Chitral Times

Jul 18, 2024

ﺗﻔﺼﻴﻼﺕ

ایل پی جی قوانین کی خلاف ورزی پر جرمانے، 10 سال تک قید ہو گی: چیئرمین اوگرا

Posted on
شیئر کریں:

ایل پی جی قوانین کی خلاف ورزی پر جرمانے، 10 سال تک قید ہو گی: چیئرمین اوگرا

اسلام آباد(چترال ٹائمزرپورٹ)آئل اینڈ گیس ریگولیٹری اتھارٹی (اوگرا) کے چیئرمین مسرور خان نے ایف پی سی سی آئی میں ایل پی جی اسٹیک ہولڈرز سے ملاقات کی۔اس موقع پر گفتگو کرتے ہوئے مسرور خان نے کہا ہے کہ ملکی گیس 3 ارب ایم ایم ایس ایف ڈی رہ گئی ہے، ایل پی جی قوانین کی خلاف ورزی پر جرمانے اور قید 10 سال تک ہو گی۔چیئرمین اوگرا کا کہنا ہے کہ پاکستان میں توانائی کا 1.3 فیصد ایل پی جی سے ہے۔انہوں نے کہا کہ آج کورنگی میں ایک پک اپ میں ایل پی جی کی دکان دیکھی، ہوز لیک ہو رہے تھے جو خطرناک صورتِ حال ہے۔چیئرمین اوگرا کا کہنا ہے کہ ملک میں 28 لاکھ سلنڈرز کی ضرورت ہے، ایل پی جی سلنڈرز کا معیار چیک کرنے کے لیے لیبارٹری لگائیں گے۔ریٹیلرز ایسوسی ایشن کے رکن تیمور خان نے کہا کہ 450 فیکٹریاں غیر معیاری سلنڈر بنا رہی ہیں، کیا اوگرا کراچی دفتر نے کبھی فیکٹریوں پر چھاپا مارا ہے؟تیمور خان کا کہنا ہے کہ چند سال میں ایل پی جی کا استعمال 3 گنا ہو جائے گا، گوجرانوالہ فیکٹریز کا دورہ کیا تو وہ جنازے کا بہانہ بنا کر فیکٹریز بند کر گئے۔

 

پی آئی اے نے انڈونیشیا میں لیزنگ کمپنی کو 13 ملین ڈالرز ادا کر دیے

اسلام آباد(سی ایم لنکس)قومی ایئر لائن (پی آئی اے) نے انڈونیشیا میں لیزنگ کمپنی کو 13 ملین ڈالر ادا کر دیے۔پی آئی اے کے ترجمان کا کہنا ہے کہ ایک طیارہ ایک دو روز میں پاکستان پہنچ جائے گا، دوسر اطیارہ بھی چند روز میں پی آئی اے کے بیڑے میں شامل ہو جائے گا۔ترجمان نے بتایا کہ پی آئی اے کو لیزنگ کمپنی کو 26 ملین ڈالر ادا کرنا تھے، پی آئی اے کے بیڑے میں مزید 2 ایئر بس 320 ساختہ طیاروں کا اضافہ ہو جائے گا۔انہوں نے کہا کہ دو طیاروں کی شمولیت سے پی آئی اے میں ایئر بس طیارے 16 ہوجائیں گے، دو سال سے طیاروں کا معاملہ التواء کا شکار تھا، سیکریٹری ایوی ایشن کی سربراہی میں پی آئی اے کا وفد ملائیشیا گیا تھا۔ترجمان کا کہنا ہے کہ وفد نے لیزنگ کمپنی ایئر ایشیاء سے طیاروں کا معاملہ حل کرنے کے لیے مذاکرات کیے، پی آئی اے کے 2 ایئر بس اے 320 طیارے لیزنگ کمپنی سے تنازع کے سبب ستمبر 2021ء سے جکارتہ میں کھڑے تھے۔ان کا یہ بھی کہنا ہے کہ ری ڈلیوری چارجز بچا کر ان طیاروں کو 26 ملین ڈالر کے عوض ہم نے خریدا ہے، وفد نے طیاروں کی ری ڈیلیوری کے لیے لیزنگ کمپنی سے مذاکرات کیے تھے، ان طیاروں پر 15 ملین ڈالر پارکنگ چارج ادائیگی کی خبر غلط اور بیبنیاد ہے۔

 


شیئر کریں:
Posted in تازہ ترین, جنرل خبریںTagged
82557