2014 04
ﺗﻔﺼﻴﻼﺕ

عبدالمحیط محفوظ

جب بھی روتے ہیں  یہ  صدا  دیتے ہیں

نہ  جانے کیوں لوگ ہمیں بھلا دیتے ہیں۔

شوق دید میں نظر  ان  کے   آشیانے  پر

وہ ھمیں دیکھ کے چھرہ چپھا دیتے ہیں

اب بھی مل رہا ہم کو محبت کا صلہ

بنا مانگے رب قسمت کسکا چمکا دیتے ہیں

یہ فلک کا گردش بھی عجیب ھے نا یارو!

کب کے بچھڑوں کو پل میں ملا دیتے ہیں

لال ھاتوں سے ڈھکا   ھوا   انکاچھرہ

انکھوں کو فرحت ھاتوں کا ہنا دیتے ہیں

میرا رقیب نہیں میںخوشنصیب نہیں

میرے محبوب ہی درد کو ناسور بنا دیتے ہیں۔

 

 

 

 


  mail to us at: chitraltimes@gmail.com
| ﺻﻔﺤﻪ ﺍﻭﻝ | ﭼﺘﺮﺍﻝ ﺍﻳﮏ ﺗﻌﺎﺭﻑ | ﻣﻮﺳﻡ | ﺧﻄﻮﻁ | ﺷﻌﺮﻭﺷﺎﻋﺮﻯ | ﺗﺼﺎﻭﻳﺮ | ﺧﻮﺍﺗﻴﻦ | ﻫﻤﺎﺭﻯ ﺑﺎﺑﺖ |
Managed by: FAIZ webmaster@chitraltimes.com Powered by: Schafei