی افتتاحی تقریب میں بطور مہمان خصوصی شرکت کی۔ تقریب میں سیکرٹری محکمہ انڈسٹری ذوالفقار علی شاہ، منیجنگ ڈائریکٹر آئی ٹی بورڈ ڈاکٹر علی محمد،ریجنل کوآرڈینیٹر فیڈریشن آف پاکستان چیمبرز آف کامرس اینڈ انڈسٹری سرتاج احمد و دیگر شریک تھے۔

 

کوآرڈینیٹر ایف پی سی سی آئی سرتاج احمد خان کا کہنا تھا کہ گو بز کا قیام فیڈریشن آف پاکستان چیمبرز آف کامرس اور صوبائی حکومت کے اشتراک سے عمل میں آیا ہے۔ جس سے بزنس کمیونٹی کو بے حد فوائد ملیں گے۔ انہوں نے اس سسٹم کے قیام کیلئے گورنر حاجی غلام علی اور چیف سیکرٹری کا بھی شکریہ ادا کیا۔تقریب سے خطاب کرتے ہوئے گورنرنے کہاکہ گو بز کے درست استعمال سے بزنس کمیونٹی اور چیمبرز کو درپیش مشکلات حل ہوں گے۔ انہوں نے خیبر پختونخوا کے آئی ٹی بورڈ کی جانب سے گو بز کوصوبے میں ای اور پیپر لیس گورننس کے سلسلے میں ایک اہم پیش رفت قرار دیا۔ کسی بھی انڈسٹری کو این او سی کے اجراء سمیت صنعتکاروں اور تاجروں کیلئے متعلقہ محکمے آسانیاں پیدا کریں تاکہ ملک کی ترقی وخوشحالی یقینی ہو۔آن لائن پلیٹ فارم سے حکومت اور چیمبرزکے درمیان رابطہ آسان ہوجائیگا اور جو وقت خط وکتابت پرلگتاتھا اب اس نظام سے وقت کی بچت بھی ہوگی۔

 

انہوں نے بزنس کمیونٹی پر زوردیا کہ وہ گو بز جیسی سہولیات کو اپنے کاروبار اور چیمبر کی بہتری کے لئے استعمال کریں اور صوبائی محکموں کے ساتھ اپنے جائز مسائل و مشکلات کریں۔گورنرنے کہاکہ ایف پی سی سی آئی ریجنل صوبائی آفس اس حوالے سے سالانہ رپورٹ بھی مرتب کرے کہ کتنی شکایات درج ہوئیں اور بروقت کتنا حل ممکن ہو سکا۔انہوں نے کہاکہ اکنامکس ڈیویلپمنٹ فورم کا قیام سے ضلع کی سطح پر اقتصادی پالیسیاں مرتب کرنے میں مدد ملے گی اور حکومت اور بزنس کمیونٹی کے مابین رابطہ کار بھی بڑھے گا۔ علاوہ ازیں گورنر سے ایسوسی ایشن آف یونیورسٹی فزیشنز اینڈ سرجنزپاکستان کے نمائندہ وفد نے بھی ڈاکٹرسید نعیم اللہ کی قیادت میں ملاقات کی۔ وفد میں ڈاکٹرتوحید، ڈاکٹرشوکت اللہ، ڈاکٹراسد نورمرزا اوردیگر شامل تھے۔ وفد نے ڈاکٹرزکودرپیش مسائل سے گورنرکو آگاہ کیا اور مسائل کے حل کیلئے کردارادا کرنے کی درخواست کی جس پر گورنرنے وفد کو مسائل کے حل کیلئے اپنی جانب سے مکمل تعاون کا یقین دلایا۔ دریں اثناء گورنرسے ضم ضلع باجوڑ سے سینیٹر عبدالرشید کی قیادت میں بھی 6 رکنی وفد نے گورنرہاوس میں ملاقات کی۔ وفد میں فضل سبحان، تاج محمد، ایازاللہ اوردیر شامل تھے۔ وفد کے شرکاء نے گورنر کو باجوڑ کے عوام کو درپیش مسائل سے آگاہ کیا جس پر گورنرنے موقع پر ہی بعض مسائل کے حل کیلئے متعلقہ حکام کو ہدایت کی اوردیگرمسائل کے حل کیلئے بھی اپنی جانب سے مکمل تعاون کا یقین دلایا۔اس کے علاوہ اے این پی صوبہ سندھ کے صدر سینیٹر شاہی سید اور سنٹرل کمیٹی کے رکن پیرریاض گل نے بھی گورنرسے گورنرہاوس میں ملاقات کی اور مختلف امور پر تبادلہ خیال کیا۔


شیئر کریں:
Posted in تازہ ترین, جنرل خبریںTagged
83327